christcharch1

کرائسٹ چرچ مساجد حملہ کیس کا فیصلہ جمعرات کو متوقع، نیوزی لینڈ میں سکیورٹی الرٹ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کرائسٹ چرچ (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) کرائسٹ چرچ حملہ کیس

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مساجد پر حملہ کر نیوالے ملزم برنٹن

ٹیرنٹ کیخلاف مقدمے کی حتمی سماعت آج پیر کو کرائسٹ چرچ کی عدالت میں

شروع ہوگی، کیس کی سماعت جج کیمرون مینڈر کرینگے، جمعرات کو مقدمے

اختتام پر ملزم برنٹن ٹیرنٹ کو سزا سنائی جائیگی- ملزم کو سخت سکیورٹی میں

ہیلی کاپٹر کے ذریعے کرائسٹ چرچ پہنچا دیا گیا ہے-

یہ بھی پڑھیں : سانحہ کرائسٹ چرچ، دہشتگرد مقدمہ شہر سے باہرمنتقلی اپیل سے دستبردار
———————————————————————

سماعت سے ایک روز قبل ہی مسجد النور اور لنوڈ مسجد سمیت کرائسٹ چرچ

اور نیوزی لینڈ کے تمام بڑے شہروں اور اہم مقامات پر سکیورٹی ہائی الرٹ کر

کے پولیس کے دستے تعینات کر دیئے گئے ہیں، نیوزی لینڈ پولیس نے جمعہ

سے ہی مسجد النور اور لنوڈ مسجد کو اپنے گھیرے میں لے رکھا ہے۔

سماعت کے دوران شہداء کے لواحقین اور زخمی ہونیوالے افراد موجود ہونگے

تفصیلات کے مطابق گزشتہ سال پندرہ مارچ کو جمعہ کے اجتماع پر فائرنگ کر

کے مسجد النور اور لنوڈ مسجد میں 51 مسلمانوں کو شہید اور چالیس کو شدید

زخمی کرنے والے ملزم برنٹن ٹیرنٹ کیخلاف مقدمے کی حتمی سماعت آج پیر

کو کرائسٹ چرچ کی عدالت میں روزانہ کی بنیاد پر ہوگی اور جمعرات کو ملزم

کو سزا سنائی جائیگی۔ مقدمے کی سماعت کرائسٹ چر چ ہائی کورٹ کے جج

جسٹس کیمرون مینڈر کرینگے-

سماعت کے دوران شہداء کے لواحقین اورزخمی ہونیوالے افراد بھی موجود

ہونگے جبکہ سماعت میں شامل ہونیوالے افرادصبح سات بجے عدالت پہنچیں

گے-

جج واقعہ سے متعلق پولیس کی انوسٹی گیشن رپورٹ پڑھ کر سنائیں گے

عدالتی کارروائی دس بجے شروع ہوگی اور سماعت کے آغاز پر جج واقعہ

سے متعلق پولیس کی انوسٹی گیشن رپورٹ پڑھ کر سنائیں گے۔ شہداء کے

لواحقین پہلے روز عدالت میں واقعہ کے بعد کے تاثرات بیان کرینگے جبکہ

زخمی ہونیوالے افراد واقعہ کے حوالے سے آنکھوں دیکھے حالات بیان

کرینگے- کرائسٹ چرچ مسلم کمیونٹی کے افراد بھی واقعہ کے حوالے سے

عدالت کو اپنے اپنے خیالات سے آگاہ کرینگے-

ملزم برنٹن ٹیرنٹ کو بھی اپنے دفاع موقع دیا جائیگا

مقدمے کے ملزم برنٹن ٹیرنٹ کو بھی موقع دیا جائیگا کہ وہ اپنے متعلق جو بتانا

چاہتا ہے عدالت کو آگاہ کرے اور اس حوالے سے بیرنٹن ٹیرنٹ نے چند ماہ

پہلے اپنی لیگل ٹیم کو معطل کرتے ہوئے آخری سماعت پر خود پیش ہونے کا

فیصلہ کیا تھا- توقع ہے سماعت جمعرات تک مکمل ہو جائیگی اور عدالت اسی

روز ملزم کو سزا سنائےگی۔

دہشتگردی ایکٹ کے تحت نیوزی لینڈ میں پہلی بار کسی ملزم کو سزا دی جائیگی

یاد رہے نیوزی لینڈ میں یہ پہلا موقع ہے کہ دہشتگردی ایکٹ 2002ء کے تحت

کسی بھی ملزم کو پہلی بار عدالت کی طرف سے سزا سنائی جائیگی۔ قانونی

ماہرین کے مطابق برنٹن ٹیرنٹ عدالت کے سامنے اپنی سزا سے متعلق پیرول

بورڈ کے سامنے پیش ہونے کی درخواست کر سکتے ہیں کہ سزا کے دو سال

مکمل ہونے کے بعد انہیں پیرول پر رہا کرنے کیلئے پیرول بورڈ کے سامنے پیش

ہونے کا موقع دیا جائے۔

دو سال سے زائد سزاء پانیوالے کو پیرول پر رہائی، گھرمیں سزاء پوری کرنا قانونی حق

نیوزی لینڈ کے قانون کے مطابق دو سال سے زائد عرصہ تک سزا پانے والے

مجرموں کو ڈیڑھ سال بعد پیرول بورڈ کے سامنے پیش ہونے کیلئے عدالت کی

طرف سے قانونی حق دیا جاتا ہے تاکہ وہ پیرول پر رہا ہو کر بقیہ سزا اپنے

گھروں میں پوری کر سکیں۔

سفید فام دہشتگرد کے سپورٹرز، مسلم کمیونٹی کے ممکنہ ردعمل پر ہائی الرٹ

مقدمے کے پیش نظر گزشتہ جمعہ سے ہی کرائسٹ چرچ سمیت ملک بھر میں

سکیورٹی ہائی الرٹ ہے، مسجد النور اور لنوڈ مسجد کے علاوہ دیگر مقامات پر

پولیس کے مسلح دستے تعینات ہیں۔ سفید فام دہشتگرد کے سپورٹرز کی طرف

سے سزا کیخلاف بھی ممکنہ رد عمل کیلئے پولیس کے جوان مساجد کے

راستوں پر آنے اور جانیوالے افراد پر کڑی نظر رکھے ہوئے ہیں جبکہ مسلم

ایسوسی ایشن آف کنٹر بری نے بھی مسلم کمیونٹی کو سزا کیخلاف ممکنہ رد

عمل پر محتاط رہنے کی اپیل کی ہے۔

عدالت نہ پہنچ سکنے والوں کیلئے ویڈیو لنک شمولیت کا بھی اہتمام

دوسری جانب وکٹم سپورٹ نے گزشتہ ماہ شہید اور زخمی ہونیوالے افراد کی

فیملی سے کہا تھا کہ اگر ان کے کوئی قریبی عزیز جو بیرون ممالک میں موجود

ہیں نیوزی لینڈ آنا چاہتے ہیں تو ہم سے رابطہ کریں تاکہ ضروری اقدامات کئے

جا سکیں جس پر کچھ لوگ نیوزی لینڈ پہنچ چکے ہیں اور کچھ لوگ کورونا

وائرس کی وجہ سے نیوزی لینڈ نہیں آسکے جس پر کرائسٹ چرچ عدالت کے

جج کی اجازت سے کمرہ عدالت میں نہ آنیوالے لوگوں کو ویڈیو لنک کے ذریعے

شامل کیا جائیگا۔

وکٹم سپورٹ کی جانب سے فیملیز، بچوں کیلئے کھانے پینے کے خصوصی انتظامات

نیوزی لینڈ کی پولیس کی جانب سے ایسے لوگ جو ملک اور بیرون ملک مقیم ہیں

اور ویڈیو لنک کے ذریعے عدالتی کارروائی میں شامل ہونا چاہتے ہیں انکو ویڈیو

لنک بھیج دیا گیا ہے اور وہ اس ویڈیو لنک کے ذریعے عدالتی کارروائی میں شامل

ہوسکتے ہیں۔ اس موقع پر وکٹم سپورٹ کی جانب سے فیملیز کے بچوں اور

کھانے پینے کیلئے خصوصی انتظامات کئے جائینگے تاکہ متاثرین کو دوران

سماعت کسی قسم کی کوئی مشکلات درپیش نہ ہوں۔

متاثرین کی فیملیز کو خصوصی شٹل بس کے ذریعے عدالت لے جایا جائیگا

بیرون ممالک سے آنیوالے تمام افراد کے اخراجات نیوزی لینڈ کی حکومت ادا

کریگی۔ مسلم ایسوسی ایشن آف کنٹر بری نے کرائسٹ چرچ سٹی میں پارکنگ

کے پیش نظر ٹرانسپورٹ کے خصوصی انتظامات کئے ہیں، مسجد النور اور لنوڈ

مسجد سے متاثرین کی فیملیز کو خصوصی شٹل بس کے ذریعے عدالت تک لے

جایا جائیگا۔

کرونا وائرس کے باعث احتیاطی تدابیر پر سختی سے عملدر آمد کی ہدایت

واضح رہے کہ نیوزی لینڈ میں کرونا وائرس کی وجہ سے ان دنوں آکلینڈ میں

لاک ڈاﺅن اور باقی شہروں میں لیول ٹو ہے۔ حکومت کی جانب سے عدالتی

کارروائی میں شامل ہونیوالے افراد سے کہا گیا ہے کہ وہ کرونا وائرس کے

باعث احتیاطی تدابیر پر سختی سے عملدر آمد کو یقینی بنائیں۔

آزاد جیوری کیس کے اختتام پر اپنی آزادانہ رپورٹ جاری کرے گی

نیوزی لینڈ کے قانون کے مطابق کیس کو مانیٹر کرنے کیلئے آزاد جیوری بھی

سماعت کے دور ان کمرہ عدالت میں موجود ہوگی جو اس کیس کو مانیٹر کر ے

گی اور کیس کے اختتام پر اپنی آزادانہ رپورٹ جاری کریگی تاکہ کسی بھی

فریق سے کسی قسم کی کوئی زیادتی یا ناانصافی نہ ہو ۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

کرائسٹ چرچ حملہ کیس

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply