corona Special jtnonline3

کووڈ-19 جلد معمولی مرض بن جائیگا، امریکی دوا ساز کمپنی فائز کا دعویٰ

Spread the love

واشنگٹن، شکاگو (جے ٹی این آن لائن کرونا سپیشل) کووڈ-19 معمولی مرض

امریکہ ادویہ ساز فائزر کمپنی کے سی ای او البرٹ بورلا نے کہا ہے کہ کووِڈ 19

کا علاج کرنے کے لئے ان کی کمپنی میں ایک گولی کی تیاری تیزی سے جاری

ہے جو اس سال کے اختتام تک بازار میں دستیاب ہو جائے گی۔ یہ کوئی ویکسین

نہیں بلکہ کرونا وائرس کا حملہ ہو جانے کے بعد اسکا قلع قمع کرنے والی دوا ہو

گی جس کے ابتدائی مرحلے کی طبی آزمائشیں اس سال مارچ میں شروع کی جا

چکی ہیں۔

=–= کرونا وائرس سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

کرونا وائرس کو ختم کرنے کے لیے یہ دوا اس خامرے ( اینزائم )کی پیداوار میں

کمی کرتی ہے جو کرونا وائرس کو انسانی خلیے میں پہنچنے کے بعد تقسیم در

تقسیم ہونے اور اپنا اثر شدید تر کرنے میں مدد دیتا ہے۔ اگر اس دوا کی طبی

آزمائشیں کامیاب رہتی ہیں اور امریکی ادارہ برائے غذا و دوا ( ایف ڈی اے ) اسے

بروقت منظور کرلیتا ہے، تو پھر یہ دسمبر 2021ء تک پورے امریکا میں دستیاب

ہو گی۔ فائزر کے مطابق، یہ دوا کرونا وائرس سے متاثر ہونے کی اولین علامات

نمودار ہونے پر دی جائے گی جسے کھانے کے بعد مریض کو ہسپتال میں داخل

ہونے کی ضرورت پڑے گی اور نہ ہی آئی سی یو کا منہ دیکھنا پڑے گا، بلکہ یہ

دوا کھا کر وہ بتدریج صحتیاب ہوجائے گا۔

=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

طبی ماہرین پُراُمید ہیں اس گولی کی آمد سے کرونا وائرس بھی انسانوں کے لیے

بالکل ویسا ہی معمولی مرض بن کر رہ جائیگا جیسا آج موسمی زکام ہے۔ یاد رہے

اس وقت کرونا وائرس کی وباء نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے جس

کے باعث عالمی سطح پر متاثرہ مریضوں کی تعداد 11 کروڑ سے زائد ہو چکی

ہے جبکہ انتہائی متاثرہ ممالک میں امریکہ ، برطانیہ ، بھارت اور دیگر یورپی

ممالک شامل ہیں- جیاں روزانہ ہزاروں کی تعداد میں اموات ہو رہی ہیں-

کووڈ-19 معمولی مرض

Leave a Reply