کے پی ہاکی لیگ پشاور کے نام، آرگنائزنگ کمیٹی کیخلاف تحقیقات کا اعلان

کے پی ہاکی لیگ پشاور کے نام، آرگنائزنگ کمیٹی کیخلاف تحقیقات کا اعلان

Spread the love

پشاور(بیورو چیف، عمران رشید خان) کے پی ہاکی لیگ

Journalist Imran Rasheed

وزیراعلیٰ کے معاون اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے کہا ہے ہاکی لیگ کا

اچھا فیڈ بیک ملا، پاکستان ہاکی فیڈریشن سمیت سب نے تعریف کی ہے، لیگ اور

آرگنائزنگ کمیٹی کے بارے میں شکایات کی تحقیقات کریں گے۔ لیگ کی اختتامی

تقریب میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا قومی کھیل ہاکی کے

فروغ کیلئے ہر ممکن اقدام اٹھائیں گے، لیگ کی غلطیوں سے سیکھیں گے، اگلا

ایڈیشن اس سے بہترین انداز میں منعقد کرائیں گے۔ کھیل کو کھیل سمجھا جائے،

جیتنے والی ٹیم ہارنے والی ٹیم پر سبقت نہ سمجھے بلکہ سپورٹس مین سپرٹ کا

مظاہرہ کرے، ہار جیت کو صبر اور برادشت کے ساتھ تسلیم کیا جائے، رنرز اپ

ٹیم نے اچھے جذبے کا مظاہرہ کیا۔ یاد رہے آرگنائزنگ کمیٹی نے چار بار شیڈول

تبدیل کیا، میچوں کے وقت اور مقامات بھی تبدیل کئے گئے، کئی ٹیم مالکان پہلے

ہی کمیٹی پر اعتراضات اٹھا چکے تھے، لیکن آرگنائزنگ کمیٹی غیر جانبدار ہونے

کی بجائے پشاور فالکنز کے لئے راہ ہموار کرتی رہی۔

=–= کھیل اور کھلاڑی سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

قبل ازیں پشاور فالکنز نے بنوں پینتھرز کو ایک کے مقابلے میں دو گول سے

شکست دے کر پہلی بینک آف خیبر، خیبر پختونخوا ہاکی لیگ جیت لی، جبکہ

سیمی فائنل میچ میں امپائر کے متنازعہ فیصلے پر دوران میچ گراؤنڈ چھوڑ کر

جانے والی ٹرائبل لائنز تیسری پوزیشن کا میچ بھی کھیلنے نہ آئی، جس پر کوہاٹ

ایگلز کو تیسری پوزیشن کا حقدار قرار دیا گیا- پشاور کے ہونہار کھلاڑی ابوبکر

کو انفرای 14 گول کرنے پر مین آف دی لیگ قرار دیا گیا۔ وزیراعلیٰ کے معاون

خصوصی اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران خان بنگش اور سیکرٹری کھیل عابد مجید

نے کھلاڑیوں میں انعامات تقسیم کئے، ڈائریکٹر جنرل سپورٹس اسفندیار خٹک اور

دیگر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

=-،-= فائنل مقابلے کا آنکھوں دیکھا احوال

لالہ ایوب ہاکی سٹیڈیم میں کھیلے گئے فائنل کے پہلے دو کوارٹرز بغیر کسی گول

کے برابر رہے، تیسرے کوارٹر اور میچ کے مجموعی 45 ویں منٹ میں بنوں کے

معین شکیل نے فیلڈ گول کرتے ہوئے ٹیم کو برتری دلا دی، تاہم وہ ایک منٹ سے

زیادہ برقرار نہ رہی، جب پشاور کے نوخیز ملک نے فیلڈ گولڈ کرتے ہوئے مقابلہ

ایک ایک گول سے برابر کر دیا۔ 56 ویں منٹ میں پشاور کو پینلٹی کارنر ملا

جسے ضائع کر دیا گیا، لیکن بنوں کے کھلاڑی کے فاﺅل کی وجہ سے پشاور

فالکنز کو ایک اور پینلٹی کارنر مل گیا جس پر انہوں نے گول کرکے ایک گول کی

سبقت حاصل کر لی جو میچ کے اختتام تک برقرار رکھی اور مد مقابل ٹیم کی تمام

مووز کو ناکامی بناتی رہی اور یوں لیگ جیت لی۔

کے پی ہاکی لیگ
وزیر اعلیٰ کے معاون اطلاعات واعلیٰ تعلیم کامران بنگش ہاکی لیگ کی ونر پشاور فالکنز ٹیم کو انعامی چیک دے رہے ہیں

فاتح ٹیم کو 10 لاکھ، رنرز اپ کو 5 لاکھ، تیسری پوزیشن لینے والی ٹیم کو 3 لاکھ

روپے انعام دیا گیا۔ لیگ میں آٹھ ٹیموں بنوں پینتھرز، ڈی آئی خان سٹالینز، مردان

بیئرز، کوہاٹ ایگلز، ہزارہ واریئرز، پشاور فالکنز، ٹرائبل لائنز اور مالاکنڈ ٹائیگرز

نے حصہ لیا۔

=-،-= ناقص امپائرنگ کا چرچہ، پشاور فالکنز رہی نشانہ

لیگ کے دیگر میچوں کی طرح فائنل میں بھی امپائرنگ ناقص رہی اور پہلے سے

چہ میگوئیاں ہو رہی تھیں کہ پشاور ہی کو فتح دلوائی جائے گی، یہ چہ میگوئیاں

بھی ہوتی رہیں کہ پشاور کے 13 اور بنوں کے 11 کھلاڑی کھیل رہے ہیں۔ ایک

موقع پر امپائر نے پشاور فالکنز کو پینلٹی کارنر دیا تو بنوں کا ایک کھلاڑی کافی

دیر تک امپائر کیساتھ بحث کرتا رہا۔

=-،-= کھلاڑی چینجنگ روم نہ ہونے پر پریشان رہے

کے پی نیشنل ہاکی لیگ کے میچز کے دوران صوبے کے مختلف اضلاع سے

آنیوالے کھلاڑیوں کو میچ کیلئے تیار ہونے اور آرام کرنے میں مشکلات کا سامنا

کرنا پڑا، اور وہ مجبورا ہاسٹل سے تیار ہو کر لالہ ایوب ہاکی سٹیڈیم پہنچتے تھے،

حالانکہ بین الاقوامی قوانین کے تحت کھلاڑیوں کیلئے چینجنگ رومز اور آرام

کرنے سمیت علیحدہ باتھ رومز ضروری ہیں، تاہم لالہ ایوب ہاکی آسٹرو ٹرف

سٹیڈیم میں چینجنگ روم تو موجود ہے، لیکن گذشتہ کئی سال سے اس پر میڈیا

قابض ہے جس کی وجہ سے ہاکی کے کھلاڑیوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا-

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

مختلف اضلاع سے آنیوالے کھلاڑیوں کا اس حوالے سے موقف تھا کہ چینجنگ

رومز آسٹرو ٹرف کے نزدیک بنائے جاتے ہیں تاکہ کھلاڑی آرام سے اپنی کٹس

اور شوز تبدیل کرسکیں، ساتھ میں انہیں واش رومز کی سہولت بھی میسر ہو، لیکن

پشاور میں قومی لیول کی ہاکی لیگ کے مقابلوں میں چینجنگ رومز نہ ہونے سے

نہ صرف ریجنل اور قومی سطح کے کھلاڑیوں کو اس ضمن میں پورے ایونٹ میں

مسائل کا سامنا رہا- تاہم کھلاڑیوں نے ایونٹ کے انعقاد پر سپورٹس ڈائریکٹریٹ

خیبر پختونخوا کومبارکباد دیتے ہوئےامید ظاہر کی کہ اگلے ایونٹ کے موقع پر

کھلاڑیوں کیلئے چینجنگ رومز کی سہولت یقینی بنائی جائے گی-

کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ

کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ ، کے پی ہاکی لیگ

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply