ایمرجنسی میڈیسن ڈگری ہولڈر پہلی پاکستانی ڈاکٹرسنیعہ خان غوری کی خواہش

ایمرجنسی میڈیسن ڈگری ہولڈر پہلی پاکستانی ڈاکٹرسنیعہ خان غوری کی خواہش

Spread the love

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن ہیلتھ نیوز) ڈاکٹرسنیعہ خان غوری

ہونہار طالبہ سنیعہ خان غوری نے ملک میں رہتے ہوئے ایمرجنسی شعبے میں

برطانیہ سے اعلیٰ ترین فیلو شپ آف رائل کالج آف ایمرجنسی میڈیسن کی ڈگری

حاصل کرکے پاکستان کی پہلی ڈاکٹر کا اعزاز اپنے نام کرنے سمیت کم عمری میں

یہ ڈگری مکمل کرنیوالوں کی فہرست میں بھی شامل ہو گئیں۔ ڈاکٹر سنیعہ خان

غوری چاہتی ہیں کہ وہ دیگر ڈاکٹرز کو بھی اس شعبے میں تربیت دیں۔

=–= صحت سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

تفصیلات کے مطابق ایمرجنسی طب کے شعبے کا ایک اہم حصہ ہے جس پر

پاکستان میں کم توجہ دی جاتی ہے۔ ڈاکٹر سنیعہ کے مطابق ایمرجنسی کا کام

ایمبولینس سے شروع ہو جاتا ہے اور اگر ایمبولینس میں ہی بروقت طبی امداد دے

دی جائے تو اس سے اموات کو کم کرنے میں بڑی مدد ملتی ہے۔ انکا مزید کہنا تھا

ایمرجنسی میڈیسن ایک نئی فیلڈ ہے جس میں ڈاکٹرز ایمرجنسی کو ڈیل کرنے میں

مہارت حاصل کرتے ہیں اور دنیا بھر میں ایمرجنسی میڈیسن کے لحاظ سے اسے

اعلیٰ ترین ڈگری تصور کیا جاتا ہے۔

=قارئین=کاوش اچھی لگے تو شیئر، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

پاکستان ان ممالک میں شامل ہے جہاں 70 اموات انجریز یا ٹراما کی وجہ سے

ہوتی ہیں، اگر کسی جگہ پر ایکسیڈنٹ ہوا ہے تو زخمیوں کو ہسپتال کس طریقے

سے پہنچانا اور راستے میں کیا علاج کرنا ہے یہ چیز ابھی پاکستان کے طبی

شعبے میں نہیں ہے، کچھ ایمبولینس سروسز ہیں جو یہ کام بخوبی کررہی ہیں لیکن

ان میں بھی ماہر پیرا میڈیکس اور فزیشنز کی بہت قلت ہے، فیلو شپ کے بعد

پاکستان میں ایمرجنسی کے شعبے کو فروغ دینے کی خواہش مند ڈاکٹر سنیعہ خان

غوری چاہتی ہیں کہ وہ دیگر ڈاکٹرز کو بھی اس شعبے میں تربیت دیں۔

ڈاکٹرسنیعہ خان غوری

Leave a Reply