corona special jtnonline1 97

کرونا نے سمندر کو بھی نہ بخشا، ماسک اور دستانے آلودگی بڑھانے لگے

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

پیرس (جے ٹی این آن لائن کرونا سپیشل) کرونا وائرس سمندر آلودگی

کرونا وائرس کے باعث لاک ڈاون سے جہاں فضائی آلودگی کم ہوئی ہے۔ وہیں اب

وائرس کی وجہ سے سمندری آلودگی بڑھنے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔ فرانس میں

ماحولیاتی تحفظ کیلئے کام کرنیوالی ایک مقامی جماعت ” آپریشن کلین سی ” نے

انکشاف کیا ہے کہ کرونا وائرس کے سبب پیدا ہونیوالا کچرا اور باقیات ریویرا کے

علاقے میں انتیب کے تفریحی مقام کے نزدیک بحیرہ روم میں پھیلا ہوا ہے۔

مذکورہ جماعت اس حوالے سے آگاہی پیدا کرنے اور علاقے کی صفائی کی

کوششیں کر رہی ہے۔

——————————————————————————
یہ بھی پڑھیں : لاک ڈاؤن، چلی میں ہنگامے، برازیلی عوام سراپا احتجاج
——————————————————————————

تفصیلات کے مطابق ماحولیاتی تحفظ کیلئے کام کرنےوالی جماعت ” آپریشن کلین

سی ” کا کہنا ہے اس کچرے میں آپریشن کے دوران استعمال ہونیوالے ماسک اور

ربڑ کے دستانے اور دیگر سامان شامل ہیں۔ یہ بحیرہ روم کی لہروں کے نیچے

تیرے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ ” آپریشن کلین سِی “ نامی اس گروپ نے گذشتہ ہفتے

اس حوالے سے ایک وڈیو بنائی تھی۔ جس میں سمندر کی سطح پر شراب کی

بوتلوں اور دیگر کچرے کیساتھ ماسک اور دستانے بھی پھیلے ہوئے نظر آئے۔

گروپ نے تصاویر اور وڈیو کو انٹرنیٹ کے ذریعے پھیلا دیا ہے۔

کچرا بحیرہ روم میں آلودگی مسائل بڑھا سکتا ہے ، آپریشن کلین سی

فرانس اور دیگر ممالک لاک ڈاؤن میں کمی اور اپنے ساحلوں کو دوبارہ سے کھولنے کا ارادہ کر رہے ہیں۔ گروپ نے خبردار کیا ہے کہ یہ کچرا بحیرہ روم میں آلودگی کے مسائل کو بڑھا سکتا ہے۔ ایک مقامی رکن پارلیمنٹ نے تجویز پیش کی ہے کہ سمندر میں ماسک اور کچرا پھینکنے والوں پر جرمانہ عائد کیا جائے۔

پیرس میں فٹ پاتھوں پر بھی کرونا کچرے کی شکایات عام

فرانسیسی گروپ ” آپریشن کلین سِی ” کے بانی جیفری بیلتیہ نے بتایا کہ وائرس سے متعلق کچرے کی مقدار ابھی محدود ہے، لیکن اگر ہم نے کچھ نہ کیا تو یہ ریویرا کے خوبصورت ساحل پر آلودگی پھیلانے کا باعث بنے گا۔ دارالحکومت پیرس میں صفائی کرنیوالے کارکنان نے بھی فٹ پاتھوں پر پڑے ہوئے ماسک کی تعداد میں اضافے کی شکایت کی ہے۔

——————————————————————————
دوستو : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر کریں، فالو کریں اپڈیٹ رہیں
——————————————————————————

یہ صورتحال فرانس کی جانب سے لاک ڈاؤن کے اقدامات میں بتدریج نرمی کرنے اور مزید عوامی مقامات پر شہریوں کے ماسک پہننے کی شرط عائد کیے جانے کے بعد سامنے آئی ہے۔

ماحولیاتی تحفظ گروپ نے اسے نئی قسم کی آلودگی کی شروعات قرار دیدیا

ماحولیاتی صفائی سے متعلق گروپ کا کہنا ہے کہ ان چیزوں کا ساحل سے ملنا خطرے کی گھنٹی ہے، کیونکہ یورپ میں لاک ڈاون ختم ہو رہا ہے اور لوگ گرمی کے باعث ساحلوں پر جا رہے ہیں۔ گروپ کے سربراہ نے اسے نئے قسم کی آلودگی کی شروعات قرار دیا ہے۔

کرونا وائرس سمندر آلودگی

Leave a Reply