بوریوالہ،ماں بیٹی نے 13 سالہ گھریلو ملازمہ کو تشدد کرکے قتل کر ڈالا

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بورے والا(نمائندہ خصوصی)سود پر ادھار کی رقم کے عوض رکھی گئی گھریلو کمسن گھریلو ملازمہ تشدد سے قتل،کمسن بچی کو ماں باپ سے ملنے کی ضد کرنے پر گھر کی مالک اور اسکی بیٹی نے بڑی سفاکی سے قتل کر دیا اور خود گھر سے فرار ہو گئیں،پولیس نے نعش قبضہ میں لیکر کاروائی شروع کر دی،

کرونا وباء سے ماں بنی 17 بچوں کی مجرم ، بیوی نے کیا شوہر کو دربدر

تفصیلات کے مطابق نواحی گائوں 517 (ای بی) میں فدا حسین نامی شخص کی بیوی اور بیٹی نے مبینہ طور پر 13 سالہ گھریلو ملازمہ چابیاں بی بی کو بڑی بے دردی سے تشدد کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا قتل کے بعد مالکن اور اسکی بیٹی موقع سے فرار ہو گئیں

معلوم ہوا ہے کہ بچی کے والد غریب محنت کش جہانگیر نے 3 سال قبل اسی گائوں کے فدا حسین سے 60 ہزار کی رقم سود پر ادھار لی تھی جسکی اقساط ادا کرنے کے باوجود اصل رقم برقرار تھی اس دوران حالات کی تنگدستی کے باعث وہ چند قسطیں ادا نہ کیں تو سود خور نے رقم واپس کرنے کا تقاضا کیا رقم واپس نہ ملنے پر اس نے جہانگیر کی اس وقت 10 سالہ بیٹی کو زبردستی اپنے گھر کام پر رکھ لیا

مجبور باپ اپنی بیٹی کو اسکے گھر چھوڑ کر دیگر بچوں اور بیوی کو لیکر کراچی محنت مزدوری کیلئے چلا گیا جہاں اسے جگر کا مرض لاحق ہو گیا اس دوران بچی اپنے والدین سے ملنے کی ضد کرتی تو سود خور کی ظالم بیوی اس پر پشیمانی تشدد کرتی رہی آج بھی بچی نے اپنے والدین کے پاس جانے کی ضد کی تو فدا حسین جو لاہور میں کام کرتا ہے اسکی بیوی اور بیٹی نے ملکر مبینہ طور پر انتہائی انسانیت سوز طریقے سے تشدد کر کے مار ڈالا

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی تھانہ صدر پولیس موقع پر پہنچ گئی اور نعش پوسٹ مارٹم کیلئے ہسپتال منتقل کرنے کے بعد دونوں ماں بیٹی کو حراست میں لے لیا مزید کاروائی کیلئے بچی کے ورثاء کی کراچی سے واپسی کا انتظار کیا جا رہا ہے۔

گھریلو ملازمہ کو تشدد

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply