وزیراعظم عمران خان کا عید کا دن بطور یوم فلسطین منانے کا اعلان

کاروبارمیں آسانیاں،کرپشن کا تدارک حکومت کے اصلاحاتی ایجنڈا کا اہم جز،وزیر ,اعظم

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ) وزیر اعظم عمران خان نے پی آر ایم آئی کے حوالے

سے اسٹیرنگ کمیٹی کے قیام کی منظوری د یتے ہوئے کہا ہے پی آر ایم آئی

موجودہ حکومت کے اصلاحاتی ایجنڈے کا اہم جزو ہے، ریگولیشن کے عمل میں

بہتری لانے اور اسے جدید طرز پر استوار کرنے کا مقصد کاروباری طبقے کو

سہولت فراہم کرنا ہے، مختلف محکموں سے اجازت ناموں کی شرط اور آٹومیشن

نہ ہو نے کے باعث چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعت بہت متاثر ہوئی

ہے،متعدد اجازت ناموں کی شرط اور مختلف ریگولیٹری مراحل کی وجہ سے

جہاں ایک طرف کرپشن کی راہیں ہموار ہوتی ہیں، وہاں غیر ملکی سرمایہ کاری

بھی متاثر ہوتی ہے۔ پیر کو وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدار ت پاکستان

ریگولیٹری ماڈرنائزیشن انیشی ایٹیوسے متعلق اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں وزیر اعظم

کے مشیر شہزاد ارباب، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ

، معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، معاون خصوصی یوسف بیگ

مرزا، چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی، و دیگر شریک تھے ۔اجلاس میں مشیر

اسٹیبلشمنٹ شہزاد ارباب کی جانب سے پی آر ایم آئی کے حوالے سے تفصیلی

بریفنگ دی گئی جس میں بتا یا گیا اس اقدام کا مقصد کاروبار کے سلسلے میں

ضروری مراحل جیسے رجسٹریشن، پرمٹ ، اجازت نامے وغیرہ کو آسان بنانا ہے

تاکہ جہاں مختلف اور غیر ضروری عوامل اور اجازت ناموں کو ختم کیا جا سکے

وہاں کاروبار کی رجسٹریشن کو سہل بنا دیا جائے تاکہ کاروباری برادری بغیر

کسی و قت کاروباری سرگرمیاں سر انجام دے سکے ۔ پاکستان ریگولیٹری

ماڈرنائزیشن انیشی ایٹیو (پی آر ایم آئی) ملکی تاریخ میں پہلی دفعہ صوبوں کی

مشاورت و معاونت سے قومی سطح پر اٹھایا جانیوالا اقدام ہے جس کا مقصد

ریگولیٹری فریم ورک اور رجسٹریشن کے عمل کو سہل بنانا ہے تاکہ کارو با ری

طبقے کیلئے آسانیاں پیدا کی جا سکیںپی ایم آر آئی انیشی ایٹیو کے تحت میپنگ،

ریشنلائزیشن، ماڈرنائزیشن اور آٹومیشن کا عمل کیا جا ئیگا ۔ پی آر ایم آئی کا مقصد

کاروبار کیلئے ضروری عوامل کو سہل بنا کر کرپشن کا خاتمہ کرنا، کاروباری

طبقے خصوصا چھوٹی اور در میانی صنعتو ں اور کاروبار کو آسانیاں فراہم کرنا

اور آٹو میشن کا فروغ ہے، وزیر اعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے

ہوئے کہا مختلف محکموں سے اجازت ناموں کی شرط اور آٹومیشن نہ ہونے کے

باعث چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعت بہت متاثر ہوئی ہے۔ متعدد اجازت

ناموں کی شرط اور مختلف ریگولیٹری مراحل کی وجہ سے جہاں ایک طرف

کرپشن کی راہیں ہموار ہوتی ہیں وہاں غیر ملکی سرمایہ کا ر ی بھی متاثر ہوتی

ہے ،پی آر ایم آئی کے حوالے سے وزیر اعظم نے ایک اسٹیرنگ کمیٹی کے قیام

کی منظوری دی جس کی سربراہی مشیر اسٹیبلشمنٹ شہزاد ارباب اور مشیر تجا ر

ت عبدالرزاق داؤد کریں گے، سیکرٹری کامرس، چیئرمین ایف بی آر، چیئرمین

ایس ای سی پی ، چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ، صدر ایف پی سی سی آئی، لاہور

کراچی و فیصل آباد چیمبر آف کامرس کے صدور اور پاکستان بزنس کونسل کے

نمائندے کمیٹی میں شامل ہوں گے۔ اس موقع پر وز یر اعظم عمران خان نے کہا

پی آر ایم آئی موجودہ حکومت کے اصلاحاتی ایجنڈے کا اہم جزو ہے، ریگو لیشن

کے عمل میں بہتری لانے اور اسے جدید طرز پر استوار کرنیکا مقصد کاروباری

طبقے کو سہولت فراہم کرنا ہے۔بعدازاں وزیر اعظم عمران خان سے پاکستان

تحریک انصاف امریکہ کے سینئر رہنما سجاد برکی اور عاطف خان نے وزیر

اعظم چیمبر پارلیمنٹ ہاؤس میں ملاقات کی جس میں وزیر اعظم کے آئندہ دورہ

امریکہ سے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ دوسری طرف وزیر اعظم عمران خان سے

ممبران قومی اسمبلی بشیر خان، محبوب شاہ، شیر اکبر اور صبغت اللہ نے بھی پار

لیمنٹ ہاؤس میں ملاقات کی، اس موقع پر وزیر اعظم کے معاون خصوصی نعیم

الحق بھی ملاقات میں مو جو د تھے ۔

Leave a Reply