چین پاکستان کواگلے 3سال میں ایک ارب ڈالر امداد دے گا، خسرو بختیار

Spread the love

وفاقی وزیر پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ و ریفارمز خسرو بختیار نے کہا ہے چین پاکستان کو اگلے تین سال کے دوران ایک ارب ڈالر گرانٹ دیگا، پاکستان کے چاروں اکنامک زونز کو آپریشنل کر دیا جائے تو 9 ارب ڈالر کا تجارتی خسارہ کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے، زراعت کے حوالے سے فروری میں چائنہ پاکستان جوائنٹ ورکنگ گروپ کام شروع کریگا، چین سے 100 بڑے سرمایہ کار جلد پاکستان آرہے ہیں، صوبہ جنوبی پنجاب کا سیکرٹریٹ 30 جون سے اپنا کام شروع کردیگا، سانحہ ساہیوال کی جے آئی ٹی کے تحت تحقیقات کے بعد مجرموں کو قرار واقعی سزا ملے گی۔ اتوار کے روز پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب میں انکا مزید کہنا تھا تحریک انصاف کی حکومت نے سی پیک کو نئے فیز میں لے جانے کا پروگرام بنایا ،منصوبہ کے ڈھانچے کو بہت وسعت دی ہے، فوری طور پر انڈسٹریل زونز پر کام شروع کرینگے جس کے تحت چین سے صنعتیں پاکستان منتقل ہونگی۔فیصل آباد،دھابیجی و دیگر علاقوں میں صنعتیں چل پڑیں تو ملکی برآمدات میں ساڑھے نو ارب ڈالر کا اضافہ ہو گا اور چین سے تین ارب ڈالر کی درآمدات کم ہو سکتی ہیں، جس سے تجارتی خسارہ میں کمی آئیگی۔ زراعت کو سی پیک میں اہمیت نہیں دی گئی تھی، پی ٹی آئی کی حکومت نے زرعی شعبہ میں تعاون بڑھانے کیلئے چین کو قائل کیا ہے، کوشش ہے ہم چین کی ضروریات کو پورا کریں، گوادر پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں ہائیڈرو کاربن اور پیٹرو کیمیکل کے شعبے میں گوادر میں کام کیا جائیگا، ویسٹرن کوریڈور پر توجہ دی جارہی ہے، کوئٹہ اور ڑوب کو ملانے کیلئے بھی کام کیاجارہا ہے، منصوبوں کی تمام تفصیلات سامنے لائیں گے۔ غربت میں کمی وزیر اعظم کی اولین ترجیح ہے، غربت کی سطح کو کم کیا جائیگا۔

Leave a Reply