new corona virus

کرونا مریضوں میں اضافہ تعداد1468، پنجاب میں82نئے کیس رجسٹر

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور(جنرل رپورٹر )پنجاب میں ایک ہی دن میں کرونا کے 82 نئے مریض سامنے آ گئے جس سے

پاکستان میں تعداد 1468 پو گئی پاکستان میں کورونا وائرس سے سب سے متاثرہ صوبے پنجاب میں

کووڈ-19 کے نئے مریض سامنے آنے کے بعد پاکستان کے کسی ایک صوبے میں مریضوں کی تعداد

پہلی مرتبہ 500 سے بڑھ گئی ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے سنیچر کو وزیراعلیٰ آفس

میں خصوصی اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پنجاب میں کورونا وائرس کے

مصدقہ مریض 530 ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ روزسے صوبے میں کورونا وائرس کے 82 مریضوں

کا اضافہ ہوا ہے۔پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں بھی مریضوں کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے

اور سنیچر کو مزید چار مریضوں کی تصدیق کے بعد یہاں کل تعداد 119 ہو چکی ہے۔اس کے علاوہ

ڈیرہ غازی خان میں 207، ملتان میں 75، گجرات میں 51، جہلم میں 19، راولپنڈی میں 15،

گوجرانوالہ میں 10، فیصل آباد میں نو، منڈی بہاؤالدین میں چار، سرگودھا، ننکانہ صاحب اور میانوالی

میں دو، دو جبکہ ناروال، رحیم یار خان، اٹک، بہاولنگر اور خوشاب میں ایک مریض موجود ہے۔خیال

رہے کہ پنجاب کورونا سے ہلاکتوں کے معاملے میں بھی سرفہرست ہے اور ملک میں ہونے والی 11

میں سے پانچ ہلاکتیں یہیں ہوئی ہیں۔خیبر پختونخوا میں کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد

180 ہوگئی۔ کورونا کا مریض سامنے آنے کے بعد لوئر دیر کا علاقہ تالاش زیارت سیل کر دیا گیا،

پورے گاؤں کو قرنطینہ قرار دے دیا گیا جبکہ ہر گلی کے باہر پولیس اہلکار تعینات کر دیئے گئے۔

دوسری جانب خیبرپختونخوا میں 231 سکولوں کو قرنطینہ سنٹرز میں تبدیل کر دیا گیا۔ محکمہ صحت

ضرورت کے وقت سکولوں کو استعمال کرسکے گا۔ صوبائی محکمہ تعلیم کے مطابق خیبر پختونخوا

کے 35 اضلاع میں مختلف لڑکوں اور لڑکیوں کے 231 سکولوں کو قرنطینہ مراکز میں تبدیل کر دیا

گیا ہے۔محکمہ تعلیم کی رپورٹ کے مطابق 133 لڑکوں اور 98 لڑکیوں کے سکول قرنطینہ میں تبدیل

کیے گئے، سب سے زیادہ چارسدہ میں 28 لڑکوں کے سکول قرنطینہ میں تبدیل کیے گئے ہیں۔

صوابی میں 25 گرلز، دیر لوئر میں 31 اور مہمند میں 15 گرلز سکول قرنطینہ کے لئے استعمال کیے

جائیں گے۔ رپورٹ کے مطابق محکمہ صحت سکولوں کو بوقت ضرورت استعمال کرسکے گا۔خیبر

پختونخوا کے وزیراعلیٰ محمود خان نے امدادی پیکیج کا اعلان کر دیا ہے جس کے مطابق مزدور اور

غریب طبقے کو تین ماہ کے لیے ماہانہ 5 ہزار روپے امداد دی جائیگی، پیکیج پر 11 ارب 40

کروڑ روپے لاگت آئے گی، احساس پروگرام کے تحت رقم دی جائیگی۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد

میں کورونا کے مزید 12 کیسز سامنے آنے سے مجموعی کیسز کی تعداد 39 ہوگئی ہے۔ شہزاد ٹاؤن

اور رمشا کالونی کو سیل کر دیا گیا۔ سرائے عالمگیر میں ایک ہی خاندان کے 6 افراد میں کورونا کی

تصدیق ہوگئی، جس کے بعد پورے گاؤں کو سیل کر دیا گیا۔بلوچستان کے محکمہ صحت کے مطابق

صوبے میں مزید 12 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد مصدقہ کیسز کی تعداد 133 ہوگئی ہے۔گلگت

بلتستان میں بھی 10 نئے کیسز مثبت آئے ہیں۔ جس سے متاثرہ مریضوں کی مجموعی تعداد 107 ہو

گئی ہے۔ مشیر اطلاعات نے بتایا کہ نئے تمام 7 مریضوں کا تعلق ضلع سکردو سے ہے۔میرپور آزاد

کشمیر ایک اور مریض میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد آزاد کشمیرمیں کورونا

مریضوں کی تعداد 2 ہوگئی ہے

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply