چینی محققین کا کرونا وائرس کوغیر فعال کرنیوالا آلہ تیار کرنے کا دعویٰ

چینی محققین کا کرونا وائرس کوغیر فعال کرنیوالا آلہ تیار کرنے کا دعویٰ

Spread the love

بینجگ،گوآنگ ژو(جے ٹی این آن لائن کرونا سپیشل) کرونا غیر فعال آلہ

چینی محققین نے ایسا آلہ تیار کیا ہے جو الیکٹرون بیم تابکاری سے کرونا وائرس

کو غیر فعال کرسکتا ہے۔ چین کے جنوبی شہر شین ژین میں ہونیوالی ایک پریس

کانفرنس کے مطابق مذکورہ ٹیکنالوجی کے ماہرین کے پینل نے اپنے جائزے میں

منظوری دی ہے جسے کولڈ چین فوڈ پیکیجنگ کو جراثیم سے پاک کرنے کیلئے

استعمال میں لایا جائیگا۔

=–= یہ بھی پڑھیں: فرانس میں ناقابل تشخیص کرونا وائرس کی نئی قسم دریافت

چائنہ جنرل نیوکلیئر پاور کارپوریشن، چھنگہوا یونیورسٹی، چین کی اکیڈمی آف

سائنسز، شین ژین نیشنل کلینیکل ریسرچ سنٹر برائے متعدی امراض اور شین ژین

تھرڈ پیپلز ہسپتال اس منصوبے میں شامل ہیں۔

=-= چین کوویڈ-19 ماخذ پرڈبلیو ایچ او کیساتھ مشترکہ تحقیق کرنیوالا پہلا ملک
———————————————————————————————

ایک سینئر چینی ماہر نے کہا ہے چین کوویڈ-19 کے ماخذ کے حوالے سے عالمی

ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کیساتھ مشترکہ تحقیق کرنیوالا پہلا ملک ہے۔ کوویڈ-19

کے ماخذ کا پتہ چلانے والی ڈبلیو ایچ او اور چین کی ٹیم میں چینی ٹیم لیڈر لیانگ

ویننیان نے کہا متعدی امراض کی تاریخ سے پتہ چلتا ہے عموما کسی نئی متعدی

بیماری کے ماخذ کی شناخت میں طویل عرصہ لگتا ہے، اس حوالے سے تحقیقی

نتائج کو دنیا بھر میں قبول کیا جاتا ہے۔ مشترکہ تحقیق میں شریک چینی ماہرین کی

پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے لیانگ نے کہا کہ جس جگہ پر وائرس پہلے

رپورٹ ہوا ہو یہ ضروری نہیں کہ وہ مقام اس وائرس کا اصل ماخذ ہو۔

=–= ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ پر 14 ممالک کا مشترکہ بیان مسترد
——————————————————————————–

چین نے امریکہ اور 13 دیگر ممالک کے مشترکہ بیان کو مسترد کردیا ہے جس

میں کوویڈ-19 کے ماخذ سے متعلق عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او) کی رپورٹ

پر خدشات کا اظہار کیا گیا تھا، وزارت خارجہ کے ترجمان کے مطابق یہ کچھ

ممالک کی جانب سے ماخذ کا پتہ چلانے کے معاملے میں سائنس کے عدم احترام

اور سیاسی جوڑ توڑ کا ثبوت ہے۔

=قارئین=ہماری کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

ترجمان وزارت خارجہ ہوا چھون اینگ نے ان خیالات کا اظہار نیوز بریفنگ میں

اس سے متعلقہ سوال کے جواب میں کیا۔ انکا کہنا تھا چین نے بار بار اس بات پر

زور دیا ہے کہ وائرس کے ماخذ کا پتہ چلانا ایک سائنسی معاملہ ہے جسے پوری

دنیا کے سائنسدانوں کی جانب سے مشترکہ طور پر انجام دینا چاہئے اور یہ کہ اس

پر سیاست نہیں ہونی چاہئے۔ ماخذ کی نشاندہی کے معاملے پر سیاست کرنا غیر

اخلاقی و غیر مقبول عمل ہے جس سے صرف کوویڈ-19 کے ماخذ کے مطالعہ

کیلئے بین الاقوامی تعاون میں رکاوٹ پیدا ہو گی، انسداد وباء کے تعاون کو نقصان

اور مزید جانوں کا ضیاع ہو گا جو عالمی برادری کی خواہشات کے منافی ہے۔

کرونا غیر فعال آلہ

Leave a Reply