امریکی کالم نگار مائیکل ہلزک اپنے مین اسٹریم میڈیا پر برس پڑے

امریکی کالم نگار مائیکل ہلزک اپنے مین اسٹریم میڈیا پر برس پڑے

Spread the love

واشنگٹن ( جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) کالم نگار مائیکل ہلزک

معروف امریکی کالم نگار اور پلٹزر انعام یافتہ مائیکل ہلزک اپنے ملک کے مین

اسٹریم میڈیا پر برس پڑے- انہوں نے اپنے حالیہ ایک مضمون میں کہا ہے کہ

اگرچہ تحقیقی نتائج نے نوول کورونا وائرس کو فطری ثابت کیا ہے مگر پھر بھی

امریکی میڈیا ادارے دانستہ عوام کو ” لیبارٹری لیک تھیوری ” پر یقین کرنے کی

ترغیب دے رہے ہیں، معروف امریکی کالم نگار اور پلٹزر انعام یافتہ مائیکل

ہلزک نے ” لاس اینجلس ٹائمز” کے ایک مضمون میں مین اسٹریم امریکی میڈیا

سی این این، دی اٹلانٹک اور دیگر پر تنقید کرتے ہوئے لکھا ہے کہ چینی

لیبارٹری سے وائرس کے اخراج کا دعویٰ محض جعلی سائنس اور ٹرمپ

انتظامیہ کے چین مخالف پروپیگنڈا جنگ کا حصہ تھا۔

=–= کرونا وائرس سے متعلق خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

امریکی کالم نگار مائیکل ہلزک نے اس ضمن میں اپنے مضمون میں نوول

کورونا وائرس کی اصلیت کے بارے میں وائرالوجسٹس کی تازہ ترین سائنسی

تحقیق کا حوالہ بھی دیا ہے۔ مضمون مین امریکی کالم نگار نے لکھا کہ ماہرین

کے خیال میں شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ وائرس قدرتی ذرائع سے جنگلی

جانوروں جیسے چمگادڑ کے ذریعے انسانوں میں منتقل ہوتا ہے، لیکن کچھ

امریکی میڈیا اب بھی جان بوجھ کر عوام کو الجھا رہا ہے۔ ہلزک کے مطابق

سائنسدانوں کے مزید شواہد بتاتے ہیں کہ نوول کورونا وائرس جو کہ غیر فطری

خصوصیات کا حامل ہے لیکن پھر بھی فطرت میں موجود ہے، یہ اس بات کا

ثبوت کہ وائرس مصنوعی طور پر تیار نہیں کیا گیا ہے۔

کالم نگار مائیکل ہلزک

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply