corona-virus

کرونا کیخلاف جنگ، چین کی اعلیٰ ظرفی، عالمی طبی ماہرین کی آن لائن تربیت

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بیجنگ (جے ٹی این آن لائن نیوز) چین اعلیٰ ظرفی

مشرقی چین کے طبی ماہرین نے ویڈیو فون کے ذریعے پاکستان، عراق، برطانیہ اور امریکہ سمیت 7 ممالک کے طبی ماہرین کو کرونا وائرس کیخلاف چین کے تجربات سے آگاہ کرتے ہوئے تربیت کی ہے۔

مزید پڑھیں : دنیا بھر میں کرونا وائرس کی تباہ کاریاں جاری

مختلف ملکوں کے ماہرین اپنے اپنے ملک میں کرونا وائرس کی مختلف صورتحال کے مطابق وبا کے بارے میں سوالات کیے۔ صوبہ جیانسو میں دونگ نان یونیورسٹی سے منسلک چونگ ڈا ہسپتال کے چینی ماہرین نے جن میں سے کچھ ابھی ووہان میں وباء کیخلاف کام کر رہے ہیں، جواب دینے کے علاوہ اپنے ہسپتال کےتجربات کو بھی بیان کیا۔ مثال کے طور پر ہسپتال کے مرکزی دروازے پر ایک خیمہ قائم ہوا جس میں کرونا وائرس سے متاثرہ مشتبہ مریضوں کو چھانٹا جاتا ہے، کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی کمپیوٹرائز ڈٹومو گرافی (سی ٹی) سکین کے نتائج کیا ہیں۔

مریضوں کی جلد تشخیص اور علاج کرنا ہی ایک کلیدی طریقہ ہے۔ چینی طبی ماہرین

پاکستان کے آغا خان یونیورسٹی ہسپتال کے ماہرین نے وباء کی روک تھام، ہسپتال میں طبی کارکنوں کی حفاظت وغیرہ سے متعلق سوالات کیے۔ جن کے چینی ماہرین نے اچھی تفصیل کیساتھ جوابات دیے۔ چینی ماہرین کے مطابق وائرس سے متاثرہ مریضوں کی جلد سے جلد تشخیص اور علاج، تشویشناک حالت میں مبتلا مریضوں کو سکرین کر کے ان کا جلد از جلد علاج کرنا ہی ایک کلیدی طریقہ ہے۔

ہم اپنے تجربات شیئر کرکے وباء کیخلاف عالمی جنگ کو جلد جیتنا چاہتے ہیں، چین

نمونیا پیدا کرنے والے وائرس “خاموش ہائپو کسیا” کو لاتا ہے۔ اگرچہ مریضوں کو سانس لینے میں مشکلات پیش نہیں آتی لیکن حقیقت میں ان کے خون میں آکسیجن کم ہے- اس لیے ہم ہر روز دو تین مرتبہ مریضوں کے خون میں آکسیجن کی سطح چیک کرتے ہیں۔ ہسپتال کے سربراہ تھنگ کا چون کا کہنا تھا حال ہی میں بہت سے غیر ملکی طبی اداروں نے ہم سے رابطہ کیا ہے اور وہ کرونا وائرس کے بارے میں مشورہ لینا چاہتے ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ ہم اپنے تجربات کو شیئر کرنے سے دوسرے ممالک میں اس وباء کے خلاف جنگ کو بھی جلدی جیت سکیں گے۔

چین اعلیٰ ظرفی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply