73

ہیٹی ،یتیم خانے میں آگ لگنے سے 15 بچے جاں بحق

Spread the love

ہیٹی ( مانیٹرنگ ڈیسک )ہیٹیمیں قائم بچوں کے یتیم خانے میںآگ لگ گئی جس سے

15 بچے جھلس کر جاں بحق ہوگئے۔فرانسسی خبر رساں ادارے کے مطابق ایک

جج نے بتایا کہ کیریبیئن ملک ہیٹی کے دارالحکومت پورٹ او پرنس میں غیر

لائسنس یافتہ یتیم خانے میںآگ لگی جس کے نتیجے میں 15 بچے جاں بحق ہوگئے۔

خاتون مجسڑیٹ ریمنڈ جین اینٹوائنی کا کہنا تھا کہ آگ لگنے کی وجہ سے دو بچے

موقع پر ہی جھلس کر جاں بحق ہوگئے جبکہ 13 بچوں کو اسپتال لے جایا گیا مگر

ان کے پھیپھڑوں میں دھواں بھر جانے کی وجہ سے وہ بھی دم توڑ گئے۔اْن کا

مزید کہنا تھا کہ اس عمارت میں بغیر اجازت 2013 سے یتیم خانہ چلایا جارہا تھا

جہاں تقریباً 66 بچے رہتے تھے۔دارالحکومت کے جنوب میں 50 ہزار افراد پر

مشتمل کینسوف نامی قصبے میں موجود اس یتیم خانے میں جمعرات کی صبح 9

بجے کے بعدآگ لگی۔فرانسسی خبر رساں ادارے کو ان میں سے ایک بچے نے

بتایا کہ لائٹ نہ ہونے کی وجہ سے ایک بچے نے اپنے کمرے میں موم بتی جلائی

تھی جس کی وجہ سے آگ لگی۔مجسٹریٹ کا کہنا تھا کہ اس بارے میں تحقیقات

جاری ہیں کہ آگ لگنے کی اصل وجہ کیا تھی اور ان کی شناخت کی جارہی ہے ۔

اسی کے ساتھ اندر تختہ نما سیڑھیاں بنی ہوئی تھیں اور باہر نکلنے کا ایک ہی قابلِ

استعمال دروازہ تھا۔مجسٹریٹ کا کہنا تھا کہ آگ بجھانے کے لیے اندر کسی بھی

قسم کا انتظام نہیں تھا، ہیٹی میں موجود حکومتی ادارے( آئی بی ای ایس آر ) کے

ڈائریکٹر کا کہنا تھا کہ اس یتیم خانے کو چلانے کی اجازت نہیں لی گئی تھی۔

عدالتی تحقیقات کے مطابق اس واقعے میں بچ جانے والے بچوں کو طبی امداد دی

جارہی ہے، اس حادثے نے ان بچوں کے دماغ پر بہت بْرا اثر پڑا ہے جس کی وجہ

سے ان کے لیے حکومتی ادارے آئی بی ای ایس آر میں ذہنی علاج کیا جائے گا۔

Leave a Reply