جنگ ہوئی تو بھارت کا بھاری جانی نقصان ہو گا ، چین کا انتباہ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

چین کا انتباہ

بیجنگ ،نئی دلی(جے ٹی این آن لائن نیوز)بھارتی میڈیا کی اطلاعات میں کہاگیا ہے

کہ چین نے لائن آف ایکچول کنٹرول کے ساتھ لداخ میں ایک ہزار مربع کلومیٹر

سے زیادہ رقبے کا کنٹرول حاصل کر لیا ہے کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق میڈیا

نے ایک اعلیٰ سرکاری عہدیدار کے حوالے سے بتایا ہے کہ لائن آف ایکچول

کنٹرول کے ساتھ دیپ سانگ کے میدانی علاقے سے لے کر چوشول تک چینی فوج

منظم طورپر پیش قدمی کر رہی ہے انہوںنے مزید کہاکہ دیپ سانگ کے میدانی

علاقے میں پٹرولنگ پوائنٹ 10سے13تک تقریبا نو سومربع کلومیٹر کا علاقہ چین

کے کنٹرول میں آگیا ہے انہوں نے کہا کہ وادی گلوان میں تقریباً 20 مربع کلومیٹر

اورگرم چشمہ کے علاقے میں 12 مربع کلومیٹر کا علاقہ چین کے کنٹرول میں ہے

انہوںنے کہاکہ پیانگونگ تسو میں 65 مربع کلومیٹراورچوشول میں 20 مربع

کلومیٹرکا علاقہ چین کے کنٹرول میں ہے چین اور انڈیا کے درمیان لداخ میں

سرحدی تنازع پر کشیدگی بڑھ رہی ہے جبکہ چین نے خبردار کیا ہے کہ اگر انڈیا

مقابلہ کرنا چاہتا ہے تو اس کو ماضی کے برعکس زیادہ فوجی نقصان اٹھانا پڑے

گا۔برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق یہ بات چینی حکومت کے حمایت

یافتہ اخبار گلوبل ٹائمز نے منگل کو اپنے اداریے میں لکھی ۔گلوبل ٹائمز نے اپنے

اداریے میں لکھا ہے کہ ’انڈیا کہتا ہے کہ اس نے چینی فوج کی در اندازی روکی

ہے۔ یہ انڈین فوج تھی جس نے کشیدگی بڑھانے میں پہل کی۔اخبار میں مزید لکھا

گیا ہے کہ انڈیا کو ’طاقتور چین‘ کا سامنا ہے اور نئی دہلی کو اس وہم و گمان میں

نہیں رہنا چاہیے کہ اسے اس معاملے پر امریکہ کی حمایت ملے گی۔لیکن اگر انڈیا

مقابلہ کرنا چاہتا ہے تو چین کے پاس انڈیا کے مقابلے میں زیادہ وسائل اور

صلاحیت ہے۔ اگر انڈیا فوجی کارروائی کرنا چاہتا ہے تو پیپلز لبریشن آرمی اس کو

1962 کی نسبت زیادہ شدید نقصان پہنچا سکتی ہے۔ بھارت میں چینی سفارتخانے

کا کہنا ہے کہ 31 اگست کو بھارتی فوج نے پھر لائن آف ایکچوئل کنٹرول کی

خلاف ورزی کی جو کہ 31 اگست کو چین بھارت اتفاق رائے کی کھلم کھلا خلاف

بچوں کیلئے میٹھا زہر، نوجوانوں کو اندر سے کھوکھلا کرنیوالے مشروبات

ورزی ہے ۔بھارت میں چینی سفارتخانے نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ بھارتی فوج

نے 31 اگست کو لائن آف ایکچوئل کنٹرول پر کھلی اشتعال انگیزی کی اس بھارتی

اقدام سے سرحدی علاقے میں ایک بار پھر کشیدگی بڑھ گئی ۔ بھارتی اقدام چین کی

علاقائی ، خود مختاری کی شدید خلاف ورزی ہے ۔ بھارتی اقدام متعلقہ معاہدوں ،

پروٹوکول اور اتفاق رائے کی بھی خلاف ورزی ہے۔ بھارت کے ان اقدامات سے

چین بھارت سرحدی علاقوں میں امن کو شدید نقصان پہنچا ۔ بھارت اپنے فرنٹ لائن

فوجیوں کو کنٹرول میں رکھے اور تمام اشتعال انگیز اقدامات کو فوری طور پر بند

کرے اور وعدوں کی پاسداری کرے اور لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرنے

والی فوج کو فوری طور پر واپس بلائے۔

چین کا انتباہ

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply