پی آئی سی حملہ :شناخت پریڈ میں تصدیق نہ ہونے پر 8 وکلاء بری،24 کا جسمانی ریمانڈ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور(کورٹ رپورٹر)انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے پی آئی سی حملہ

کیس میں گرفتار 8 وکلاء کو بری کر دیا جبکہ مقدمہ میں شریک 24 وکلا ء کو فوٹو گرامیٹک ٹیسٹ

کے لئے کل 23 دسمبر تک جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیاہے ۔گزشتہ روز کیس کی

سماعت شروع ہوئی تومقدمہ کے تفتیشی افسر نے مقدمہ کا ریکارڈ عدالت میں پیش کیا،تفتیشی کی

جانب سے ملزموں کے فوٹو گرافک ٹیسٹ کی رپورٹ عدالت میں پیش کرتے ہوئے بتایا گیا کہ 8 وکلا

ء کی شناخت پریڈ میں تصدیق نہیں ہو سکی جبکہ 24 وکلا ء کی شناخت پریڈ میں تصدیق ہو گئی

ہے،اوران وکلاء کے فوٹو گرافک ٹیسٹ میچ کر گئے ہیں،عدالت سے استدعاہے کہ شناخت ہونے

والے 24 وکلا کی فوٹو گرامیٹک ٹیسٹ کے لئے 5روزہ جسمانی ریمانڈ دیاجائے ،ملزم وکلاء کی

جانب سے سینئر وکیل مقصود بٹر، ملک عدیل احسان اورپنجاب بار کونسل کے رکن فرہاد علی شاہ

نے موقف اختیار کیا کہ 32 ء وکلا 10 دن سے پولیس کی حراست میں موجود ہیں،اگر پولیس نے فوٹو

گرامیٹک ٹیسٹ کرانا تھا تو دوران حراست کرا لیتے، ہمارے وکلا بھائیوں کا میڈیکل بھی نہیں کرایا

گیا،عدالت سے استدعاہے کہ مذکورہ وکلا ء کو مقدمہ سے بری کرنے کا حکم دیا جائے،عدالت نے

مقدمہ کاریکارڈ دیکھنے اور وکلاء کے دلائل سننے کے بعد پولیس کی جانب سے وکلاء حاکم علی

اورکوثر سلہری سمیت 8 وکلا کی شناخت پریڈ میں تصدیق نہ ہونے پر انہیں بری کردیاجبکہ مقدمہ

میں شریک24وکلاء جن میں رانا ارسلان،ملک ارشد،ذیشان علی اور مدثر وغیرہ شامل ہیں کو 24

وکلاء کودو روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیاہے ،عدالتی پیشی کے موع پر سخت

سکیورٹی کے انتظامات کئے گئے تھے ۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply