0

18ویں ترمیم پر آنچ نہیں آنے دینگے ،سیاسی جدوجہد ، لانگ مارچ کیلئے تیار،بلاول بھٹو

Spread the love

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے سیاسی جدوجہد اور لانگ مارچ کرنے کیلئے تیار ہوں، اٹھارہویں ترمیم پرآنچ نہیں آنے دیں گے،تمام سیاسی جماعتوں کو ایک پیج پر آنا چاہیے،حکومت پارلیمنٹ کو جس انداز سے چلا رہی ہے اس سے ملک کا نقصان ہورہا ہے، میں نے کہا تھا کہ یہ کٹھ پتلی حکومت ہے، صدارتی نظام لانا چاہتے ہیں، منی بجٹ میں صرف عمران خان کی بہن کو ریلیف دیا گیا ہے، عمران خان کی سیاست میں اگر کسی کی جدوجہد ہے تو اسٹیبلشمنٹ کی ہے۔منگل کو کارکنوں سے خطاب میں انکامزید کہنا تھا سندھ میں علاج کی جو سہولیات ہیں وہ کوئی اور صوبہ نہیں دے سکتا، سندھ حکومت کام کرنے میں سب سے آگے ہے، پورے پاکستا ن کے لوگ سندھ علاج کرانے کیلئے آتے ہیں، سندھ حکومت کی عوامی خدمت مثالی ہے، گمبٹ میں نئے میڈیکل کالج کا افتتاح کر دیا ہے، اس سے صحت کی سہولیات کی فراہمی میں بہتری آئے گی، اس وقت پاکستان اور سندھ کو چیلنجز درپیش ہیں جس کا مقابلہ کرنا ہے، چیلنج کرتا ہو ں تبدیلی والوںکو کہ گمبٹ جیسا میڈیکل کالج خیبرپختونخوا میں بنا کر دکھائیں، عمران خان میں کام کرنے کی صلاحیت نہیں، سندھ میں این آئی سی وی ڈی کے ہسپتال مفت علاج فراہم کررہے ہیں، وفاق کو سندھ کے ہسپتال چھیننے نہیں دیں گے، کچھ قوتیں اٹھارہویں ترمیم کو ختم کرنا چاہتی ہیں، ہم ان کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ہسپتال کی حوالگی کیلئے سندھ حکومت میں نظرثانی اپیل دائر کریں گے، پچھلے دو دنوں سے کچھ ڈاکٹرز احتجاج کر رہے ہیں، سندھ حکومت ڈاکٹرز سے بات چیت کر کے ان کے مسائل حل کرے گی، ذوالفقار علی بھٹو میرٹ پر وز یر بنے اور تاریخی کام کئے، انہوں نے اپنی سیاست کے عروج پر ایوب خان سے علیحدگی کی اور جمہوری جدوجہد کی،خیرپور میں ایگری کلچر یونیورسٹی اور میڈیکل یونیورسٹی بھی بنائیں گے،عمران خان کا سیاسی مستقبل خطرے میں نظر آرہا ہے، پیپلز پارٹی پاکستان میں بہتری لانے کیلئے سب کیساتھ کام کرنے کو تیار ہے، بدقسمتی ہے ایک سال میں تیسرا بجٹ آرہا ہے، منی بجٹ میں عام آدمی کیلئے کوئی ریلیف نہیں ، پاکستا ن کیلئے صدارتی نہیں پارلیمانی طرز سیاست ہی بہترین ہے۔

Leave a Reply