کرونا وائرس،22 ممالک میں تعلیمی ادارے بند ،واشنگٹن اور کیلیفورنیا میں ایمر جنسی نافذ

جنیوا/بیجنگ/لندن/پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک )کرونا وائرس سے دنیا بھر میں اب تک ہزاروں افراد

ہلاک اور ایک لاکھ سے زائد متاثر ہو چکے ہیں ،اب تک کرونا وائرس 80سے زائد ممالک مین پھیل

چکا ہے ۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کی یونیسکو کے حوالے سے تازہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ

کرونا وائرس کے پھیلنے سے عالمی سطح پر سکولوں کو بند کیے جانے کے بعد تقریبا 30 کروڑ

بچے اس وقت سکول جانے سے محروم ہوچکے ہیں جس سے ان کی تعلیم کا خاطر خواہ حرج ہو رہا

ہے۔ رپورٹ کے مطابق نوول کورونا وائرس اس وقت 80ممالک میں پھیل چکا ہے ،اس سے95ہزار

افراد متاثر اور 32ہزار سے زائد ہلاک ہوچکے ہیں۔عالمی سطح پر ہلاکتوں میں چین سر فہرست ہے۔

تمام ممالک میںکرونا وائرس سے متاثرہ افراد کو آئسولیشن رومز میں رکھا جا رہا ہے ،فوڈ سے تعلق

رکھنے والی متعدد فیکٹریاں بند ہو چکی ہیںاور اب سکول بھی بند کئے جا رہے ہیں تاکہ بچوں کو اس

موذی مرض سے بچایا جا سکے۔یونیسکو کا کہنا ہے کہ 13 سے زائدممالک نے سکول بند کئے ہیں

جس کی وجہ سے 29 کروڑ 5 لاکھ بچے متاثر ہوئے ہیں جبکہ دیگر 9 ممالک نے مقامی سطح پر

سکول بند کئے ہیں۔یونیسکو کے سربراہ اودرے آزولے کا کہنا ہے کہاگر یہ بندش مسلسل جاری رہی

تو تعلیم کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے۔عالمی ادارہ صحتنے لوگوں کو ہدایت کی ہے

کہکاغذ کے کسی بھی کرنسی نوٹ کو چْھونے کے فورا بعد اپنے ہاتھوں کو دھولیا جائے۔ اس لیے کہ

کرونا وائرس ان نوٹوں کے ذریعے ایک شخص سے دوسرے شخص کو منتقل ہو سکتا ہے۔ ادارے نے

تجویز پیش کی ہے کہ مالی معاملات کے لیے مختلف طریقوں کا استعمال کیا جائے کیوں کہ کرونا کا

وائرس کئی روز تک کاغذی کرنسی نوٹ کی سطح پر باقی رہ سکتا ہے۔امریکا میں کورونا وائرس

کے کیسز میں تیزی آگئی ہے جبکہ وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد11ہو گئی ہے۔میڈیارپورٹس کے

مطابق واشنگٹن میں اب تک 10ہلاکتیں ہو چکی ہیں اور ایک شخص کیلیفورنیا میں ہلاک ہوا ہے جبکہ

13 ریاستوں میں کل 149افراد وائرس میں مبتلا ہیں۔امریکا کے کچھ علاقوں میں اسکول بند کر دیئے

گئے ہیں ریاست واشنگٹن اور کیلیفورنیا میں ایمر جنسی نافذ کردی گئی ہے ، جبکہ بعض شہریوں کی

جانب سے لیبارٹریز میں ٹیسٹ نہ کیے جانے کی شکایات سامنے آئی ہیں۔نوول کرونا وائرس کے

باعث دنیا بھر میں بھی ہلاکتوں کا سلسلہ جاری ہے ،جنوبی افریقہ میں بھی کرونا کا پہلا مریض

سامنے آگیا جبکہ چین میں نوول کرونا وائرس کے باعث مزید 31افراد ہلاک اور139نئے مریضوں

کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد مجموعی ہلاکتیں 3012اور متاثرہ افراد کی تعداد 80ہزار 409

ہوگئی جن میں سے 5ہزار 952 افراد کی حالت بدستور تشویشناک ہے،ایران میں کرونا وائرس کی

وبا سے مرنے والوں کی تعداد107 ہوگئی جبکہ فرانس میں کرونا کے مریضوں کی تعداد 285

برطانیہ میں87 ہوگئی،کینیڈا کی فوج نے کرونا کے پھیلا ئو کیخلاف تیاریاں شروع کر دیں۔ جمعرات

کو چین کے محکمہ صحت نے کہا ہے کہ انہیں چینی مین لینڈ سے بدھ کے روز کرونا وائرس کے

139 نئے مصدقہ کیسز اور 31 اموات کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔قومی صحت کمیشن کے مطابق

یہ تمام اموات صوبہ ہوبے میں ہوئی ہیں۔کمیشن نے کہا ہے کہ اسی دوران 143 نئے مشتبہ کیسز

رپورٹ ہوئے۔اسی طرح بدھ کے روز 2ہزار 189 افراد کو صحت یاب ہونے کے بعد ہسپتال سے فارغ

کیا گیا جبکہ شدید بیمار مریضوں کی تعداد 464 کم ہو کر 5ہزار 952 ہوگئی ہیں۔جنوبی افریقہ میں

جمعرات کونوول کرونا وائرس کی بیماری کا پہلے کیس رپورٹ ہوا ہے۔وبائی امراض کے قومی

ادارے(این آئی سی ڈی)نے تصدیق کی ہے کہ کووڈ-19 کے مشتبہ کیس کا مثبت نتیجہ آیا ہے۔ ادھر

ایران میں نوول کرونا وائرس کی وبا سے107 افراد ہلاک ہوگئے ہیں،یہ بات ایران کی وزارت صحت

وطبی تعلیم نے جمعرات کوایک بیان میں بتائی۔بیان میں کہاگیا ہے کہ ایران میں اس وبا سے متاثرہ

کیسزکی کل تعداد3ہزار513 ہے جن میں سے739 افراد صحت یاب ہوگئے ہیں۔کل تعداد میں

سے1ہزار352 کیسز دارالحکومت تہران کے ہیں۔وسطی شہر قم میں386 ،شمالی شہر رشت میں333

اور اصفہان میں180 کیس رپورٹ ہوئے۔

Leave a Reply

%d bloggers like this: