ہمارے پاس تعریف کے الفاظ نہیں، چیف جسٹس کا یاسمین راشد سے مکالمہ

Spread the love

سپریم کورٹ نے اینٹی کرپشن کوپی کے ایل آئی کی انکوائری ، ذمہ داروں کےخلاف کارروائی اور پی کے ایل آئی کو بدھ تک جواب جمع کرانے کاحکم دےدیاچیف جسٹس نے وزیرصحت پنجا ب یاسمین راشد کوکام جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا آپ کواستعفیٰ نہیں دینے دیں گے،آپ کا کردار قابل تحسین ہے، ہمارے پاس تعریف کے الفاظ نہیں ۔گزشتہ روز سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے پرائیویٹ یونیورسٹیز کی قانونی حیثیت سے متعلق کیس کی سماعت کی، وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین عدالت میں پیش ہوئیں اور عدالت کو بتایا آپ کے ریمارکس پر اپوزیشن مجھ سے استعفے کا مطالبہ کر رہی ہے، جس پر چیف جسٹس نے کہا آپ کو استعفیٰ نہیں دینے دیں گی آپ اپنا کام کریں، گھبرانے کی کوئی ضرورت نہیں، آپ بہت قابل احترام ہیں، آپ کا پورا کیرئیر بے داغ ہے۔ ہمارے خلاف بھی مہم چلائی جاتی ہے، ایسے واٹس ایپ میسج موجود ہیں، کیا ان حالات میں کام کرنا چھوڑ دیں۔پی کے ایل آئی سے متعلق ڈاکٹریاسمین راشدنے بتایا بورڈآف گورنر بنادیا ، جون تک بچوں کے جگرکی پیوندکاری شروع ہوجا ئےگی ، جس پر چیف جسٹس نے کہا چاہتے ہیں ہسپتال حکومت چلائے پہلے کی طرح ٹرسٹ نہیں،یہ عوام کی زندگی کامعاملہ ہے ہم مدد کرناچاہتے ہیں۔ پی کے ایل آئی پرڈی جی اینٹی کرپشن نے رپورٹ پیش کی ، جس میں بتایا کنسلٹنٹ اورعملے کوبھاری تنخواہیں دی گئیں مگرکام نہیں ہوا،قومی خزانے کو نقصان پہنچا، جس پر چیف جسٹس نے کہا اینٹی کرپشن انکوائری اورذمہ داروں کیخلاف کارروائی کرے۔پی کے ایل آئی کی سابق انتظامیہ کے وکلانے رپورٹ پر جواب کی مہلت مانگی، جس پرعدالت نے بدھ تک جواب جمع کرانے کاحکم دےدیا۔

Leave a Reply