Indian Writer Woman Arun Dhati Roy Interview to media men in Dehlii 98

مقبوضہ کشمیر میں جوالا مکھی پھٹنے کو تیار، بھارتی رائٹر ارون دھتی رائے

Spread the love

نئی دہلی(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) ارون دھتی رائے

عالمی شہرت یافتہ بھارت کی بے باک رائٹر ارون دھتی رائے کا کہنا ہے کشمیر

پر چھائی موت کی خاموشی تمام آوازوں سے بلند ہے، کرفیو کے خاتمے کے بعد

مقبوضہ کشمیر میں بہت کچھ ہوگا، ردعمل میں بھارتی مسلمانوں کوخطرہ ہوسکتا

ہے، وزیراعلی ہریانہ کے کشمیری خواتین سے متعلق ریمارکس گھٹیا ہیں۔

پڑھیں: انضمام کشمیر پرردعمل لازمی، دہشتگردی بڑھے گی، اے ایس دلت

ارون دھتی رائے کا مزید کہنا تھا کرفیو کے خاتمے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں

بہت کچھ ہوگا، لگتا ہے بھارت کی مودی حکومت بد معاش ہوچکی ہے، کشمیر پر

فیصلے کا جشن چھچورے انداز میں منایا جارہا ہے۔ کشمیریوں کو پنجرے میں بند

کر دیا گیا ہے، لوگوں کو بے عزت کیا جارہا ہے جبکہ انتہا پسند آر ایس ایس کے

6 لاکھ اہلکار مودی سمیت تربیت یافتہ ملیشیا ہیں۔ جبکہ اس ضمن میں خود بھارت

میں بھی آوازیں اٹھنے لگی ہیں،

یہ بھی پڑھیں: کشمیر میں کچھ بھی بہتر نہیں، بھارتی صحافی

خیال رہے مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے، کرفیو

کے نفاذ کو آج 14 واں روز ہے، مقبوضہ وادی میں معمول کی زندگی بد ستور

مفلوج اور کمیونیکیشن کا بلیک آئوٹ ہے جبکہ کھانے پینے کی اشیا اور دوائوں

کی قلت ہوگئی ہے۔ قابض بھارتی فوجی گلی محلوں میں دندناتے پھررہے ہیں،

کشمیری گھروں میں محصور ہیں، کشمیریوں کا کہنا ہے مودی سرکار کرفیو ہٹائے

پھر پتا چلے گا کشمیری کیا چاہتے ہیں، کشمیری آزادی چاہتے ہیں اور لیکر رہیں

گے۔ چند ماہ قبل معروف اور ایوارڈ یافتہ مصنفہ ارون دھتی رائے نے میڈیا انٹرویو

میں کہا تھا کشمیر میں نوجوان مسلح جدوجہد میں شامل ہورہے ہیں اور بھارت میں

سیاسی صورتحال کے باعث ہندو قوم پرستی بڑھ رہی ہے جو سیکولر بھارت

کیلئے کسی طور درست نہیں-