ملک بھر میں کورونا

کورونا کی تباہ کاریاں جاری، مزید 79افراد جاں بحق

Spread the love

کورونا کی تباہ کاریاں

لاہور،اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) پاکستان میں عالمی وبا کورونا کے باعث گزشتہ 24

گھنٹوں کے دوران مزید 79افراد انتقال کر گئے اور 3980نئے مریض بھی سامنے آئے جبکہ ملک

بھرمیں کورونا کے باعث اموات کی مجموعی تعداد 26 ہزار 114ہو گئی۔نیشنل کماند اینڈ آپریشن سینٹر

(این سی او سی)کی جانب سے جاری تازہ اعدادو شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک

بھر میں 3 ہزار 980کورونا کیسز رپورٹ ہوئے۔ملک بھر میں کوروناکے مجموعی کیسز کی تعداد 11

لاکھ 75ہزار 558ہوگئی۔ این سی او سی کے مطابق گزشتہ 24گھنٹے میں 64ہزار 53کورونا ٹیسٹ

کیے گئے۔ گزشتہ 24 گھنٹے میں کورونا مثبت کیسز کی شرح 6.21فیصد رہی۔دوسری طرف پنجاب

حکومت نے عوام کو ویکسین لگوانے کیلئے 15 ستمبر تک کی مہلت دیتے ہوئے اس کے بعد مختلف

محکموں میں داخلے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کرلیا ۔ پنجاب میں کورونا وائرس کے پھیلا ؤکے پیش

نظر 15 ستمبر کے بعد نان فارما سوٹیکل انٹروینشن کے اطلاق کا فیصلہ کرلیا گیا اور محکمہ صحت

پنجاب نے عوام کو ویکسین لگوانے کے لئے 15 ستمبر تک کی مہلت دے دی۔15 ستمبر کے بعد

مختلف محکموں میں داخلے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کرلیا ، اس حوالے سے تمام محکموں اور

سیکٹرز کو مختلف تاریخیں تفویض کی گئی ہے ، 15 ستمبر تک ویکسین لگانے کی مہلت دینے کا

نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔پابندیوں کا اطلاق لاہور، راولپنڈی، فیصل آباد،ملتان، خانیوال،

میانوالی، سرگودھا، خوشاب،بہاولپور، گوجرانوالہ،رحیم یار خان، گجرات ،شیخوپورہ، سیالکوٹ اور

بھکر پر ہو گا۔سیکرٹری صحت عمران سکندر بلوچ کے مطابق 15 ستمبر تک بس سٹینڈز، ٹکٹ آفس،

ریسٹ ایریا اور ریلوے اسٹیشنوں پر آگہی مہمات چلائی جائیں گی، اس مرحلے میں عوام کو کسی

سہولت سے روکا نہیں جائے گا صرف آگہی دی جائے گی۔ پابندیوں کو مختلف مرحلوں میں نافذ کیا

جائے گا اور مقرر کردہ آخری تاریخ کے بعد تمام سیکٹرز میں بغیر ویکسی نیشن کسی فرد کو کوئی

سہولت نہیں دی جائے گی، بیرون اور اندرون ملک سفر کرنے والے افراد اورہوٹلز ،ریسٹورنٹس اور

شادی ہالز میں داخلے کے لئے 30 ستمبرتک کی تاریخ مقرر کی گئی ہے۔ پبلک ٹرانسپورٹ، بین

الصوبائی، شہروں کے اندر اور مابین چلنے والی گاڑیوں،میٹرو، بی آرٹی ، اورینج ٹرین میں سفر کے

لئے 30 ستمبر تک مکمل ویکسین لگوانا لازم ہوگا جبکہ محکمہ تعلیم سے منسلک افراد(اساتذہ،

انتظامیہ اور ٹرانسپورٹ سٹاف)30 ستمبر تک مکمل ویکسی نیشن یقینی بنانے کی ہدایت کردی ہے۔

سیکرٹری عمران سکندر نے مزید بتایا کہ کاروباری مراکز میں داخلے اور ہوٹلز اور ریسٹ ہاوسز

میں بکنگ کے لئے 30 ستمبر تک مکمل ویکسی نیشن لگوانا ضروری ہو گا جبکہ تمام نجی اور

سرکاری دفاتر میں کام کرنے والے افراد 15 ستمبر تک پہلی جبکہ 15 اکتوبر تک دوسری ڈوز مکمل

کروائیں۔نوٹیفکیشن کے مطابق ٹرین اور تمام قومی شاہراہوں پر سفر کے لئے15 ستمبر تک پہلی جبکہ

15 اکتوبر تک دوسری ڈوز لگوانے کی شرط عائد کی گئی ہے، ہر قسم کی پبلک ٹرانسپورٹ میں اور

ٹرمینلز پر کام کر نے والے افراد کے لئے 15 ستمبر تک پہلی جبکہ 15 اکتوبر تک دوسری ڈوز

لگاوانا لازم ہے۔عمران سکندر بلوچ نے کہا کسی قسم کی سہولت دینے سے انکار نہیں کیا جائے گا

بلکہ ویکسی نیشن لگوانے کی ہدایت دی جائے گی، ٹریفک ، موٹروے، ہائی وے پولیس اور ضلعی

انتظامیہ ان قوانین پر عملدرآمد اور چیکنگ کی ذمہ دار ہو گی۔کورونا کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر

ہوائی سفر سے متعلق سول ایوی ایشن نے نیا سفری ہدایت نامہ جاری کر دیا۔ ڈومیسٹک اور انٹرنیشنل

فلائٹس پر کورونا ویکسی نیشن کو یکم اکتوبر سے لازمی قرار دے دیا گیا۔ ترجمان سول ایوی ایشن

اتھارٹی کے مطابق یکم اکتوبر سے ویکسی نیشن کی دو ڈوز لگانے والے مسافروں کو سفر کی اجازت

ہوگی۔ 17 سال اور زائد عمر کے مسافروں کو بغیر کورونا سرٹیفکیٹ جہاز میں سوار نہ ہونے دیا

جائے۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ملکی اور غیر ملکی ایئر لائنز کو عمل درآمد کی ہدایت کر دی

ہے۔ 17 سال سے کم عمر افراد اور مریضوں کو کورونا ویکسین سرٹیفکیٹ سے استثنی ہوگاپاکستان

میں کورونا ویکسینیشن چھ کروڑ سے تجاوز کر گئی۔ این سی اوسی کے مطابق گزشتہ روز 11 لاکھ

51 ہزار 390 افراد کو کورونا ویکسین لگائی گئی، ملک بھر میں ابتک 6 کروڑ 5 لاکھ 36 ہزار سے

زائد افراد کو ویکسین لگائی جا چکی ہے۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی اوسی ) کی جانب سے

کہا گیا ہے کہ جن کی دوسری ڈوز کا وقت ہوچکا ہے وہ میسج کا انتظار کیے بغیر دوسری ڈوز لگوا

سکتے ہیں۔کورونا ویکسین کی دوسری ڈوز کسی بھی ویکسین سینٹر سے لگوائی جاسکتی ہے ، اتوار

کا دن خصوصی طور پر دوسری ڈوز کے لیے مقرر ہے۔دریں اثناسندھ میں کوروناویکسین کی بوسٹر

ڈوز لگائے جانے کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔ کورونا بوسٹر ڈوز سندھ میں 5 مقامات پر جبکہ کراچی

میں 3 مقامات پر لگائی جائینگی، جن میں ڈاؤ اوجھا کیمپس، جناح اسپتال اور چلڈرن اسپتال(ڈسٹرکٹ

سینٹرل)شامل ہیں۔حیدرآباد میں ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ سروسز جبکہ سکھر میں پراچہ اسپتال میں سہولت

میسر ہوگی۔ بیرون ملک افراد اپنی تمام تصدیق شدہ اور مطلوبہ دستاویزات جمع کرواکر ویکسین

لگواسکتے ہیں۔بیرون ملک مقیم، ملازم، طلبہ، سیاحوں اور عمرہ حج کرنے والے اہل ہونگے۔ بوسٹر

کے لیے صرف سائنوفارم، سائنوویک، فائزر ویکسین لگائی جائے گی۔ 12 سے 17 سال کی عمر کے

بچوں کو گائیڈ لائن کے مطابق صرف فائزر ویکسین لگائی جائے گی۔

کورونا کی تباہ کاریاں

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply