ڈسکہ NA-75 کا سلطان کون، ن لیگ یا پی ٹی آئی؟ فیصلے کیلئے میدان سج گیا

ڈسکہ NA-75 کا سلطان کون، ن لیگ یا پی ٹی آئی؟ فیصلے کیلئے میدان سج گیا

Spread the love

ڈسکہ (جے ٹی این آن لائن نیوز) ڈسکہ NA-75 سلطان

حلقہ این اے 75 ڈسکہ میں ضمنی انتخاب کیلئے دوبارہ پولنگ آج بروز ہفتہ کو ہو

رہی ہے، سیاسی حلقوں میں مذکورہ ضمنی انتخاب کو انتہائی اہمیت کا حامل قرار

دیا جارہا ہے، جہاں حکمران جماعت تحریک انصاف کے امیدوار علی اسجد ملہی

اور اپوزیشن جماعت مسلم لیگ (ن) کی خاتون امیدوار سیدہ نوشین افتخار کے

درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے۔ اس سے قبل ہونیوالے ضمنی انتخاب میں قواعد

و ضوابط کی بڑے پیمانے پر خلاف ورزی کے بعد حلقے میں دوبارہ پولنگ کا

فیصلہ کیا گیا۔ پاکستان مسلم لیگ (ق ) نے تحریک انصاف کے امیدوار علی اسجد

ملہی جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی نے مسلم لیگ (ن) کی حمایت کا اعلان کررکھا ہے۔

=–=یہ بھی پڑھیں: این اے75 ضمنی انتخاب کالعدم قرار، دوبارہ ووٹنگ کا حکم

حلقہ این اے75 ایک الگ اور تاریخی حیثیت کا حامل ہے، یہاں (ن) لیگ عرصہ

دراز سے ناقابل شکست رہی ہے، 2018ء کے الیکشن میں لیگی امیدوار صاحبزادہ

سید افتخار الحسن شاہ نے اپنا ناقابل شکست ہونا برقرار رکھا لیکن موت سے

شکست کھا گئے، ان کی وفات کے بعد 19 فروری 2021ء کو ضمنی الیکشن ہوئے

جن میں 10 امیدواروں نے حصہ لیا لیکن مقابلہ لیگی امیدوار سیدہ نوشین افتخار،

تحریک انصاف کے علی اسجد ملہی اور تحریک لبیک پاکستان کے محمد خلیل

سندھو کے درمیان ہوا۔ لیکن مقامی انتظامیہ کی غفلت، لاپرواہی و نااہلی کی وجہ

سے بے ضابطگیوں، پولنگ عملہ غائب ہو نے، مختلف علاقوں میں وقفہ وقفہ سے

جاری ہوائی فائرنگ سے پھیلنے والی دہشتگردی کی وجہ سے ٹرن آؤٹ کم ہونے،

بار بار پولنگ کا عمل روکے جانے کی وجہ ریٹرننگ آفیسر نے الیکشن کا رزلٹ

روکتے ہوئے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو حلقہ میں دوبارہ پولنگ کی سفارش کر

دی-

=-.-= پی ٹی آئی ضمنی الیکشن کو التواء میں ڈالنے میں دو بار ناکام ہو چکی
——————————————————————————————-

الیکشن کمیشن نے دونوں فریقین کو سننے، حالات و واقعات کو مدنظر رکھتے

ہوئے 18مارچ کو دوبارہ ری پولنگ کا اعلان کیا لیکن تحریک انصاف ڈسکہ نے

فیصلے کو چیلنج کر دیا جس پر الیکشن کمیشن نے ری پولنگ کی تاریخ بڑھا کر

10 اپریل کردی۔ پی ٹی آئی اس فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ آف پاکستان گئی

لیکن وہاں بھی اسے کامیابی حاصل نہ ہوئی اور عدالت عظمیٰ نے الیکشن کمیشن

کا فیصلہ کو برقرار رکھا اور 10 اپریل کو ری پولنگ کا حکم جاری کر دیا۔

=-.-= انتہائی سخت سکیورٹی میں پولنگ کا عمل جاری

حلقہ این اے 75 ڈسکہ میں ری پولنگ کیلئے 360 پولنگ سٹیشنز بنائے گئے ہیں

جہاں 4 لاکھ 94 ہزار ووٹر اپنا حق رائے دہی استعمال کررہے ہیں۔ الیکشن صاف

شفاف و غیر جانبدارانہ انعقاد یقینی بنانے کیلئے سکیورٹی کو دو گنا کردیا گیا ہے،

سکیورٹی انتظامات رینجرز اور پولیس نے سنبھال رکھے ہیں، جبکہ کسی بھی

ناخوشگوار واقعہ کی صورت میں کوئیک ریسپانس کیلئے آرمی کی 10 ٹیمیں ہمہ

وقت اسٹینڈ بائی رکھی گئی ہیں۔ حساس پولنگ سٹیشنوں پر سو سے زائد ٹی وی

کیمرے نصب ہیں۔ کرونا سمارٹ لاک ڈوان والے علاقوں میں ایس او پیز پر عمل

درآمد کرتے ہوئے لوگ ووٹ کاسٹ کررہے ہیں۔

=-.-= حلقے کا نتیجہ ملکی سیاست کے مستقبل کا رُخ متعین کرئیگا، تجزیہ کار

پورے ملک کے عوام اور میڈیا کی نظریں حلقے پر لگی ہیں کہ یہاں جیت کا سہرا

کس کے سر سجتا ہے۔ سیاسی تجزیہ نگاروں کے مطابق مذکورہ حلقے میں ہونے

والے ضمنی انتخاب کے نتائج غیر معمولی اہمیت کے حامل ہونگے، کیونکہ یہ

جہاں ملکی سیاست کے مستقبل کے رخ کا تعین کرینگے، وہیں حلقے کے نتائج

کی بنا پر پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان مسلم لیگ (ن) اپنی آئندہ کی سیاست

کریں گی۔

ڈسکہ NA-75 سلطان

=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply