پیپلز پارٹی استعفوں میں شامل ہوتی تو حکومت گھر جاچکی ہوتی ، مریم نواز

Spread the love

پیپلز پارٹی استعفوں میں شامل

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن نیوز) پاکستان مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم

نواز نے کہا ہے کہ وزیراعظم ہاوس میں ایک دہشت گرد بیٹھا ہے، جو اداروں

کو ملوث کرکے ڈرا دھمکا کر اپوزیشن کو قید کرنے کا کہتا ہے،مافیاز کے گینگز

نے کبھی ایسی حرکتیں نہیں کیں جو وزیراعظم ہاوس سے کی جارہی ہیں،بشیر

میمن ایک ادارے کے سربراہ تھے، اور ادارے کا سربراہ ذمہ داری سے بات

کرتا ہے،جسٹس شوکت عزیز کی گواہی آن ریکارڈ ہے، اب بشیر میمن کی گواہی

آگئی ہے، اور بھی بہت سی گواہیاں آئیں گی، پاکستان میں عوام پر مہنگائی اور

لاقانونیت کا عذاب آیا ہوا ہے، دنیا میں آپ کی فلائٹس اور پاسپورٹ پر پابندی لگ

رہی ہے،عمران خان ناکام ہو گئے ہیں ار اب سیاسی شہید نہیں بن سکتے،(ن)لیگ

اور پی پی کے درمیاں کوئی اختلاف نہیں، سیاسی جماعتیں اختلافات کے باوجود

بھی ایک دوسرے کےساتھ چلتی ہیں ججوں کو بلیک میل کرنے پر وزیر اعظم

کیخلاف مقدمہ ہونا ہونا چاہیئے ۔ بدھ کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے باہر میڈیا سے

گفتگوکرتے ہوئے مسلم لیگ(ن)کی نائب صدر مریم نواز نے کہا تاریخ میں کبھی

وزیراعظم آفس کے اندر گھنانے جرائم کا ارتکاب نہیں ہوا، اداروں کے سربراہ

کو بلا کر کہا جاتا ہے کہ مقدمات بنائیں، سیاسی انجینئرنگ کیلئے ادارے استعمال

کیے جا رہے ہیں، وزیراعظم ہاوس میں ایک دہشت گرد بیٹھا ہوا ہے، وزیراعظم

اداروں کو ملوث کرکے ڈرا دھمکا کر اپوزیشن رہنماں کو قید کرنے کا کہتے

ہیں، لوگوں کو سمجھ آگیا ہے کہ مافیاز یا گینگ کیا ہوتے ہیں۔ مریم نواز نے کہا

کہ بشیر میمن ایک ادارے کے سربراہ تھے، اور ادارے کا سربراہ ذمہ داری

سے بات کرتا ہے، ان کرداروں کو ہم کچھ نہیں سمجھتے، اصل بات ہے حکومت

کے سربراہ نے کہا کہ فلاں کو جیل میں ڈالو، اس طرح تو ڈان یا گینگ کے

سربراہ کہتے ہیں۔ ارشد ملک کی ویڈیو جب میرے پاس آئی تو قوم کے سامنے

رکھی، جسٹس شوکت عزیز کی گواہی آن ریکارڈ ہے، اب بشیر میمن کی گواہی

آگئی ہے، بشیر میمن کے انکشافات تو آج سامنے آئے اور بھی بہت سی گواہیاں

آئیں گی، جسٹس فائز نے ایک دہشتگرد جو پی ایم ہاوس میں بیٹھا ہے اسکی

سازشوں کا مقابلہ کیا اگر یہ جج دب جاتے اورآواز نہ اٹھاتے تو ان کا بھی آج

کہیں ذکر نہ ہوتا، مجھے خوشی ہے قوم کوبشیر میمن کی ایک ایک چیز پتہ چل

گئی، اتنی سیاسی انجینئرنگ کے باوجود نتیجہ کیا رہا، حکمرانوں کو پھر بھی ہر

محاذ پر نااہلی اور ناکامی کا سامنا کرنا پڑا جس کی مثال نہیں ملتی، دنیا میں آپ

منہ دکھانے کے قابل نہیں، ان کے خلاف بڑی بڑی گواہیاں آرہی ہیں۔ لیگی رہنما

نے کہا کہ عمران خان ووٹ چوری کر کے آئے اور ہم پر مسلط ہوئے، پاکستان

میں عوام پر مہنگائی اور لاقانونیت کا عذاب آیا ہوا ہے، دنیا میں آپ کی فلائٹس

اور پاسپورٹ پر پابندی لگ رہی ہے، ملک میں مہنگائی کا طوفان آیا ہوا ہے،

پاکستان کے شہر کوڑے کے ڈھیر بن گئے اور گورننس نام کی چیز نہیں،

وزیراعظم ہاوس کو استعمال کرکے سازشیں کی جارہی ہیں، عمران خان ناکام ہو

گئے ہیں ار اب سیاسی شہید نہیں بن سکتے، جتنی جلدی سے حکومت سے جان

چھٹ جائے اچھا ہے، اگر پیپلزپارٹی استعفوں میں شامل ہوجاتی تو اس وقت

حکومت گھر جاچکی ہوتی،(ن)لیگ اور پی پی کے درمیاں کوئی اختلاف نہیں،

سیاسی جماعتیں اختلافات کے باوجود بھی ایک دوسرے کےساتھ چلتی ہیں، یہ

عوام کے حقوق کی جنگ ہے یہ عوام کو نالائق اور نااہل ،مسلط شدہ حکومت

سے چھٹکارا دلانے کی جنگ ہے۔ مریم نواز کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاوس میں

قاضی فائز عیسی کیخلاف سازش کی گئی، قاضی فائزعیسی کیسز میں وزیراعظم

پرلگنے والے الزامات پرجوڈیشل کمیشن بنایاجائے، جسٹس شوکت عزیز کی بات

سنی جائے اور انہیں انصاف دیا جائے، ججزکوبلیک میل کرکے غلط فیصلے

کرنے پروزیراعظم پرمقدمہ بنناچاہئے، قاضی فائز عیسی کے خلاف جھوٹے

ریفرنس کی سازش پرجوڈیشل کمیشن بنانے کامطالبہ کرتی ہوں، آپ نے سٹنگ

جج کا کہا کہ اسے گرفتار کرو یہ بڑا معاملہ ہے، مسلم لیگ ن اس کو ایسے

نہیں جانے دے گی عدلیہ سے درخواست ہے اس معاملے کو خود دیکھیں۔

پیپلز پارٹی استعفوں میں شامل

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply