گیس نایاب، فیکٹریاں، چولھے بند، صنعتکار، گھریلو صارفین پریشان

گیس نایاب، فیکٹریاں، چولھے بند، صنعتکار، گھریلو صارفین پریشان

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) گیس نایاب صارفین پریشان

سردی میں اضافے کے ساتھ ہی ملک کے بیشتر شہروں کراچی، پشاور، لاہور،

کوئٹہ، سیالکوٹ، فیصل آباد، حافظ آباد، گوجرانوالہ، ملتان، سکھر، میرپور خاص

اور دیگر علاقوں میں گیس کی قلت پیدا ہوگئی ہے، جس کے باعث گھریلو اور

صنعتی صارفین کو پریشانی کا سامنا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے گیس نہ ہونے کی

وجہ سے وہ اکثر گھر آتے ہوئے باہر سے کھانا لاتے ہیں لیکن مہنگائی کے

طوفان میں بار بار باہر کا کھانا بھی ان کے لیے چیلنج بن گیا ہے۔ بلوچستان میں

بھی گھریلو صارفین دہری اذیت کا شکار ہیں، خون جماتی سردی میں شہری گیس

نہ ہونے کے باعث ہیٹر چلانے سے قاصر ہیں۔

=-،-= ملتان میں گیس بندش کیخلاف خواتین سڑکوں پر

ملتان کے علاقے غلہ منڈی روڈ پر خواتین نے گیس کی لوڈشیڈنگ کے خلاف

احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے میں شامل خواتین نے روڈ کو ٹریفک کیلئے بلاک

کرکے سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ کے خلاف نعرے لگائے اور کہا کہ گیس کی

بندش کے باعث انہیں کھانے پکانے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ جبکہ

مہنگی ایل پی جی کے استعمال سے ان کا ماہانہ بجٹ بری طرح متاثر ہو رہا ہے،

بچوں کو صبح کے اوقات میں بھوکا سکول بھیجنا پڑتا ہے۔ بازار کے کھانے بھی

اس قدر مہنگے ہوگئے ہیں کہ غریب آدمی خرید ہی نہیں سکتا، خواتین نے مطالبہ

کیا کہ سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ کو ختم کیا جائے۔

=-،-= صنعتکاروں کا گیس دستیابی کی صورتِحال پر عدم اطمینان

ملک کے مختلف صنعتی علاقوں میں گیس کی قلت سے پیداوار بھی متاثر ہو رہی

ہے۔ صنعتکاروں نے کراچی میں انڈسٹریز کو گیس دستیابی کی صورتِ حال پر

عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ معروف کاروباری شخصیت اور چیئرمین بزنس

مین گروپ زبیر موتی والا نے کہا کراچی کی صنعت کیلئے گیس نہیں، انڈسٹری

حکومتی اقدامات سے بالکل مطمئن نہیں۔ اگر حکومت بروقت زیادہ ایل این جی

کارگوز منگوا لیتی تو گیس کی قلت نہ ہوتی۔

=-،-= گیس بحران کا ایل این جی معاملہ سے کوئی تعلق نہیں، حماد اظہر

وفاقی وزیر برائے توانائی حماد اظہر نے کہا ہے کہ ایل این جی اور سردیوں میں

ہونے والے گیس بحران کا آپس میں کوئی تعلق نہیں، گھریلو سطح پر گیس کی

مانگ بڑھ رہی ہے، معاہدے کے مطابق ہم ایل این جی کے چودہ کارگو لے ہی

نہیں سکتے، ماضی میں مسلم لیگ (ن ) نے روس کی ایک بلیک لسٹ کمپنی

کیساتھ ایل این جی کی خرید و فروخت کا معاہدہ کیا، معاملے کو روسی حکام کے

سامنے اٹھایا گیا، ایک دو ماہ میں یہ مسئلہ بھی حل ہوجائیگا۔ حماد اظہر نے کہا

کہ سابقہ حکومت کے کئے گئے معاہدے کے مطابق ہم ایک سال میں 4.5 ملین

ٹن کے حساب سے بارہ ہی کارگو خرید سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیپرا نے آر

ایل این جی پلانٹس کو فیول نہ ملنے کی وجہ سے پیسے نہیں کاٹے بلکہ گھریلو

سطح پر گیس کی مانگ بڑھتی جا رہی ہے۔

=-،-= گیس کی لوڈ شیڈنگ شروع نہیں کی، ترجمان

سوئی ناردرن گیس پائپ لائن کے ترجمان نے کہا ہے سوئی گیس کی کوئی بھی

لوڈ شیڈنگ شروع نہیں کی، گھریلو سمیت تمام صارفین کو گیس کی فراہمی

جاری ہے۔ کسی علاقے میں انفرادی طور پر کوئی پرابلم ہو سکتی ہے۔ سوئی

ناردرن گیس پائپ لائن کمپنی نے گیس کی لوڈ شیڈنگ شروع نہیں کی۔

گیس نایاب صارفین پریشان ، گیس نایاب صارفین پریشان ، گیس نایاب صارفین پریشان

گیس نایاب صارفین پریشان ، گیس نایاب صارفین پریشان ، گیس نایاب صارفین پریشان

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
=-= پاکستان بھر سے مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

Leave a Reply