Kashmir Curfio

کپواڑہ قتل عام کے شہداء کی برسی ، اہلخانہ تاحال انصاف کے منتظر

Spread the love

کپواڑہ قتل عام برسی

سرینگر(جے ٹی این آن لائن نیوز) بھارت کے غیر قانونی زیر قبضہ جموںوکشمیر

میں بھارتی فوجیوں نے مقبوضہ وادی کے شمالی قبضے کپواڑہ میں27

جنوری1994کو اندھا دھند فائرنگ کر کے 27بیگناہ کشمیری شہید کر دیے تھے۔

قتل عام کے اس المناک واقعے کوستائیں برس گزرگئے لیکن شہداء کے لواحقین

تاحال انصاف کے منتظر ہیں۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی فوجیوں نے

کپواڑہ قصبے کے بازار میں دکانداروں، خریداروں اورراہگیروں کو اس لیے بے

دردی سے نشانہ بنایا تھا کیونکہ انہوں نے جموںوکشمیر پر غیر قانونی بھارتی

قبضے کے خلاف بطور احتجاج ایک روز قبل 26جنوری کو ہڑتال کی تھی۔ متاثرہ

افراد کے اہلخانہ ابھی تک انصاف کی تلاش میں دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں ۔

قتل عام کے عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ اندوناک قتل عام کے دو روز قبل بھارتی

فوج کے فیلڈ افسر ایس بخشی نے کپواڑہ میں دکانداروں کو دھمکی دی تھی کہ اگر

انہوں نے چھبیس جنوری کو ہڑتال کی تواسکے سنگین نتائج برآمد ہونگے تاہم

قصبے کے دکانداروں نے بھارتی فوج کی دھمکی نظر انداز کر کے بھارتی یوم

جمہوریہ پر ہڑتال کی جس کی پاداش میں قابض فوج نے ستائیس کشمیریوں کی

جان لی۔ ہڑتال کے دوسرے روز 27جنوری کو دکانداروں نے دکانیں کھولیں تو

بھارتی فوجیوں نے بازار میں داخل ہو کر اندھا دھند گولیاں چلائیں ۔قابض فوجیوں

کی فائرنگ سے ستائیں افرادشہید جبکہ بیسیوں زخمی ہوگئے۔بھارتی فوجیوں نے

خون کی اس ہولی کے بعد زخمیوں کو بروقت ہسپتا ل نہیں لے جانے دیا ۔ قتل عام

کے اس المناک واقعے کے مجرم بھارتی فوج آج بھی آزادانہ گھوم رہے ہیں اور

شہداء کے اہلخانہ تاحال انصاف کے منتظر ہیں۔

کپواڑہ قتل عام برسی

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply