Oh My God 61

چھینک پر پٹائی، جگ ہنسائی اور منفرد اپیل بنی عدالت کا امتحان

Spread the love

نئی دہلی، کولکتہ (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) چھینک پٹائی جگ ہنسائی

نوول کرونا وائرس پھیلنے کے خوف سے بھارت کی ریاست مہاراشٹر میں سڑک پر جاتے ہوئے ایک شہری کو چھینکنے پر وہاں موجود لوگوں نے مار مار کر ادھ موا کر دیا-

مزید پڑھیں : کرونا سے بچاؤ کیلئے ” گاؤموتر” ڈرنک پارٹیاں

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست مہاراشٹر کے شہر کولہا پور میں ایک شخص سڑک سے گزر رہا تھا اِسی دوران اسے چھینک آگئی، جسے دیگر راہ چلتے اور وہاں کھڑے افراد نے آؤ دیکھا نہ تاؤ اس شخص کو پیٹنے لگ گئے۔ یہ تماشہ ابھی جاری تھا کہ ایک اور شہری نے اس واقعے کی ویڈیو بنائی اور سوشل میڈیا پر وائرل کر دی جسے صارفین دیکھ کر جہاں بھارتی عوام کا تمسخر اڑا رہے ہیں وہیں بے گناہ شہری کو پر ظلم کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے کہ اس شہری کو بجائے بچانے کے باقی لوگ بھی پیٹنے لگے۔ پولیس کا کہنا ہے انہوں نے واقعے کی سی سی ٹی وی ویڈیو دیکھ لی ہے لیکن ابھی تک کسی نے بھی واقعے کی درخواست درج نہیں کروائی۔

مہاراشٹر میں پیش آیا واقعہ بھارتیوں کے کرونا سے خائف ہونے کا ثبوت

کرونا وباء بلاشبہ چھینک اور کھانسی کے ذریعے با آسانی ایک سے دوسرے انسان میں منتقل ہو رہی ہے، اِسی خوف کی وجہ سے مہاراشٹر میں راہگیروں نے چھینکنے والے شخص کو پیٹ دیا۔ تاہم بھارت میں کرونا وائرس کا خوف کچھ زیادہ ہی پایا جاتا ہے جس کا ثبوت مہاراشٹر میں پیش آنیوالا یہ واقعہ ہے-
بھارتی ریاست مہاراشٹر میں اب تک کرونا وائرس کے 49 کیسز سامنے آچکے ہیں اور ایک شخص کی ہلاکت بھی ہوئی ہے جبکہ پورے بھارت میں اِس وقت کرونا کیسز کی تعداد 198 تک پہنچ چکی ہے۔

” گاﺅ موتر” پینے پر پابندی لگائی جائے لوگ بیمار ہو رہے ہیں، مغربی بنگال سائنس فورم

بھارت ہی میں دوسری طرف کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے ہندو انتہاء پسند جماعتوں کے رہنما سادہ لوح لوگوں کو گائے کا پیشاب پینے کا مشورہ دے رہے ہیں۔ تاہم لوگ گاﺅ موتر پینے کے باعث وائرس سے بچنے کی بجائے بیمار پڑنا شروع ہوگئے ہیں، اس صورتحال کے پیش نظر مغربی بنگال سائنس فورم نے موتر پینے پر پابندی کیلئے کولکتہ ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی ہے۔ فورم کے وکاش رنجن بھٹا چاریہ اور سبیا جی بھٹا چاریہ نے اپنی درخواست میں کہا کہ کچھ لوگ گائے کا پیشاب پینے سے بیمار پڑ رہے ہیں لہذ ا عدالت پیشاب پینے پر پابندی عائد کرے۔ عدالت نے 24 مارچ کو سماعت کیلئے تاریخ مقرر کر دی۔

پولیس اہلکار کی شکایت پر بی جے پی رہنما حوالات بند

حکمران جماعت بی جے پی کے ایک رہنما نے کولکتہ شہر میں کچھ لوگوں کو گائے کا پیشاب اس دعوے کیساتھ پلایا تھا کہ وہ اس کے پینے سے کرونا وائرس سے بچ جائیں گے، مگر پیشاب پینے کے بعد لوگ بیمار ہو گئے۔ بی جے پی کے ایک رہنما نریان چیٹرجی نے ایک پولیس اہلکار کو گائے کا پیشاب پرساد کے طور پر پیش کیا تھا، پولیس اہلکار نے اپنے مذہبی عقیدے کی بدولت اسے پی لیا مگر وہ بیمار پڑ گیا، جس پر پولیس اہلکار نے بی جے پی کارکن کیخلاف شکایت درج کروائی، پولیس نے کارروائی کرکے بی جے پی رہنما نریان چیٹرجی کو گرفتار کر لیا۔

چھینک پٹائی جگ ہنسائی

Leave a Reply