کے پی بلدیاتی الیکشن پہلا مرحلہ،بڑا اپ سیٹ،جے یو آئی کی پی ٹی آئی پر برتری

کے پی بلدیاتی الیکشن پہلا مرحلہ،بڑا اپ سیٹ،جے یو آئی کی پی ٹی آئی پر برتری

Spread the love

پشاور (بیورو چیف، عمران رشید خان) کے پی بلدیاتی الیکشن

Journalist Imran Rasheed

خیبرپختونخوا میں بلدیاتی الیکشن کے پہلے مرحلے میں صوبہ کے 17 اضلاع میں

خود کش دھماکے، فائرنگ، تشدد اور لڑائی جھگڑوں کے دوران ہونے والی پولنگ

دو بھائیوں سمیت 5 قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع اور سکیورٹی اہلکاروں سمیت

درجنوں عام شہریوں کو زخمی کر کے ہسپتال پہنچانے کیساتھ مکمل ہو گئی ہے،

ووٹوں کی گنتی، جبکہ غیر سرکاری غیر حتمی نتائج آنے کا سلسلہ جاری ہے، جن

کے مطابق سٹی میئر اور چیئرمین شپ کی پہلے مرحلے میں مجموعی 64 نشستوں

میں سے 62 کے سامنے آنے والے نتائج کے مطابق جمعیت علماء اسلام 19 پر

کامیابی حاصل کر کے سرفہرست ہے، حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف

15 نشستیں جیت کر دوسرے نمبر پر ہے، عوامی نیشنل پارٹی اور آزاد امیدوار 8 ،

8 نشستوں پر فتح حاصل کر کے تیسری پوزیشن پر براجمان ہیں، پاکستان مسلم

لیگ ن تین، جماعت اسلامی اور تحریک اصلاحات 2،2 سیٹوں پر کامیابی حاصل

کر چکی ہے، جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی پہلے مرحلے میں سٹی میئر یا چیئرمین

شپ کی کوئی بھی نشست حاصل کرنے میں ناکام رہی ہے-

=-،-= خیبر پختونخوا سے مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

صوبہ خیبر پختونخوا کے جن 17 اضلاع میں بلدیاتی حکومتوں کے انتخابات ہوئے

ان میں پشاور، نوشہرہ، چارسدہ، مردان، صوابی، کوہاٹ، خیبر، مہمند، ہنگو، بنوں،

کرک، لکی مروت، ڈیرہ اسماعیل خان، ہری پور، بونیر، ٹانک اور باجوڑ شامل

ہیں۔ بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں صوبے کے دیگر 18 اضلاع میں

انتخابات 16 جنوری 2022ء کو ہوں گے۔ پہلے مرحلے کے دوران ایک کروڑ 26

لاکھ سے زائد رجسٹرڈ رائے دہندگان نے انتخابی امیدواروں کے چناؤ کیلئے ہر

ووٹر نے 6 ووٹ کاسٹ کیے، میئر سٹی کونسل اور چیئرمین تحصیل کونسل کی

نشست کے لئے ووٹر کو سفید رنگ، نیبر ہڈ اور ولیج کونسل کے لئے سلیٹی رنگ

جبکہ خواتین کی نشست کے لئے گلابی رنگ کا بیلٹ پیپر دیا گیا۔ بلدیاتی انتخابات

کے پہلے مرحلے میں 2 ہزار 32 امیدوار بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔ جنرل

نشستوں پر 217، خواتین نشستوں پر 876، کسان کی نشستوں پر 285 اور یوتھ

نشستوں پر 500 جبکہ اقلیتی نشستوں پر 154 امیدوار بلامقابلہ کامیاب ہوئے۔

=-،-= بلدیاتی انتخابات کا پہلا مرحلہ انتہائی خونی رہا

قبل ازیں خیبر پختونخوا کے 17 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کے دوران گرما

گرمی انتہاء کو پہنچ گئی اور کئی مقامات پر انتخابی دنگل میدانِ جنگ بن گیا جبکہ

خودکش دھماکے اور فائرنگ کے واقعات میں 5 افراد جاں بحق اور درجنوں

زخمی ہو گئے۔ مجموعی طور پر سٹی میئر اور تحصیل چیئرمین کی 64 نشستوں

کیلئے 689 امیدواروں، ویلج اور نیبرہڈ کونسلوں میں جنرل نشستوں پر 19 ہزار

285، خواتین کی نشستوں پر 3 ہزار 870، مزدور کسان کی نشستوں کیلئے 7 ہزار

428، یوتھ نشستوں پر 6 ہزار 11 اور اقلیتی نشستوں پر 293 امیدوارمد مقابل تھے

۔صوبے میں کل 9 ہزار 223 پولنگ اسٹیشنز اور 28 ہزار 892 پولنگ بوتھ قائم

کیے گئے جن میں 4188 پولنگ اسٹیشنز کو حساس اور 2507 کو زیادہ حساس

قرار دیا گیا تھا۔

=-،-= پولنگ کا عمل بدنظمی اور لڑائی جھگڑوں کی نذر ہوتا رہا

بلدیاتی انتخابات کیلئے پولنگ صبح 8 بجے شروع ہوئی جو شام 5 بجے تک بغیر

کسی وقفے کے جاری رہی۔ پولنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد پولنگ سٹیشن کے

احاطے میں موجود افراد کو ووٹ ڈالنے کی اجازت دی گئی۔ قبائلی اضلاع کے

عوام تاریخ میں پہلی بار اپنے بلدیاتی نمائندے منتخب کرنے کیلئے گھروں سے باہر

نکلے۔ ضلع باجوڑ کی تحصیل ماموند کے علاقہ کمرسر میں اے این پی کے

بلدیاتی امیدوار کی گاڑی پر خودکش دھماکے میں 2 افراد جاں بحق اور 6 زخمی

ہو گئے۔ وزیراعلیٰ کے پی کے محمود خان نے دھماکے میں جاں بحق افراد کے

ورثا کیلئے 5 ، 5 لاکھ جبکہ زخمیوں کیلئے 2، 2 لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا۔

=-،-= کرک تحصیل تخت نصرتی میں گولیاں، ضلع خیبر میں راکٹ چل گئے

ضلع کرک کی تحصیل تخت نصرتی پولنگ سٹیشن میں نامعلوم افراد نے فائرنگ

کردی اورفرار ہو گئے۔ فائرنگ میں پی ٹی آئی کے ایم این اے شاہد خٹک کے

چچازاد بھائی اورانکا گن مین جاں بحق اور چارافراد زخمی ہوگئے، جبکہ واقعے

کے بعد پولنگ روک دی گئی۔ ضلع خیبر بلدیاتی الیکشن کے دوران میدان جنگ بن

گیا، زخہ خیل اورلنڈی کوتل میں مسلح افراد کے پولنگ اسٹینشوں پر حملے اور

فائرنگ سے بھگدڑمچ گئی، جبکہ تصادم کے درمیان راکٹ چل گئے۔ پولنگ

سٹیشن پر بیلٹ باکس توڑ دیئے گئے اور الیکشن مواد کو بھی نقصان پہنچایا گیا

جبکہ بھگڈر اور بد نظمی کے بعد 20 پولنگ سٹیشنز پر پولنگ کاعمل بند ہو گیا

جس کے بعد حالات کشیدہ ہو گئے۔ تحصیل جمرود کے علاقہ ملاگوری میں پولنگ

سٹیشن میں بھگدڑ اور ہوائی فائرنگ کے بعد پولنگ کا عمل شدید متاثر رہا۔

=-،-= کوہاٹ میں تصادم ، درہ آدم خیل میں کئی پولنگ سٹیشن نذر آتش

خیبر کی تحصیل باڑہ کے علاقے جان خان سکول میں خواتین پولنگ سٹیشن میں

بدنظمی کے بعد پولنگ کا عمل رو ک دیا گیا۔ ضلع مہمند کے شہید بانڈا پولنگ

سٹیشن کے باہر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے ویلج کونسل کے جنرل کونسلر کے

امیدوار زخمی ہو گئے۔ ضلع ٹانک کے نواحی علاقے ملازئی میں پولنگ سٹیشن پر

دو سیاسی پارٹیوں کے درمیان تصادم کے بعد پولنگ کا عمل شدید متاثر رہا، تاہم

ضلعی انتظامیہ نے پولنگ کا عمل دوبارہ شروع کرا دیا۔ ضلع لکی مروت میں

ملتانی من جیوالہ کے خواتین کے پولنگ سٹیشن کے باہر فائرنگ سے علاقہ میں

کشیدگی پھیل گئی۔ فائرنگ کے بعد پولنگ روک دی گئی، تاہم ڈی پی او شہزادہ

عمر ریاض نے موقع پر پہنچ کر حالات پر قابو پا لیا۔ کوہاٹ کے سنگڑھ گرلز

پرائمری سکول پولنگ سٹیشن میں دھاندلی کی شکایت پر تحصیل میئرکے امیدوار

نے پولنگ رکوا دی، تاہم اسسٹنٹ کمشنر نے خاتون پریذائیڈنگ افسر کو کام سے

روک کر چارج ڈپٹی پریذائیڈنگ افسر کے حوالے کر دیا۔

بنوں کی تحصیل بکا خیل میں صورتحال انتہائی کشیدہ ، الیکشن ہی ملتوی

بونیرکی تحصیل چغرزئی میں بدنظمی کے باعث خواتین پولنگ سٹیشن پر پولنگ

کا عمل روکا گیا، تاہم کچھ دیر بعد دوبارہ شروع کر دیا گیا۔ پشاور میں گورنمنٹ

پرائمری سکول شاہ عالم پولنگ سٹیشن میں بدنظمی اور دھکم پیل میں پولیس اہلکار

سمیت دو افراد زخمی ہو گئے۔ تاہم ایس پی سکیورٹی محمد نبیل کھوکھر بھاری

نفری کے ہمراہ متعلقہ پولنگ اسٹیشن پہنچے اور انتخابی عمل دوبارہ شروع کرایا،

جے یو آئی رہنما اور کے پی کے اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اکرم خان درانی نے

الزام عائد کیا کہ بنوں کی تحصیل بکا خیل میں پی ٹی آئی کے صوبائی وزیر شاہ

محمد خان نے 5 پولنگ سٹیشنز پر دھاوا بولا، سامان اور عملے کو بھی اغواء کر

کے لے گئے۔ بنوں کی تحصیل بکا خیل میں امن و امان کی خراب صورتحال کے

پیش نظر الیکشن کمیشن نے تحصیل بکا خیل میں بلدیاتی انتخابات ملتوی کر دیے

اور کہا الیکشن کی نئی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

=-،-= مرادن میں ن لیگی امیدوار ، جے یو آئی کے حق میں دستبردار

مردان کی تحصیل کاٹلنگ میں چیئرمین شپ الیکشن کے لیے ن لیگ کا امیدوار

جے یو آئی ف کےامیدوار کے حق میں دستبردار ہو گیا۔ مسلم لیگ ن کے امیدوار

ثمر خان نے کہا ہم پی ڈی ایم کا حصہ ہیں اور پی ٹی آئی کو شکست دینے کے

لیے جے یو آئی کے حق میں دستبردار ہو رہا ہوں۔ ڈیرہ اسماعیل خان میں عوامی

نیشنل پارٹی کے امیدوار عمر خطاب شیرانی کے قتل کے بعد کونسل مئیر شپ کی

نشست کا الیکشن ملتوی کردیا گیا۔ بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں 2 ہزار

32 امیدوار بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔ جنرل نشستوں پر 217، خواتین نشستوں

پر 876، کسان کی نشستوں پر 285 اور یوتھ نشستوں پر 500 جبکہ اقلیتی نشستوں

پر 154 امیدوار بلامقابلہ کامیاب ہوئے۔

کے پی بلدیاتی الیکشن ، کے پی بلدیاتی الیکشن ، کے پی بلدیاتی الیکشن ،

کے پی بلدیاتی الیکشن ، کے پی بلدیاتی الیکشن ، کے پی بلدیاتی الیکشن

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply