corona Special jtnonline2

کرونا وائرس 10 سال سے موجود، وباء پھیلنے کا ایک اور نظریہ سامنے آ گیا

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن کرونا سپیشل) کرونا وائرس 10 سال

کرونا وائرس پھیلنے کا سبب اب تک سامنے نہیں آ سکا، لیکن ایک نیا خیال سامنے

آ گیا ہے جس کے مطابق عالمی وباء شروع ہونے سے ایک دہائی قبل ہی چین میں

کرونا کی شناخت ہو گئی تھی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکہ کی بائیو سائنس

ریسورس پراجیکٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر جوناتھن لیتھم نے کہا ہے کہ

کوویڈ19 وائرس کی بتدریج نشوونما یہ وباء پھیلنے سے 10 سال پہلے بیمار چینی

کان کنوں کے جسم میں ہوئی تھی۔ ڈاکٹر جوناتھن لیتھم کے مطابق کان کنوں کی

پراسرار بیماری کی جانچ کے لیے نمونے ووہان میں ماہرین کو تحقیق کے لیے

بھیجے گئے تھے، جہاں سے یہ وائرس دنیا بھر میں پھیل گیا۔ ڈاکٹر جوناتھن نے

بتایا کہ چینی کان کن نمونیا جیسی بیماری سے شدید بیمار ہوئے تھے، جن میں سے

3 ہلاک اور باقی 6 ماہ تک ہسپتال میں زیرعلاج رہے- اس حوالے سے ایک چینی

محقق نے کہا تھا کہ کان کنوں کی ہلاکت سارس جیسے وائرس سے ہوئی۔

=–= کرونا وائرس سے متعلق خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

خیال رہے کہ کرونا وائرس کے پھیلنے کے حوالے سے مختلف نظریات سامنے

آتے رہے ہیں، جن میں سب سے معروف خیال یہ ہے کہ کرونا وائرس ووہان کی

ایک مارکیٹ سے پھیلا جہاں چمگادڑوں سمیت کئی جانوروں کو فروخت کیا جاتا

ہے، اور یہ وائرس چمگادڑوں کے ذریعے انسانوں میں منتقل ہوا، تاہم اس حوالے

سے کوئی ثبوت سامنے نہیں آ سکا، جبکہ آئے روز اس ضمن میں خبریں زیر

گردش رہتی ہیں اور امریکہ کی جانب سے اسے چینی خود ساختہ وائرس بھی ثابت

کرنے کی کوششیں جاری ہیں-

کرونا وائرس 10 سال ، کرونا وائرس 10 سال ، کرونا وائرس 10 سال

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply