خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

Spread the love

پشاور(خصوصی رپورٹ عمران رشید) کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

خیبر پختونخوا پولیس کی جانب سے رواں سال کے 6 ماہ کی کارکردگی رپورٹ

جاری کر دی گئی ہے، جس میں صوبے کے تمام اضلاع کی کارکردگی کو الگ الگ

کر کے پھر بالترتیب ضلعی سرکلز میں ہونیوالی پولیس کی کامیاب کارروائیوں کے

اعداد و شمار کا جائزہ لیا جائے تو صوبہ بھر کے تمام اضلاع اور ان کے سرکلز کی 6

ماہ کی کارکردگی کے مقابلے میں ضلع کوہاٹ پولیس کے صدر سرکل پولیس کی

انسداد جرائم کیلئے جانیوالی صرف 3 ماہ کی کارکردگی نمایاں ہی نہیں بلکہ اسے تمام

صوبائی پولیس کی کارکردگی میں نمبر ون کہا جائے تو غلط نہ ہو گا-

خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

عموما ہر ضلعی پولیس کو تین یا چار سرکلز میں تقسیم کیا گیا ہے جس میں سٹی

سرکل، رورل سرکل، کینٹ صدر سرکلز شامل ہوتے ہیں، ان سرکلز کے سربراہان اے

ایس پی یا ڈی ایس پی مقرر کئے جاتے ہیں، مذکورہ سرکلز میں قائم تھانوں کی حدود

میں امن و امان قائم رکھنے کی ذمہ داری ان افسران پر عائد ہوتی ہے-

=-،-= ارض پاک کیخلاف گھناؤنی ویڈیو ہائی برڈ وار کا تسلسل، عوام رہیں ہوشیار

کوہاٹ برِصغير کا ايک پرانا ضلع ہے جس کا ذکر بدھ مت کی قديم کتابوں ميں بھی ملتا

ہے۔ عصرحاضر ميں بھی پاکستان کی سب سے پرانی چھاؤنی، ائیربیس، گھنڈیالی اور

تانڈا بند، انڈس ہائی وے، فرینڈ شپ ٹنل، پاک فضائیہ اور سگنل تربیتی مرکز کی وجہ

سے اس ضلع کو دفاعی و جغرافیاعی لحاظ سے اہم مقام حاصل ہے۔ اس کی سرحديں

صوبہ پنجاب، ضلع نوشہرہ، ضلع ہنگو، ضلع اپر اورکزئی اور ضلع کرک سے ملتی

ہیں۔ کوھاٹ روایتی لحاظ سے ایک تجارتی مرکز ہے جو قبائلی علاقہ جات اور پنجاب

کيلیے ايک اہم منڈی کی حيثيت رکھتا ہے۔ اکثریتی بنگش قبائل کے یہ محنتی، بہادر اور

ذہین لوگ ملازمت، ذرائع آمد و رفت، کاروبار اور دفاعی امور میں کافی ماہر ہیں۔ اردو

کے بین الاقوامی شہرت یافتہ شاعر احمد فراز کا تعلق بھی اسی ضلع سے ہے۔ کوہاٹ

میں ہندکو اور پشتو زبان بولی جاتی ہے۔ سید آدم بنوری اور حضرت حاجی بہادر بابا کا

شمار روحانی شخصيات میں ہوتا ہے۔ آزادی کے ہیرو عجب خان آفریدی کا تعلق بھی

یہیں سے ہے۔

=-،-= خیبرپختونخوا، بھنگ و افیون کی کاشت اور ادویہ سازی کیلئے کام شروع

یہاں کا امن پورے ملک کا امن کہلاتا ہے کیونکہ یہ قبائلی پٹی موجودہ ضم اضلاع کے

ساتھ جڑا ہوا ہے، ضلع کوہاٹ پولیس بھی مختلف سرکلز میں تقسیم ہے اس کے صدر

سرکل میں چار پولیس اسٹیشنز ہیں جن میں ایم آر سی، بلی ٹنگ، کھمبٹ اور تھانہ جرما

شامل ہیں۔ صدر سرکل کوہاٹ کے ڈی ایس پی خیبر پختونخوا پولیس کے جانے مانے

نیک نام تجربہ کار ڈی ایس پی بشیر داد خان ہیں، رواں سال 20 مارچ تا 30 جون کے

دوران انہوں نے جرائم کیخلاف بھرپور کارروائیاں عمل میں لاتے ہوئے بہترین اہداف

حاصل کئے، صرف تین ماہ دس دن کے دوران کوہاٹ صدر سرکل پولیس نے کروڑوں

مالیت کا اسلحہ و منشیات، لاکھوں روپے کی جعلی کرنسی، چور، رہزن اور ڈکیت

گرہوں سمیت ان ٹریس مقدمات کا سراغ لگایا جبکہ مختلف سنگین مقدمات میں ملوث

روپوش اشتہاری مجرموں کو گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں لاکھڑا کیا، صدر

سرکل پولیس کی کارکردگی مفصل رپورٹ بالترتیب ذیل میں پیش کی گئی ہے-

=-،-= کوہاٹ صدر سرکل پولیس آئس نامی عفریت کے خاتمے کیلئے پرعزم

خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست
معاشرے میں نوجوان نسل کا نشے کی طرف بڑھتا ہوا رحجان ایک خطرناک رخ

اختیار کر چکا ہے، افغانستان کے راستے پاکستان میں داخل ہونیوالا عفریت جسے عام

طور پر آئس کہا جاتا ہے کی تاریخ پرانی ہے لیکن خیبر پختونخوا میں چند سالوں میں

ہی اسقدر پھیل گیا کہ اسکا استعمال کالجز، یونیورسٹیز اور شہریوں میں عام ہو چکا

ہے، بعض رپورٹس کے مطابق لڑکیاں بالخصوص جسم فروش خواتین اور خواجہ سراء

اس کا شکار بن چکے ہیں جبکہ انسانی زندگی کیلئے خطرناک نشے کے روک تھام

اور خاتمہ پولیس کیلئے کسی بڑے چیلنج سے کم نہیں نظر آ رہا، اس سلسلے میں

کوہاٹ پولیس کے صدر سرکل ڈی ایس پی نے ٹیم ورک کے تحت اس پر قابو پانے کی

حکمت علمی اختیار کی، جس کے زریعے پیشہ ورانہ کارروائیاں عمل میں لائیں اس

کے عادی افراد پر کڑی نظر رکھتے ہوئے اس نشہ کی خرید و فروخت میں ملوث افراد

کو گرفتار کر کے انکے قبضے سے مجموعی طور پر 13 کلو آئس کرسٹل میتھ برآمد

کر کے ان کیخلاف مختلف مقدمات درج کئے، واضح رہے مقامی مارکیٹ میں 13 کلو

آئس کی قیمت ایک کروڑ روپے سے زیادہ بتائی جارہی ہے، صدر سرکل پولیس کے

مطابق معاشرے کے آئس نامی ناسور کے خاتمے کیلئے روزمرہ کے حساب سے

کارروائیاں جاری ہیں جس کی وجہ سے اسکا کافی حد تک خاتمہ ممکن ہوا ہے۔

=-،-= موت کے سوداگر سلاخوں کے پیچھے، منشیات کی بڑی کھیپ ضبط

خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست
————————————————————————–
کوہاٹ صدر سرکل پولیس نے ہیروئین کیخلاف جاری مہم کے دوران تین ماہ کے

عرصے میں ہوٹلز، پارکس اور جرائم پیشہ افراد کے ٹھکانوں پر چھاپے، ناکہ بندیوں

پر تلاشی کے دوران اس مکروہ دھندے میں ملوث ملزموں اور اس کے عادی افراد کو

گرفتار کر کے ان کے قبضے سے مجموعی طور پر 5 کلو ہیروئین برآمد کر کے

مقدمات درج کئے۔ صدر سرکل پولیس نے چرس فروشوں اور اسکے سمگلروں کے

خلاف گھیرا تنگ کرتے ہوئے ایسے عناصر کو توبہ تائب یا علاقہ چھوڑنے پر مجبور

کر دیا، پولیس نے بہترین حکمت عملی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے ذرائع سے ملنے

والی اطلاعات، مخبری اور دیگر پیشہ ورانہ انداز میں منشیات کی ترسیل روکنے کے

لئے کریک ڈاؤن کیا اس دوران پولیس نے مختلف کامیاب کارروائیوں میں لاکھوں

روپے مالیت کی 168 کلو چرس برآمد کر کے درجنوں ملزموں کو گرفتار کیا اور ان

کیخلاف نارکوٹکس ایکٹ کے تحت مقدمات درج کئے۔

=-،-= جھوم برابر جھوم شرابی، لیکن! اصلی شراب پی کر

خیبر پختونخوا پولیس کی کارکردگی میں کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

ملک بھر میں زیادہ تر اموات نقلی شراب پینے سے ہی ہوتی ہیں، کیونکہ اصلی شراب

تو صرف مخصوص طبقے کو ہی میسر ہے، اس لئے راتوں رات امیر بننے کے چکر

میں جرائم پیشہ افراد مختلف ادویات کو ملا کر نقلی شراب کشید کرتے ہیں جسے کچی

شراب بھی کہا جاتا ہے کی وجہ سے اکثر اس کے استعمال کرنے والے افراد یا تو

حرکت کلب بند ہونے سے اور یا ڈرائیونگ کے دوران نشہ بڑھ جانے سے حادثہ کی

صورت میں موت کی آغوش میں چلے جاتے ہیں یا پھر شراب کے بجائے ان ادویات

کو ہی پی کر نشی لوگ نشہ کی عادت کو پورا کر لیتے ہیں ایسے نشی افراد اور نقلی

شراب بنانے والے افراد کو صدر سرکل پولیس نے آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے ان کے

اڈوں پر چھاپے مارے اس دوران پولیس نے سیکڑوں بوتلیں وہ ادویات برآمد کیں جن

سے شراب تیار کی جاتی ہے جس میں ٹینچر وغیرہ شامل ہے۔

=-،-= انسداد اسلحہ سمگلنگ مہم، کروڑوں مالیت کے ہتھیار برآمد

کوہاٹ صدر سرکل پولیس نے اسلحہ سمگلنگ، نمائش اور غیر قانونی طور پر اسلحہ

رکھنے والوں کیخلاف کارروائیاں کرتے ہوئے مختصر عرصہ میں بہت بڑی کامیابیاں

حاصل کیں جن میں 39 عدد کلاشنکوفیں، 25 عدد رائفلیں، 14 عدد بندوقیں، 20 عدد

رپیٹرز، 3 عدد کالاکوف، 271 عدد پستول، مختلف بور کی 431 چارجرز اور مختلف

بور کے 15 ہزار کارتوس برآمد کر کے اسلحہ سمگلروں ملزموں کیخلاف مقدمات درج

کر کے انہیں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا۔

=-،-= سماج دشمنوں کا جینا کیا محال، معمہ بنے مقدمات کئے حل

کسی بھی پولیس افسر کے چارج سنبھالنے ہی جہاں دیگر جرائم کو کنٹرول کرنے کے

لئے حکمت علمی اختیار کرنی پڑتی ہیں، وہیں پر ان ٹریس مقدمات کے اصل محرکات

جاننے اور اس میں ملوث ملزموں کو گرفتار کرنا بھی پولیس افسر کے لئے کسی چیلنج

سے کم نہیں ہوتا، ڈی ایس پی صدر سرکل بشیر داد خان کی قیادت میں پولیس نے

مختلف کارروائیاں کرتے ہوئے اسلحہ کی نوک پر شہریوں کو لوٹنے والے رہزن

گرہوں، بین الصوبائی کارلفٹر گرہوں کے سرغنہ، موٹر کار و موٹر سائیکل چوروں

اور ڈکیتوں سمیت اندھے قتل کے مختلف ملزموں کو نہ صرف ڈھونڈ نکالا بلکہ انہیں

پابند سلاسل کر کے ان کیخلاف درج مقدمات میں جاری تفتیش میں پیش رفت کو یقینی

بنانے کیساتھ ساتھ سنگین مقدمات میں مفرور 48 مطلوب اشتہاریوں کو بھی قانون کی

گرفت میں لینے میں کامیابی حاصل کی۔

=-=قارئین= کاوش پسند آئے تو شیئر اور اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست ، کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست ، کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست ، کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست ، کوہاٹ صدر سرکل سرفہرست

Leave a Reply