Yemen_Map 44

یمن کا عالمی برادی کو دنیا کے سب سے بڑے ماحولیاتی المیے کا انتباہ

Spread the love

صنعاء(جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ رپورٹ) یمن ماحولیاتی المیہ انتباہ

یمن کی آئینی حکومت نے ایک بار پھر خبردار کیا ہے کہ الحدیدہ شہر میں راس عیسیٰ بندرگاہ سے چند کلو میٹر کے فاصلے پر لنگر انداز تیل بردار جہازصافرسے تیل کے رسا ﺅاور جہاز میں دھماکے کی صورت میں دنیا کا سب سے بڑا ماحولیاتی المیہ جنم لے سکتا ہے۔ ( ۔۔۔ یہ بھی پڑھیں ۔۔۔ )

اقوام متحدہ ماہرین کی ٹیم تیل بردار جہاز صافرکے معائنے ، مرمت سے قاصر

وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے اپنے جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ اقوام متحدہ کے ماہرین کی ٹیم تیل بردار جہاز صافرکے معائنے اور اس کی مرمت سے مسلسل قاصر ہے۔ جہاز پر دس لاکھ بیرل سے زیادہ تیل لدا ہوا ہے۔یمنی وزیر کے مطابق تکنیکی رپورٹوں میں اس بات کا امکان ظاہر کیا گیا کہ تیل بردار جہاز کے زنگ سے گل جا نے پر رساﺅ کی صورت میں 13.8کروڑ لیٹر تیل بحیرہ احمر کے پانی میں شامل ہو سکتا ہے۔ یہ 1989ءمیں الاسکا میں تیل کے رساﺅ کے سبب جنم لینے والے ماحولیاتی المیے سے چار گنا زیادہ سنگین ہو گا۔

الحدیدہ شہر میں 30لاکھ افرادکے زہریلی گیسوں سے متاثر ہونے کا خطرہ

30 برس گزر جانے کے بعد بھی وہ علاقہ پوری طرح ماحولیاتی اثرات سے پاک نہیں ہو سکا۔الاریانی نے مزید بتایا کہ رساﺅ کے نتیجے میں الحدیدہ شہر کی بندرگاہ کئی ماہ کےلئے بند ہو جا ئےگی۔ علاوہ ازیں ایندھن اور ضرورت کی اشیا کی قلت کا سامنا ہو گا۔ اس دوران ایندھن کی قیمت میں 800 فیصداضافہ ہو جائے گا اور اشیا خور و نوش کی قیمتیں کئی گنا ہو جائیں گی۔ اس تمام صورت حال کے نتیجے میں یمن کی معیشت پر سالانہ 6کروڑ اور آئندہ 25برسوں میں 1.5ارب ڈالر کا بوجھ پڑے گا۔یمنی وزیر اطلاعات نے یہ خدشہ بھی ظاہر کیا کہ تیل بردار جہاز میں آگ لگنے کی صورت میں الحدیدہ شہر میں 30لاکھ افراد زہریلی گیسوں سے متاثر ہوں گے۔
یمن ماحولیاتی المیہ انتباہ

Leave a Reply