پشاور، کوہاٹ، ہنگو، اورکزئی و کرم میں محرم الحرام سکیورٹی پلانز تیار

یومِ عاشور سخت سیکیورٹی انتظامات میں عقیدت و احترام سے منایا گیا

Spread the love

یومِ عاشور عقیدت احترام

اسلام آباد/کراچی/لاہور /پشاور/کوئٹہ/مظفر آباد/گلگت (جے ٹی این آن لائن نیوز) آزادکشمیر اور گلگت

بلتستان سمیت ملک بھر میں یوم عاشور 10 محرم الحرام کومذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا ،

ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں اور قصوں میں جلوس برآمد ہوئے ، کسی نا خوشگوارواقعہ سے

نمٹنے کیلئے سکیورٹی ہائی الرٹ اور موبائل فون سروس دن بھر معطل رہی ،جلوسوں کی فضائی

نگرانی بھی کی جاتی رہی ۔ تفصیلات کے مطابق آزادکشمیر اور گلگت بلتستان سمیت ملک بھر میں

یوم عاشور 10 محرم الحرام کومذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا۔صوبائی دارالحکومت کراچی

میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس نشتر پارک سے برآمد ہوا جو حسینیہ ایرانیاں کھارادر پر اختتام پذیر

ہوا، جلوس سے قبل مرکزی مجلس سے علامہ شہنشاہ حسین نقوی نے خطاب کیا۔صوبائی دارالحکومت

لاہور میں دسویں محرم کا مرکزی جلوس نثار حویلی اندرون موچی گیٹ سے برآمد ہوا جو شام میں

کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوا۔مرکزی جلوس چوک رنگ محل مسجد وزیر خان چوہٹہ مفتی

باقر سوہا بازار بازار حکیماں اور اندرون بھاٹی سے ہوتا ہوا کربلا گامے شاہ میں اختتام پذیر

ہوا، جلوس میں شامل عزا داروں نے نوحہ کنی، ماتم اور زنجیر زنی کی جس میں خواتین سمیت بچوں

اور بوڑھوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔کوئٹہ میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس شہدا چوک علمدار

روڈ سے برآمد ہوا ،صوبائی دارالحکومت پشاور میں 10 محرم الحرام کا مرکزی جلوس امام بارگاہ

سید رضوی علی شاہ چڑیکوبان سے برآمد ہوا جو اپنی منزل پر پہنچ پر اختتام پذیر ہوا اس موقع پر

علمائے کرام و ذاکرین اپنی تقاریر میں حضرت امام حسین کی عظیم اور روشن تعلیمات اور سانحہ

کربلا کے مختلف پہلوؤں کو اجاگر کیا۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم عاشور کے موقع پر جی

نائن مرکزی امام بارگاہ سے برآمد ہوا اور اپنے مخصوص راستوں سے ہوتا ہوا اپنے مقام آغاز پر

اختتام پذیر ہوگیا اسی طرح آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں بھی یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام

سے منایا گیا اور کئی شہروں میں جلوس بر آمد ہوئے ،جلوسوں کے راستوں میں بڑی تعداد میں نذر و

نیاز کا سلسلہ بھی جاری رہا ۔محرم الحرام کے جلوسوں اور مجالس کی سیکیورٹی کے لیے مختلف

مقامات پر سکیورٹی اہلکار ڈیوٹی کے فرائض سر انجام دیتے رہے ۔کراچی میں 10 محرم الحرام کے

مرکزی جلوس کے راستوں اور گزرگاہوں سمیت مرکزی جلوس کی نگرانی اور سیکیورٹی کے لیے

مجموعی طور پر پولیس کے 6 ہزار 368 افسران و اہلکار اور ریپڈ رِسپانس فورس کی 3 کمپنیاں

موجود تھے جبکہ اسپیشل سیکیورٹی یونٹ کے 90 اسنائپرز مرکزی جلوس کے اطراف اور گزرگاہوں

پر تعینات کیے گئے تھے۔شہر بھر میں مجموعی طور پر کراچی پولیس کے 18 ہزار 823 افسران و

جوان اور ریپڈ رسپانس فورس کی 12 کمپنیوں کو عزاداروں کی سیکیورٹی کے لیے تعینات کیا گیا

تھا، دہشتگردی کے خطرہ کے پیش نظر ملک بھر کے بڑے شہروں میں موبائل فون سروس بھی

معطل رہی جبکہ ملک بھر کے مختلف شہروں میں موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد کی

گئی ، صوبائی دارالحکومت اور وفاقی دارالحکومت میں جلوسوں کی فضائی نگرانی بھی کی جارتی

رہی.

یومِ عاشور عقیدت احترام

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply