83

پاکستان ،آزاد کشمیر سمیت دنیا کے مختلف ممالک میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے بھارت کے یوم آزادی کے دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا

Spread the love

اسلام آباد/لاہور /کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان اورآزاد کشمیر سمیت دنیا کے

مختلف ممالک میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے بھارت کے یوم آزادی کے

دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا گیا ، سرکاری اور نیم سرکاری اداروں کی

عمارتوں پر قوم پرچم سر نگوں رہا اورسیاہ پرچم لہرائے گئے ،احتجاجی ریلیوں

اور مظاہروں میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے پتلے نذر آتش کئے گئے

،کئی مقامات پر بھارتی وزیر اعظم کے پتلوں کو علامتی پھانسی دی گئی اور اس

پر جوتے برسائے گئے جبکہ کراچی میں پتلے کو سمندرد برد کیا گیا ، شرکاء

کشمیر یوں کے حق میں اور بھارت کے خلاف نعرے لگاتے رہے ،لاہور میں

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور، وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار ، وزیر

خارجہ شاہ محمود قریشی کی قیادت میں گورنر ہائوس سے پنجاب اسمبلی تک ریلی

نکالی گئی جس میں مختلف سیاسی و مذہبی جماعتوںکے رہنمائوں، کارکنوں ،سول

سوسائٹی کے افراد نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی ،آل پاکستان انجمن تاجران

کے مرکزی صدر اشرف بھٹی کی قیادت میں تاجروں کی بڑی تعداد نے ریلی میں

شرکت کی اور بھارتی مصنوعات کی بائیکاٹ مہم چلانے کے اعلان کیا ،دنیا کے

مختلف ممالک میں بھی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور بھارت کے خلاف یوم

سیاہ منایا گیا او رمظاہرے کئے گئے ۔تفصیلات کے مطابق پاکستانی حکومت کی

جانب سے سرکاری طو رپر اعلان کے بعد 15اگست بھارت کے یوم آزادی کے دن

کو یوم سیاہ کے طو رپر منایاگیا اور کشمیریوں سے بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا

گیا ۔ اس دن کی مناسبت سے سرکاری اور نیم سرکاری عمارتوں پر قوم پرچم

سرنگوں رہا جبکہ مختلف مقامات پر سیاہ پرچم لہرائے گئے ،ریلیوں اور مظاہروں

کے شرکاء نے بھی بازئوں پر سیاہ پٹیاں باندھیں ،شاہراہوں اور بازاروں میں سبز

ہلالی پرچم کے ساتھ کشمیر کے پرچم بھی لہرائے گئے ۔ ریلیوں اور مظاہروںمیں

شرکت کرنے والو ں کی بڑی تعداد نے بھارت کے خلاف یوم سیاہ کی مناسبت سے

سیاہ لباس زیب تن کئے ۔ ملک بھر کے سینکڑوںمقامات پر بھارتی وزیر اعظم نریند

ر مودی کے پتلے نذر آتش کئے گئے ،علامتی پھانسیاں دی گئیں او ران پر جوتے

برسائے گئے ۔ شرکاء نے ہاتھوں میں پلے کارڈ ز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر

کشمیریوں کے حق میں اور بھارت کے خلاف نعرے درج تھے۔ لاہورمیں مختلف

سیاسی و مذہبی جماعتوں ، سول سوسائٹی کے افراد اور تاجروں کی کثیر تعداد نے

مال روڈ پر نکالی گئی ریلی میں شرکت کی ۔ آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر

اشرف بھٹی کی قیادت میں تاجروں کی بڑی تعداد ریلی میں شریک ہوئی اور

بھارتی مصنوعات کے بائیکاٹ کی مہم چلانے کا اعلان کیا ۔ تحریک انصاف کے

اراکین اسمبلی او ررہنمائوں کی قیادت میں کارکنوں کے قافلے میں ریلی میں

شرکت کے لئے مال روڈ پہنچے ۔ کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے

اوربھارت کے یوم آزادی کے دن کو یوم سیاہ طور پر منانے کے لئے ریلی گورنر

پنجاب چوہدری سرور، وزیر اعلیٰ عثمان بزدار اور وزیر خارجہ شاہ محمود

قریشی کی قیادت میں گورنر ہائوس سے روانہ ہوئے جو حتمی مقام پنجاب اسمبلی

تک پہنچی ۔ریلی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے گورنر پنجاب چوہدری محمد

سرور نے کہا کہ اہل لاہورنے ثابت کر دیا ہے کہ پوری پاکستانی قوم اپنے

کشمیری بھائیوں کے شانہ بشانہ ہے ۔ اس ریلی میں حریت رہنما یاسین ملک کی

ننھی سی بیٹی بھی موجود ہے جو اپنے باپ سے نہیں مل سکی۔ کشمیری قائدین پر

جتنا ظلم بڑھایا گیا ان کا جذبہ اتنا پروان چڑھا ہے۔ اس موقع پر گورنر پنجاب نے

نریندر مودی جواب دو خون کا حساب دو اور کشمیربنے گا پاکستان کے نعرے بھی

لگوائے ۔ گورنر پنجاب نے کہاکہ نریندر مودی جب گجرات کا وزیر اعلیٰ تھا تو

اس نے مسلمانوں کا قتل عام کیا ،آج بھارت کا وزیر اعظم بن کر کشمیریوں کاقتل

عام کر رہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ 2002ء میں جب میں برطانوی پارلیمنٹ کا ممبر

تھا تو اس وقت نریندر مودی نے برطانیہ آنے کا اعلان کیا تھا جس پر میں نے

برملا مخالفت کرتے ہوئے کہا تھاکہ مودی گجرات کا قصاب ہے اسے برطانیہ کا

ویزا نہیں ملنا چاہیے جس پر برطانیہ نے اسے ویزا دینے سے انکا رکر دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ 70سال سے کشمیری کی بیٹیاں ،بیٹے، بہنیں اورمائیں اپنی جانوں

کی قربانیاں دے رہی ہیں او ران پر ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں لیکن اس کے

باوجو بھارت کی افواج کشمیریوں کے جذبہ آزادی کوختم نہیں کر سکیں ۔ انہوںنے

کہا کہ نریندر مودی کے اقدامات کی وجہ سے بھارت میں بسنے والی اقلتیں خود

کو محفوظ نہیں سمجھتیں،بھارت میں اقلیتوںپر جب بھی ظلم ہوگا پاکستان کے

20کروڑ عوام ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہوں گے ۔ انہوںنے کہاکہ نریندر مودی

دیکھ لو آج پوری دنیا میں تمہارے خلاف یوم سیاہ منایا جارہا ہے ۔ لاہو رمیں

پاکستان کی سب سے بڑی ریلی نکلی ہے جس پر میں اہل لاہور کو خراج تحسین

پیش کرتاہوں ۔ ہم نریندر مودی کو بتا دینا چاہتے ہیں کہ تمہار اظلم اور بربریت

کشمیریوں کے حوصلے پست نہیں کر سکتے ۔ پاکستان کی مسلح افواج اور

20کروڑ عوام اس وقت تک کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیںجب تک وہ آزادی

کی جنگ جیت نہیں لیتے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب سردارعثمان نے خطاب کرتے ہوئے

کہا کہ میں تمام اکابرین اور اہل لاہور کا شکر گزار ہوں ۔ وزیراعظم عمران خان

کے اعلان کے مطابق بھارت کے یوم آزادی پر یوم سیاہ منایا گیا اور پورے

پاکستان میں ریلیوں کے ذریعے کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیا گیا۔ کشمیری او

رپاکستانی قوم کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے خلاف سراپا احتجاج

ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اپنے کشمیری بھائیوں کی اخلاقی اور سفارتی حمایت

جاری رکھے گا ،ہرہفتے بھارت کے خلاف علامتی احتجاج جاری رکھیں گے ۔ اس

موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے اعلان کیا کہ پنجاب کے ہر ضلع میں ایک شاہراہ

کشمیر کے نام سے منسوب کی جائے گی جبکہ ہرڈویژنل ہیڈ کوارٹر میں ایک

پارک کو کشمیر کا نام دیا جائے گا ۔ پورے پنجاب میں 36شاہراہوں اور 9پارک

کے نام کشمیر کے نا م سے منسوب کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر پنجاب

او ر پنجاب کشمیر ہے او رمیری دلی خواہش ہے کہ کشمیری آئندہ یوم آزادی

ہمارے ساتھ منائیں ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف کو

خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوںنے کشمیر کا مقدمہ بھرپو رطریقے سے لڑا ہے

او رکامیابی ہمارا مقدر ہو گی ۔