268

1984 کے فسادات میں سکھوں کے قتل کے جرم میں کانگریس رہنما کو عمرقید

Spread the love

بھارت کی دوسری بڑی سیاسی جماعت کانگریس کے رہنما سجن کمار کو 1984 میں وزیراعظم اندرا گاندھی کے قتل کے بعد ہونے والے فسادات میں سکھوں کے قتل عام کے جرم میں عمر قید کی سزا سنادی گئی۔فرانسیسی میڈیا کے مطابق دہلی ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں 73 سالہ سجن کمار کو وزیراعظم اندرا گاندھی کے قتل میں اشتعال پھیلانے کا ذمہ دار قرار دیا۔واضح رہے کہ 1984 میں اس وقت کی وزیراعظم اندرا گاندھی کو ان کے سکھ گارڈ نے قتل کردیا تھا، واقعہ کے بعد مشتعل لوگوں نے تقریباً 3 ہزار سکھوں کو قتل کردیا تھا۔وزیراعظم اندرا گاندھی کی ہلاکت کے وقت سجن کمار حکمراں جماعت کانگریس پارٹی کے صوبائی وزیر تھے، انہیں 2013 میں رہا کیا گیا تھا لیکن وفاقی تفتیش کاروں کی اپیل پر ہائی کورٹ نے اپنا فیصلہ بدل دیا تھا۔عینی شاہدین کی گواہی کی بنیاد پر سجن کمار نئی دہلی میں سکھ خاندان کے 5 افراد کے قتل میں قصوروار قرار پانے۔پریس ٹرسٹ آف انڈیا اور مقامی میڈیا کے مطابق دو رکنی عدالتی بینچ نے سجن کمار کو مجرمانہ سازش، نفرت پھیلانے اور باہمی ہم آہنگی کے خلاف اقدامات کا ذمہ دار قرار دیا۔

Leave a Reply