کنیٹ بورڈز الیکشن، پی ٹی آئی 60، ن لیگ 59، آزاد امیدوار55 سیٹوں پر فاتح

کنیٹ بورڈز الیکشن، پی ٹی آئی 60، ن لیگ 59، آزاد امیدوار55 سیٹوں پر فاتح

Spread the love

لاہور، پشاور،کراچی، کوئٹہ (جے ٹی این نیوز) کنیٹ بورڈز الیکشن

ملک بھر میں کنٹونمنٹ بورڈز کے بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری اور غیر

حتمی نتائج کے مطابق 42 کنٹونمنٹ بورڈز کے 219 میں 212 وارڈز میں

پاکستان تحریک انصاف 60 وارڈز میں کامیابی حاصل کر کے پہلے، مسلم لیگ ن

59 حلقوں میں کامیابی حاصل کر کے دوسرے جبکہ آزاد امیدوار55 وارڈز میں

کامیابی سمیٹ کر تیسرے، پیپلز پارٹی 17 حلقوں میں کامیابی حاصل کر کے

چوتھے نمبر پر رہی- متحدہ قومی موومنٹ 10 وارڈز، مسلم لیگ ق، جماعت

اسلامی، بلوچستان عوامی پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی دو حلقوں میں کامیابی

سمیٹ سکیں- صوبائی سطح پر پنجاب میں51 نشستوں کیساتھ مسلم لیگ ن پہلے

51 نشستوں پر کامیابی کیساتھ پہلے، آزاد امیدوار32 نشستوں کیساتھ دوسسرے

اور تحریک انصاف 28 نشستوں کیساتھ تیسرے نمبر پر رہی، مسلم لیگ ق دو

نشستیں حاصل کر سکی- کے پی کے میں تحریک انصاف 18 نشستوں کیساتھ

سرفہرست رہی، آزاد امیدوار9 نشستوں کیساتھ دوسرے، مسلم لیگ ن 5 نشستوں

کیساتھ تیسرے نمبر پر رہی، پی پی نے تین، اے این پی نے دو نشستین حاصل

کیں، بلوچستان میں آزاد امیدوار5 وارڈز کامیابی سمیٹ کر اول رہے جبکہ سندھ

میں پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی میں کانٹے کا مقابلہ رہا اور دونوں جماعتوں نے

14،14 وارڈز میں کامیابی سمیٹی جبکہ متحدہ پاکستان 10 نشتسوں پر فتح حاصل

کر کے صوبے میں دوسرے نمبر پر رہی-

=-= پاکستان سے متعلق مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

لاہور اور راولپنڈی میں تحریک انصاف کو بری طرح شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

لاہور میں والٹن اور لاہور کینٹ بورڈز میں ن لیگ فاتح رہی، دونوں کنٹونمنٹ

بورڈز کے 19 وارڈزمیں سے 15 میں کامیابی حاصل کر لی ، والٹن کنٹونمنٹ

بورڈ میں مسلم لیگ (ن) نے9 وارڈزمیں کلین سویپ جبکہ لاہور کنٹونمنٹ بورڈ

میں 6 وارڈز میں کامیابی حاصل کی، یہاں تین وارڈز میں پی ٹی آئی جبکہ ایک

پر آزاد امیدووار کامیاب ہوا۔ جبکہ چکلالہ کینٹ میں پی ٹی آئی کو اپ سیٹ

شکست ہوئی۔ واہ کینٹ میں مسلم لیگ ن نے 10 میں سے 8 نشستیں جیت کر

تحریک انصاف کو بڑا دھچکا پہنچایا۔ تاہم گوجرانوالا میں تحریک انصاف نے

10 میں سے 6 نشستیں جیت کر مسلم لیگ ن کو مات دی، بہاولپور، جہلم اور

کھاریاں میں تحریک انصاف نے میدان مار لیا۔ملتان کینٹ کی 10 میں سے 9

نشستیں آزاد امیدوار لے اڑے۔

=-،-= صوبہ پنجاب سے متعلق مزید خبریں ( =،= پڑھیں =،=)

بلوچستان میں کنٹونمنٹ بورڈ کے بلدیاتی انتخابات کے غیر حتمی غیر سرکاری

نتائج کے مطابق چار آزاد امیدوار کامیاب ہوئے، پی ٹی آئی تین جبکہ بلوچستان

عوامی پارٹی دو وارڈز میں کامیاب ہوئی، پیپلز پارٹی، جمعیت علماء اسلام سمیت

دیگر سیاسی جماعتیں کسی بھی حلقے میں کامیاب نہیں ہو سکیں- جبکہ کوئٹہ میں

کنٹونمنٹ بورڈ حلقہ نمبر 5 بوائے اسکاﺅٹ میں 9 ووٹوں کو چیلنج کر دیا گیا۔

پولنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد غیر سرکاری اور غیر حتمی نتائج سامنے آنے

پر کامیاب ہونے والے امیدواروں کے حامیوں نے بھرپور جشن منایا، کامیاب

امیدواروں کے حامی ڈھول کی تھاپ پر بھنگڑے ڈالتے رہے اور مٹھائیاں تقسیم

کی جاتی رہیں، پولیس سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی جانب سے

سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ الیکشن کمیشن کے مطابق

اپنے وارڈ سے کامیاب ہونیوالا امیدوار ممبر کنٹونمنٹ بورڈ کا ممبر بنے گا، نو

منتخب کنٹونمنٹ بورڈ کے ممبران نائب صدر کا انتخاب کریں گے، کنٹونمنٹ

بورڈ کا سربراہ اسٹیشن کمانڈر ہوتا ہے، نائب صدر اور ممبرز اسی کے ماتحت

کام کرتے ہیں۔

=-،-= پولنگ کا عمل صبح 8 تا 5 بجے تک بغیر وقفہ جاری رہا

ملک بھر میں 42 کنٹونمنٹ بورڈز میں بلدیاتی انتخابات کیلئے صبح 8 سے شام 5

بجے تک بغیر وقفہ پولنگ کا عمل جاری رہا، مختلف مقامات پر بارش کی وجہ

سے صبح کے وقت ووٹ ڈالنے کی شرح انتہائی کم رہی، تاہم دوپہر کے وقت

عوام کی بڑی تعداد نے اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے کیلئے پولنگ سٹیشنوں

کا رخ کیا، جس کی وجہ سے غیر معمولی رش دیکھنے میں آیا، مختلف مقامات

پر سیاسی جماعتوں کے کارکنوں میں لڑائی جھگڑے اور تکرار کے واقعات بھی

پیش آئے، تاہم مجموعی طور پر حالات پر امن رہے، کچھ مقامات پر مخالفین کی

جانب سے مبینہ دھاندلی کے الزامات بھی عائد کئے گئے، پیپلزپارٹی نے کراچی

کنٹونمنٹ بورڈز میں قواعد کی خلاف ورزی پر الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا،

سیاسی جماعتوں کے مرکزی اور صوبائی رہنما پولنگ کیمپوں کا دورہ کر کے

کارکنوں اور ووٹرز کا حوصلہ بڑھاتے رہے-

=-،-= ووٹنگ کے دوران کئی حلقوں میں لڑائی جھگڑوں کے واقعات

صوبائی دارالحکومت لاہور میں مختلف مقامات پر مسلم لیگ (ن) اور تحریک

انصاف کے کارکنوں کے درمیان لڑائی جھگڑے کے واقعات ہوئے، کارکنوں کے

درمیان ہونے والی تلخ کلامی لڑائی جھگڑے میں بدل گئی اور کارکنوں نے ایک

دوسرے پر تھپڑوں کی بارش کردی، تاہم پولیس نے موقع پر پہنچ کر دونوں

طرف کے لوگوں کو پیچھے ہٹا دیا۔ ملتان میں کنٹونمنٹ بورڈز کے بلدیاتی

انتخابات کے دوران مبینہ طور پر قواعد وضوابط کی خلاف ورزیوں پر لڑائی

جھگڑے اور دنگا فساد کے واقعات پیش آئے جس کی وجہ سے پولنگ کا عمل

بھی متاثر ہوا۔ ملتان میں پی ٹی آئی کی خواتین کارکنوں کی جانب سے پولنگ

اسٹیشن کے اندر جانے کی کوشش پر لڑائی ہو گئی۔ دونوں جانب سے کارکنوں

نے لاتوں اور گھونسوں کا آزادانہ استعمال کیا۔ مرد ایک دوسرے سے گتھم گتھا

ہو گئے اور اس دوران خواتین بھی لڑائی میں کود پڑیں، لڑائی جھگڑے کی وجہ

سے پولنگ کا عمل بھی متاثر ہوا، تاہم پولیس نے کارروائی کر کے ہنگامہ آرائی

کرنے والوں کو باہر نکال کر پولنگ کا عمل دوبارہ شروع کروا دیا۔ راولپنڈی کے

چکلالہ کینٹ وارڈ نمبر7 کے خواتین پولنگ اسٹیشن پر مسلم لیگ (ن) اور پی ٹی

آئی کی خواتین کارکنوں میں تصادم ہو گیا جس سے الیکشن کا عمل متاثر ہوا، تاہم

پولیس نے موقع پر پہنچ کر حالات کو قابو میں کر لیا۔ ضلع راولپنڈی میں چکلالہ

کنٹونمنٹ ورڈ 8 کے پولنگ اسٹیشن 6 پر سیاسی کارکنوں میں تصادم ہوا، تصادم

تحریک انصاف و مسلم لیگ ن کے کارکنوں کے درمیان ہوا، پولیس نے صورت

حال کو کنٹرول کیا۔ ضلع اوکاڑہ میں انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر

پی ٹی آئی کے رہنما کو 4 گارڈز سمیت حراست میں لے لیا گیا۔

کنیٹ بورڈز الیکشن ، کنیٹ بورڈز الیکشن ، کنیٹ بورڈز الیکشن

کنیٹ بورڈز الیکشن ، کنیٹ بورڈز الیکشن ، کنیٹ بورڈز الیکشن

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply