گڈز ٹرانسپورٹر زکا دائرہ احتجاج وسیع، ملک بھر میں اشیا خوردونوش، ادویا ت کی قلت پیدا ہونے کا خدشہ

Spread the love

کراچی(سٹاف رپورٹر)گڈز ٹرانسپورٹر کی جانب سے احتجاج کا دائرہ کار بڑھا دیا

گیا، ملک بھر میں اشیا خوردونوش اور ادویا ت کی ترسیل روک دی گئی،جس کے

باعث ملک بھر میں غذائی اشیا اور دائوں کی قلت کا خدشہ پیدا ہوگیا جبکہ

صورتحال برقرار رہی تو کھانے پینے کی اشیا اور دوائوںکا ملنا مشکل ہوجائیگا،

گڈز ٹرانسپورٹرز ایک ہفتے سے احتجاج کررہے ہیں لیکن حکومت کی جانب سے

ان سے رابطہ نہیں کیا گیا جس کے بعد گڈز ٹرانسپورٹرز نے اپنے جاری احتجاج

کا دائرہ بڑھادیا، گزشتہ روزکی طرح بدھ کو بھی ہزاروں کنٹینر ہاکس بے ٹرمینل

بند ر گاہوں اور شاہراہوں پرکھڑے رہے اور احتجاج کیاگیا۔گڈز ٹرانسپورٹرز کی

ایکسل لوڈ قانون کی منسوخی کیخلاف ہفتے سے شروع ہونیوالی ہڑتال کے سلسلے

میں گزشتہ روز ہاکس بے ٹرک اڈہ پر مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں یہ طے

پایا یکم جون کو وفاقی حکومت کی جانب سے جار ی کردہ ایکسل لوڈ قانون جو بعد

ازاں 20جون کو دوبارہ منسوخ کردیا گیا تھا کی مکمل بحالی تک احتجاج جاری

رہے گا، گڈز ٹرانسپورٹرز کسی صو ر ت اوور لوڈنگ نہیں کریں گے بلکہ قانون

کے مطابق لوڈنگ کرنا چاہتے ہیں مگر حکومت انہیں اوورلوڈنگ پر مجبورکررہی

ہے، اس سے پہلے کہ ملک میں اشیا خوردونوش نایاب ہوجائیں حکومت ہوش کے

ناخن لے اور ایکسل لوڈ کے قانون کو بحال کرے۔یونائیٹڈ گڈزٹرا نسپور ٹ الائنس

کے رہنما امداد حسین نقوی کے مطابق احتجاج کے پہلے مرحلے میں سیمنٹ، کھاد

اور سریا کی سپلائی بند کی گئی تھی، تاہم اب اشیا خورد و نوش اور ادویات کی

ملک بھر میں ترسیل بھی بند کردی جائیگی،ایکسل لوڈ قانون اپنی اصل روح کے

مطابق بحا ل کردیا جائے، اگر ایسا نہ کیا گیا تو احتجاج کے اگلے مرحلے میں

شاہراہیں بند کردیں گے۔ دوسری طرف عوامی حلقوں نے ٹرانسپورٹرز کی ہڑتال

پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے غذائی اشیا اور ادویات کی ترسیل بند ہونے

سے کوئی بڑا انسانی سانحہ رونما ہوسکتا ہے جس کی روک تھام کیلئے اقدامات

کی ضرور ت ہے۔نیشنل ہائی ویے سیفٹی آرڈیننس 2000 کے مطابق ایکسل لوڈ

کے قانون کی مکمل بحالی تک اپنا احتجاج جاری رکھیں گے۔

Leave a Reply