کابل سید الشہداؑ سکول

کابل میں سید الشہداؑ سکول پر دہشتگرد حملہ، 25 طالبات سمیت 40 شہید

Spread the love

کابل سید الشہداؑ سکول

کانل (جے ٹی این آن لائن نیوز) افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ہفتے کو ایک سکول میں ایک

سے زیادہ بم دھماکوں میں کم از کم 40 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، جن میں زیادہ تعداد

طالبات کی ہے۔وزارت داخلہ کے ایک سینیئر عہدے دار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ یہ

دھماکے اس وقت ہوئے جب طالبات سید الشہدا سکول سے چھٹی کے بعد اپنے گھروں کو روانہ ہو

رہی تھیں۔ میڈیا ذرائع کے مطابق سکول کے باہر افراتفری کے مناظر دیکھے جا سکتے ہیں، جہاں

جس میں سڑک پر خون آلود کتابیں اور سکول بیگز بکھرے پڑے ہیں اور لوگ متاثرین کی مدد کے

لیے دوڑ رہے ہیں۔وزارت داخلہ کے ترجمان طارق آریان نے شہادتوں کی تعداد کم از کم 25 بتائی

لیکن انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ ان دھماکوں کا ہدف کیا تھا۔وزارت صحت کے ترجمان غلام دستگیر

نظری نے بتایا کہ اب تک 46 افراد کو ہسپتالوں میں لے جایا گیا ہے۔صدر بائیڈن کی جانب سے 11

ستمبر تک تمام امریکی فوجیوں کے انخلا کے منصوبے کے اعلان کے بعد سے کابل میں ریڈ الرٹ

جاری کر دیا گیا تھا۔کسی گروپ نے ہفتے کو ہونے والے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔ طالبان

کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ملوث ہونے کی تردید کرتے ہوئے واقعے کی مذمت کی۔یہ دھماکے

مغربی کابل میں ہوئے جہاں اکثریت شیعہ برادری پر مشتمل ہے اور یہاں داعش تنظیم ماضی میں کئی

بڑے اور تباہ کن حملے کر چکی ہے۔وزارت تعلیم کی ترجمان نجیبہ آریان نے روئٹرز کو بتایا کہ یہ

سکول لڑکیوں اور لڑکوں کے لیے ایک مشترکہ ہائی سکول ہے جہاں تین شفٹوں میں تعلیم دی جاتی

ہے جب کہ دوسری شفٹ میں صرف طالبات تعلیم حاصل کرتی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ زخمیوں میں

زیادہ تعداد خواتین اور طالبات کی ہے۔

کابل سید الشہداؑ سکول

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply