کشمیری رہنما مودی کیخلاف

آل پارٹیز کانفرنس ، کٹھ پتلی کشمیری رہنما بھی مودی کیخلاف پھٹ پڑے

Spread the love

کشمیری رہنما مودی کیخلاف

نئی ہلی (جے ٹی این آن لائن نیوز) بھارتی وزیر اعظم کی کشمیر پر آل پارٹیز کانفرنس میں بھارت

نواز کشمیری رہنما بھی مودی پر پھٹ پڑے اور مودی کے غیر قانونی اقدامات کی کھل کر مخالفت کی

۔ محبوبہ مفتی نے کہا جموں کے لوگ پانچ اگست کے بعد سے غصے اور صدمے میں ہیں،میں نے

وزیر اعظم مودی کو بولا ہے کہ پانچ اگست کے اقدام کو جس طریقے سے ختم کیا گیا وہ غیر قانونی

ہے۔ آرٹیکل 370 کو جس طرح ختم کیا گیا اس پر جموں کے لوگ جمہوری اور پرامن جدوجہد کریں

گے چاہے کئی سال لگ جائیں۔ عمر عبد اللہ نے کہا ہم پانچ اگست کے اقدام کو نہیں مانتے،ہم قانون

کو ہاتھ میں نہیں لیں گے ،ہم کورٹ میں لڑ یں گے۔ آرٹیکل 370 کو بھارتی سرکار بحال کرے۔ ہماری

لڑائی اس اقدام کی واپسی تک جاری رہے گی۔ لداخ یونین ٹیریٹری کا درجہ عوام نہیں چاہتے۔ جموں و

کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کی جائےکا درجہ بحال کیا جائے۔ کشمیری رہنما غلام نبی آزاد نے

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت بحال کرنے اور گرفتار

رہنماو¿ں کی رہائی کا مطالبہ کر دیا۔میٹنگ میںآرٹیکل 370 کو ہٹائے جانے کے تقریبا دو سالوں کے

بعد مودی سرکار نے سرکار کے سیاسی لیڈروں کے ساتھ بات چیت کی ہے۔ کانگریس کے سینئر لیڈر

غلام نبی آ زاد نے مطالبہ کیا کہ جموں و کشمیر کو مکمل ریاست کا درجہ جلد واپس ملے اور اسمبلی

انتخابات فورا کرائے جائیں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ ڈومیسائل سے متعلق پرانے قوانین کو برقرار

رکھا جائے۔ ریاست کی تقسیم نہیں ہونی چاہئے۔بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھارت کے زیر

انتظام کشمیر کی سیاسی صورت حال پر تبادلہ خیال کےلئے نئی دہلی میں ایک ااہم کانفرنس بلائی ۔

بھارتی حکومت نے اس بات چیت میں شرکت کےلئے 14 ہند نواز کشمیری رہنماو¿ں کو دعوت دی

تھی نریندر مودی کی صدارت میں ہونےوالے اس اجلاس میں شرکت کےلئے ایک درجن سے بھی

زیادہ کشمیری رہنما دہلی پہنچے۔مبصرین کے مطابق سیاسی بقا کے لیے دہلی سے بات چیت جہاں

کشمیری رہنماو¿ں کی مجبوری ہے وہیں کشمیر کے مسئلے پر بھارتی حکومت کو بھی ہند نواز

رہنماو¿ں کی سخت ضرورت ہے۔مقامی وقت کے مطابق بعد دوپہر بات چیت شروع ہوئی اور کئی

گھنٹوں تک جاری رہی۔ اس میں نیشنل کانفرنس کے صدر فاروق عبداللہ، ان کے بیٹے عمر عبداللہ، پی

ڈی پی کی سربراہ محبوبہ مفتی اور کانگریس کے رہنما غلام نبی آزاد جیسے چار سابق وزارء اعلی

سمیت متعدد سیاسی جماعتوں کے رہنما حصہ لے رہے ہیں۔اس میٹنگ میں شرکت کرنےوالے کشمیر

کے وہی تمام ہند نواز رہنما ہیں، جنہیں دفعہ 370 کے خاتمے سے پہلے جیلوں میں قید کر دیا گیا تھا

پھر کئی مہینے بعد انہیں رہا کر دیا گیا۔ ان میں سے ایک بڑی تعداد اب بھی جیلوں میں قید ہے۔

کشمیر کانفرنس

کشمیری رہنما مودی کیخلاف

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply