111

جدید ٹیکنالوجی میں استفادہ، تعلیمی ایمرجنسی ناگزیر، تھنک ٹینک پی آئی پی آر

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن سٹاف رپورٹر)

تھنک ٹینک انسٹی ٹیوٹ فار پالیسی ریفارمز(آئی پی آر) نے اپنے ایک مختصر

اعلامیہ میں کہا ہے ترقیاقی معلومات و مواصلات آ ج کی ترقی کرتی ہوئی

انفارمیشن ملک کیلئے انتہائی ضروری ہے ۔ معیشت کی بنیاد اس چیز پر رکھنی

چاہیے کہ اس میں معلومات کی فراوانی زیاد ہ سے زیادہ ہو ۔ آئی پی آرکے بریف

میں یہ بھی بتایا گیا کہ معلومات و مواصلات کس طرح معاشرتی اور معاشی طور

پر انقلابی تبدیلیاں لائی ہیں۔پاکستان نے جدید ٹیکنالوجی میں استفادہ حاصل نہ کیا

تووہ بہت پیچھے رہ جائے گا جبکہ وہ قومیں جو انفارمیشن اینڈٹیکنالوجی سے فائدہ

یہ بھی پڑھیں: حکومت کا سسٹم سکولز پراجیکٹ متعارف کرانیکا فیصلہ

اٹھائیں گی وہ بہت آگے چلی جائینگی،لہٰذا روایتی معیشت کو ایک با علم معیشت

میں تبدیل کرنے کا انحصار، تعلیم، انفارمیشن ، تحقیق اور ملک کے اندر دستیاب

ٹیکنالوجی پر ہے کیونکہ یہ تمام عناصر بنیادی تبدیلی لانے کیلئے ضروری ہیں

اس کے علاوہ جسمانی اور افرادی قوت کا بھی آپس میں ایک مضبوط رابطہ ہونا

چاہیے تا کہ معاشی ترقی ہو سکے۔کسی بھی دماغی کاوش کے بغیر کوئی نئی چیز

پیدا نہیں کی جاسکتی ۔آئی پی آر کی طرف سے تحریر کئے گئے بریف میں

پاکستان کو آئی ٹی ، آئی سی ٹی میں درپیش چیلنجز کے سلسلے میں ایک جامع

تجزیہ پیش کیا گیا ہے سب سے اہم چیلنجوں میں ملک کے اندر ایک با قاعدہ آئی

سی ٹی کے بنیادی ڈھانچہ کی کمی کا ہونا ہے، اعلیٰ تعلیم کی ترقی کی ضرورت

تحقیقات کی سہولتوں اورمعلومات نے ایک تقسیم پیدا کر دی ہے ۔آئی پی آ ر کی

بریف نے یہ بھی تجویز کیا کہ ملک کے اندر ایک باہمی قومی پالیسی کی اصل

ضرورت ہے جس کا مقصد معیشت کے تمام شعبوں میں سائنس ، ٹیکنالوجی کو

فروغ دینا ہے پاکستان کو تعلیم کے میدان میں ایمرجنسی کا اعلان کرنا چا ہیے اور

ہر ایک کیلئے تعلیم حاصل کرنا لازمی ہو، نیز تعلیم کیلئے جی ڈی پی کا کم از کم

مزید پڑھیں: سکالر شپ کی عدم ادائیگی، 150 سے زائد طلبہ چین میں پھنس گئے

پانچ فیصد مختصر کرنا چاہیے ،حکومت کو تعلیم معیار کو جدید بنانے اور تعلیمی

اداروں کیلئے آئی سی ٹی کے کورس لازمی قرار دینے چاہیے ۔ ملک کے اندر

تحقیقاتی اداروں کی بھی فوری ضرورت ہے جو ہماری صنعتی ترقی میں معاون

ثابت ہو سکیں،اس کے علاوہ پاکستان کو چاہیے بیرون ملک سے معلومات اور

انفارمیشن کو پاکستان منتقل کرے ،حکومت کو چاہیے وہ آئی ٹی اور آئی سی ٹی

کے بنیادی ڈھانچے کو نا صرف شہروں بلکہ پورے ملک میں پھیلا دے ،اس طرح

کی یکساں تقسیم ڈیجیٹل اور معلومات کی بڑھتی ہوئی تقسیم کو روکے گی۔