94

مسئلہ کشمیر پرپاکستان اپنے موقف سے پیچھے نہیں ہٹے گا،وزیراعظم

Spread the love

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر

میں کرفیو ، کریک ڈاؤن اور ممکنہ نسل کشی کے خدشے سے امریکی

صدرڈونلڈٹرمپ کو آگاہ کرنے کیساتھ ساتھ بتایا کہ کشمیر کے معاملے پر پاکستان

دوٹوک موقف سے ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹے گا ،کشمیر عالمی سطح پر

متنازعہ ہے اور بھارت یکطرفہ فیصلہ نہیں کر سکتا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں

نے پی ٹی آئی رہنماء سے بابر اعوان سے ملاقات کے دوران گفتگوکرتے ہوئے

کیا۔ملاقات میں مقبوضہ کشمیر سے متعلق صورت حال اور قانونی معاملات پر

مشاورت کی گئی ۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان میں اقوام متحدہ میں

کشمیر کا مقدمہ بہترین انداز میں پیش کیا ہے، دنیا کشمیر کے معاملے پر پاکستان

کا موقف سن اور سمجھ رہی ہے ۔ کشمیر کے حوالے سے پاکستان سفارتی محاذ پر

درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے ۔ عمران خان نے کہا کہ سنگین معاملے پر

دوست ممالک کی حمایت پر شکرگزار ہیں ۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر

اپنے ایک بیان میں وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں

مقبوضہ کشمیر کی سنگین صورتحال پر بحث کا خیر مقدم کیا ہے۔ وزیراعظم

عمران خان نے کہا کہ 50 برسوں میں یہ پہلی بار ہے کہ مسئلہ کشمیر کو دنیا کے

سب سے اعلیٰ سفارتی فورم پر لیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی

کونسل میں 11 قراردادیں ہیں جو کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو تسلیم کرتی

ہیں اور سلامتی کونسل کا اجلاس ان قراردادوں کی دوبارہ توثیق تھا۔وزیراعظم کا

کہنا تھا کہ کشمیریوں کی مشکلات اور تنازع کا حل اس عالمی ادارے کی ذمہ

داری ہے۔علاوہ ازیں اسلام آباد میں خصوصی افراد کیلئے صحت سہولت پروگرام

کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کمزور

طبقے کی مدد کرنا ہمارا وژن ہے، ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنائیں گے۔انہوں

نے کہا کہ قوموں کے بھی نظریے ہوتے ہیں، پاکستان کا بننا ایک عظیم خواب تھا۔

ہم اس سے بہت دور چلے گئے ہیں، واپس اسی وژن پر آنا ہوگا۔عمران خان کا کہنا

تھا کہ پاکستان میں انسانیت کا نظام لانا چاہتے ہیں، ریاست کی ذمہ داری ہے غریب

لوگوں کو بھی برابری کے حقوق دیں، ہم کوشش کریں گے غریبوں اور کمزور

طبقے کو اوپر لائیں اور ان کی مدد کریں۔دریں اثناء ’’کلین اینڈ گرین

پاکستان‘‘منصوبے سے متعلق جائزہ اجلاس میںوزیراعظم عمران خان نے پلاسٹک

بیگ پر پابندی مہم کو ملک کے دیگر شہروں تک پھیلانے کی ہدایت دے دی۔ مشیر

برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم نے بریفنگ میں بتایا کہ ٹین بلین ٹری

سونامی منصوبے کے تحت صوبائی سطح پر منصوبہ بندی کا عمل مکمل کر لیا

گیا، ٹین بلین ٹری سونامی منصوبے کے سلسلے میں پی سی ون تشکیل دیے جا

چکے ہیں، منصوبے کے پہلے مرحلے میں تقریبا سوا 3 ارب پودے لگائے جائیں

گے جس کا 2 سال بعد جائزہ لیا جائے گا۔بریفنگ میں مزید بتایا گیا کہ وفاقی

دارالحکومت اسلام آباد میں پلاسٹک بیگ پر پابندی کے آغاز میں ہی نہایت حوصلہ

افزا نتائج موصول ہوئے، الیکٹرک وہیکلز کے ضمن میں پالیسی مرتب کر لی گئی

ہے جو جلد کابینہ کے سامنے پیش کی جائے گی۔اس موقع پر وزیراعظم نے ہدایت

دی کہ ماحولیات کودرپیش چیلنجز سے نمٹنے کے لیے ہر طبقے کی شمولیت کو

یقینی بنایا جائے، پلاسٹک بیگ پر پابندی مہم میں عوام کا مثبت ردعمل نہایت

حوصلہ افزاء ہے، اس مہم کو مکمل طور پر کامیاب بنانے کے لیے طلباء کی

بھرپور شرکت پر خصوصی توجہ دی جائے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ

ماحولیات کے تحفظ کے حوالے سے وفاقی دارالحکومت کو ماڈل سٹی بنایا جائے،

پلاسٹک بیگ پر پابندی مہم کو ملک کے دیگر شہروں تک پھیلایا جائے۔