118

ڈاکٹر عشرت حسین کی 8سرکاری محکمے ختم کرنے کی تصدیق

Spread the love

اسلام آباد( سٹاف رپورٹر ) وزیراعظم کے مشیر برائے سادگی مہم و اداراہ جاتی

اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ کا بینہ سے پہلے

سے منظور شدہ تنظیم نو کے منصوبے کے تحت 8 سرکاری محکمے متاثر ہوں

گے، جس کے بعد محکموں کی تعداد 441 سے کم ہو کر 342 ہوجائے گی، تاہم ان

میں سے کچھ محکموں کے ملازمین کو دیگر محکموں میں تو کچھ کو صوبائی

محکموں میں ضم کردیا جائے گا۔خیال رہے ڈاکٹر عشرت حسین کا بیان وفاقی

وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کے اس بیان کے بعد سامنے آیا جس میں

انہوں نے 400 سرکاری محکمے ختم کیے جانے کا اشارہ دیا تھا۔ان کا مزید کہنا

تھا کسی کی بھی ملازمت ختم نہیں ہوگی اور جو اِن ختم کیے جانیوالے محکموں

میں کام کررہے ہیں انہیں دیگر محکموں میں منتقل کیا جائے گا۔ڈاکٹر عشرت حسین

نے بتایا کابینہ نے اس تجویز کی منظوری دیدی ہے اور اس کے نفاذ کیلئے ایک

عملدرآمد کمیٹی بھی تشکیل دی جاچکی ہے۔انہوں نے یہ بھی بتایا کہ کابینہ نے

متعدد وفاقی محکموں کو غربت مٹا اور سوشل سیکیورٹی ڈویژن میں ضم کرنے،

کامرس اور ٹیکسٹائل ڈویژن کے انضمام، کیپٹل ایڈمنسٹریشن کے خاتمے اور اس

کی ذمہ داریاں متعلقہ وزارتوں کو منتقل کرنے اور وزارت صحت کی تنظیم نو کی

منظوری دی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم کی ہدایات کی روشنی میں وفاقی

حکومت کے لیے اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو اپ گریڈ کر کے ہیومن ریسورس منیجمنٹ

ڈویژن بنانے اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے ڈھانچے کی تجدید بھی

ٹاسک فورس میں زیرِغور ہے۔ان کا کہنا تھا کہ تمام محکموں میں ریٹائرمنٹ کی

عمر کو 60 سال سے بڑھا کر 63 سال کیے جانے کی تجویز کا بھی جائزہ لیا گیا

تھا تاہم اگر ایسا کیا گیا تو ایک ناکارہ لکڑی اور ان ملازمین کی کارکردگی میں

کوئی فرق نہیں ہوگا۔

Leave a Reply