Manmohan singh Ex Prime minister India speech in Congress Kashmir Policy Group at New Dehli.

کشمیرکی بھارتی آئین میں خصوصی حیثیت ختم کرنا خطرناک، منموہن سنگھ

Spread the love

نئی دہلی( جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک ) کشمیرکی خصوصی حیثیت

کشمیر کی بھارتی آئین میں حاصل خصوصی حیثیت ختم کرنا خطرناک، منموہن سنگھ،

نئی دہلی سرکار وادی کشمیرمیں اس ضمن میں پائے جانے والے خوف کا فوری

طور پر تدارک کرے، سابق بھارتی وزیراعظم کا پارٹی اجلاس سے خطاب،

پڑھیں: بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں مزید 28 ہزار فوجی تعینات کرنے کا اعلان

بھارت کی اپوزیشن جماعت کانگریس نے مقبوضہ جموں و کشمیر کی موجودہ

صورتحال اور بڑے پیمانے پر سکیورٹی فورسز کو جموں وکشمیر بھیجنے کے

فیصلے، حکمران پارٹی کی غلط پالیسیوں اور جموں و کشمیر کے بارے میں

بھارتی آئین کے آرٹیکل 35A اور آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے حکومتی ارادوں

کے بارے میں جموں و کشمیرمیں وسیع پیمانے پر پیدا ہونے والے خوف و ہراس

اور خدشات پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے یہ تمام اقدامات جموں و

کشمیر میں انتشار اور عدم تحفظ کا ماحول پیدا کر رہے ہیں۔

مزید پڑھیں: بھارتی فورسز کی بدترین دہشتگردی، 8 کشمیری نوجوان شہید

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم منموہن سنگھ کی سربراہی میں ستمبر2017ء

میں تشکیل پانیوالے کانگریس پارٹی کے کشمیر پالیسی پلاننگ گروپ نے مقبوضہ

جموں کشمیر کی موجودہ تشویشناک صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے خصوصی

اجلاس منعقد کیا جس کی صدارت سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے کی۔ اس اہم

اجلاس میں کانگریس پارٹی کے کشمیر پالیسی پلاننگ گروپ کے ارکان سابق

صدر ریاست جموں و کشمیر ڈاکٹر کرن سنگھ، جموں و کشمیراسمبلی میں اپوزیشن

لیڈر غلام نبی، سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم، طارق حمید، غلام احمد میراوررگ

زنگ زورا نے شرکت کی۔

یہ بھی پڑھیں: مودی کا مقبوضہ کشمیر میں پاکستان زندہ باد نعروں سے استقبال

اجلاس میں جموں وکشمیر سے ملنے والی اطلاعات پر گہری تشویش کا اظہار

کرتے ہوئے کہا گیا دہلی سرکار کے اقدامات سے جموں وکشمیر میں ماحول

انتہائی کشیدہ ہوتا جارہا ہے جس کا دہلی سرکار کو سنجیدگی سے نوٹس لینا

چاہیئے۔ مرکزی حکومت کی کشمیر کے بارے میں پالیسی اور اقدامات سے

سیاحوں اور عام شہریوں میں انتہائی خوف پایا جاتا ہے اسلئے کشمیر میں بڑھتے

خوف اور شہریوں میں عدم تحفظ کا نوٹس لیتے ہوئے کانگریس پارٹی کا کشمیر

پالیسی پلاننگ گروپ حکومت سے مطالبہ کرتا ہے جموں و کشمیر میں کوئی

نامناسب فیصلہ کرکے ایسا اقدام ہرگز نہ اٹھایا جائے جس سے کشمیر کے بحران

میں مزید شدت آئے۔

جانیئے: مقبوضہ کشمیر میں خون ریزی مزید بڑھنے کا امکان، برطانوی میڈیا

کانگریس پارٹی کے کشمیر پالیسی پلاننگ گروپ نے کشمیر کی بھارتی آئین میں

حاصل خصوصی حیثیت ختم کرنا خطرناک قرار دیتے ہوئے کہا آئین کے آرٹیکل

35A اور آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے بارے میں کشمیری شہریوں کے تحفظات

اور ان کے ذہنوں میں بڑھتے ہوئے خوف پر بھی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا

گیا کانگریس پارٹی مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے جموں و کشمیر کو

بھارتی آئین میں حاصل خصوصی حیثیت ختم ہونے کے بارے میں پائی جانیوالی

تشویش اور خوف کا فوری تدارک کیا جائے اور آئین کے آرٹیکل 35A اور آرٹیکل

370 کو ختم کرنے سمیت کوئی ایسا اقدام ہرگز نہ اٹھایا جائے جس سے کشمیر کے

حالات مزید بگڑ جائیں۔

کشمیرکی خصوصی حیثیت

Leave a Reply