81

کرونا وائرس، سٹاک مارکیٹ میں مندی کا رجحان ، ڈالر کی اونچی پرواز

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیر کو مندی کا رجحان غالب رہا جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 86.18 پوائنٹس کی کمی سے 28023.39پوائنٹس کی سطح پرآ گیا،جبکہ مندی کے باعث سرمایہ کاروں کو43 ارب47کروڑ42لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا، کاروباری حجم بھی گزشتہ ٹریڈ نگ سیشن کی نسبت5.88فیصد کم رہا ۔ گزشتہ روز ٹریڈنگ کے آغاز سے ہی سرمایہ کاروں کی جانب سے محتاط طرز عمل اپنایا گیا اور کرونا وائرس کے باعث ملکی اور بین الاقوامی سطح پر معاشی نقصانات کے پیش نظر سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص فروخت بڑھنے کے باعث ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس28ہزار کی نفسیاتی حد سے گرتے ہوئے 27461.59پوائنٹس کی نچلی سطح پر آگیا تا ہم بعد ازاں منافع بخش کمپنیوں کے سستے ہونیوالے شیئرز کی خریداری کی وجہ سے ریکوری آئی اور28ہزار کی نفسیاتی حد بحال ہوگئی لیکن مندی کے اثرات غالب رہے ۔

اسی طرح کے ایس ای30انڈیکس بھی 35.16پوائنٹس کی کمی سے12285.08پوائنٹس اورکے ایس ای آل شیئرز انڈیکس162.69پوائنٹس کے اضافے سے 20322.54پوائنٹس پر بند ہوا ۔گزشتہ روز مجموعی طور پر328کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے 166کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 145 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی اور 17کمپنیوں کے حصص کی قیمتیں مستحکم رہیں ۔مندی کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت43 ارب47کروڑ42لاکھ روپے کی کمی سے گھٹ کر کر54کھرب 30ارب 73کروڑ47لاکھ روپے ہوگئی۔

دوسری طرف پاکستان میں ڈالر کی اونچی اڑان کا سلسلہ جاری ہے اور کاروباری ہفتے کے پہلے روز ہی انٹر بینک میں ڈالر 60 پیسے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ایک روپے مہنگا ہوگیا۔انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں 60 پیسے کا اضافہ ہوا اور امریکی ڈالر 166.14روپے پر بند ہوا۔ اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر کی قیمت میں ایک روپے کا اضافہ ہوا اور مارکیٹ میں ایک امریکی ڈالر 166 روپے کا ہوگیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں