کابل،طالبان نے2 امریکی اہلکاروں کو قتل کر دیا،حملوں میں26 افغان اہلکار مارے گئے

Spread the love

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان میں دو امریکی فوجیوں کو قتل

کردیا گیا ہے جس کی سرکاری طور پر تصدیق کی گئی ہے،سرکاری ذرائع نے

بتایا ہے کہ وہ اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ افغانستان میں دو امریکی

’’سروس مین ‘‘کو قتل کردیا گیا ہے،جبکہ طالبان نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے

حملہ کر کے دو امریکی فوجویں کو ہلاک کیاہے۔ نیٹو امدادی مشن کی ترجمان نے

کہا کہ وہ اس حادثے کے بارے میں زیادہ تفصیلات فراہم نہیں کرسکتیں،تاہم طالبان

نے اپنے ایک بیان میںکہا ہے کہ ان کے انتہاپسندوں نے وردک صوبے کے ضلع

سید آباد میں امریکی فوج پر حملہ کیا،جس کے نتیجے میں دو امریکی فوجی ہلاک

ہوگئے،یہ حادثہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیوکے غیر اعلانیہ دورہ کابل کے

چند گھنٹے بعدپیش آیا ہے۔دریں اثناافغانستان کے 4صوبوں میں مختلف واقعات میں

افغان طالبان نے حملہ کر کے 26 افغان سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو قتل کر

دیا جبکہ ان حملوں میں 9اہلکار زخمی بھی ہوئے، دوسری جانب خوگیانی ڈسٹرکٹ

میں ضلعی پولیس چیف روڈ سائیڈ پر نصب بم سے ٹکرا کر جاں بحق ہو گئے،

افغان اسپیشیل فورسز کی جانب سے مختلف کارروائیوں میں 18طالبان ہلاک جب

کہ 6زخمی ہوئے،کاروائی کے دوران 1200کے قریب اسلحہ،1200رائونڈز، ریڈیو

ڈیوائس،8خود کش جیکٹس بھی قبضے میں لے لی گئیں ۔بین الاقوامی خبر رساں

ادارے کی جانب سے جاری تفصیلات کے مطابق طالبان نے گل ران ضلع میں

پولیس چیک پوسٹ کو نشانہ بناتے ہوئے 15اہلکاروں کو قتل کر دیا، ہلمند صوبہ

کے شہر سراج ضلع میں روڈ سائیڈ پر نصب بم سے ڈسٹرکٹ پولیس چیف کی

گاڑی ٹکرانے سے پولیس چیف اور ان کے دو باڈی گارڈ موقع پر ہی دم توڑ گئے۔

افغان ملٹری کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ افغان صوبہ

ارزگان میں سپیشل فورسز نے ایک کامیاب کاروائی کرتے ہوئے 7طالبان کو موت

کے گھاٹ اتار دیا جبکہ غزاب ضلع میں سیکیورٹی فورسز سیمڈ بھیڑ میں

11طالبان ہلاک ہوئے۔

Leave a Reply