147

بڑے کاروباری مراکزمیں الیکٹرونک ڈیوائس سسٹم یکم دسمبر سے لازمی قرار

کراچی( جے ٹی این آن لائن اکنامک رپورٹر) کاروباری مراکز،الیکٹرونک ڈیوائس

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے تمام میگا چین سٹورز، شاپنگ مالز،

ریسٹورنٹس، کیفے، کافی شاپس، ہوٹلوں، طعام گاہوں اور اسنیک بارز کیلئے

یکم دسمبر 2019 سے الیکٹرونک ڈیوائس سسٹم نصب کرنا لازمی قرار دیدیا،

یہ بھی پڑھیں: 50 ہزار سے زائد خریداری، شناختی کارڈ دکھانا لازمی قرار

ایف بی آر کا یہ کمپیوٹرائزڈ سوفٹ ویئر کیش مشینوں سے منسلک ہوگا اور

صارفین ایف بی آر کو اپنے ادا کردہ ٹیکس کی جانچ پڑتال کر سکیں گے۔

مقام فروخت (پوائنٹ آف سیل) نئے سافٹ ویئر الیکٹرونک ڈیوائس

سسٹم (ای ڈی ایس) سے منسلک ہوں گے۔

مزید پڑھیں: موبائل فون کی ریگولرائزیشن کا نیا خودکار طریقہ متعارف

ممبر پالیسی اور ترجمان ایف بی آر ڈاکٹر حامد عتیق سرور کے مطابق سیلز

ٹیکس قواعد 2006 میں ترمیم کے ذریعہ مذکورہ کاروباری مراکز کو 30 جون

2020 تک ٹیکس نیٹ میں لایا جائے گا، اس کے بعد ہسپتالوں اور لیبارٹریز کو

اس نظام کے تحت لایا جائے گا۔

تیار ملبوسات، مقامی طور پر تیار ٹیکسٹائل مصنوعات، چمڑے اور مصنوعی

اشیا مشروط طور پر کم دام پر فروخت کی جا سکیں گی۔ ان اشیا کی خوردہ

فراہمی معیاری ریٹ سے مشروط ہوگی۔ مجموعی اشیا کی فراہمی کے سپلائر

سسٹم میں ردوبدل کا مرتکب پایا گیا تو وہ دام میں کمی کا حقدار نہیں ہوگا۔

سیلز ٹیکس رولز 2006 میں ترمیم کا نوٹیفکیشن

ایف بی آر نے میگا مال میں موجود تمام میگا سٹورز، کافی شاپس پر الیکٹرونک

ڈیوائس، سوفٹ ویئر نصب کرنے کی ہدایت کی ہے اور الیکٹرونک انوائس سسٹم

متعارف کرانے کا کہا ہے۔ تمام شاخیں، مقام فروخت ایف بی آر کے کمپیوٹرائزڈ

نظام سے منسلک ہونگے۔ ایف بی آر کی جانب سے سیلز ٹیکس رولز 2006 میں

ترمیم کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔

کاروباری مراکز،الیکٹرونک ڈیوائس

اپنا تبصرہ بھیجیں