Pentagon

افغانستان میں امن کیلئے پینٹاگون کا بڑا دعویٰ، 5 فوجی اڈے خالی کر دیئے

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) پینٹاگون کا بڑا دعویٰ

امریکہ نے امن عمل کے تحت افغانستان میں 5 امریکی فوجی اڈے خالی کر

دئیے، امریکی فوج کے زیر استعمال پانچوں فوجی اڈے افغان شراکت داروں کے

سپرد کر دیئے گئے ہیں، یہ اڈے صوبہ ہلمند، ارزگان، پکتیا اور لغمان میں قائم

تھے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ کا افغانستان میں اپنے فوجیوں کی تعداد کم کرنے کا عندیہ
———————————————————————

عالمی میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکہ نے امن عمل کے تحت افغانستان میں 5

امریکی فوجی اڈے خالی کردئیے ہیں۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون نے دعویٰ کیا

ہے کہ افغانستان میں امریکہ کے پانچ فوجی اڈے خالی کیے جاچکے ہیں-

امریکی فوج کی تعداد 8 ہزار کے درمیان ہی رہے گی۔ پینٹاگون کے مطابق

امریکی فوج کے 5 فوجی اڈے افغان شراکت داروں کو دے دیے گئے ہیں-

افغانستان میں امریکی فوج کی تعداد 8 ہزار کے درمیان ہی رہے گی
———————————————————————

افغانستان میں امریکی فوج کی تعداد 8 ہزار کے درمیان ہی رہے گی۔ ایک اعلی امریکی عہدیدار کا غیرملکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا پینٹاگون نے طالبان کیساتھ ہونیوالے معاہدے کی روشنی میں اپنے 5 فوجی اڈے بند کیے ہیں۔

امریکہ طالبان کیساتھ معاہدے کو آگے بڑھا رہا ہے، زلمے خلیل زاد

امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغان امن عمل زلمے خلیل زاد نے قبل ازیں اپنے حالیہ ٹوئٹ میں کہا تھا کہ امریکہ اور طالبان کے مابین ہونے والے معاہدے کی رو سے واشنگٹن کو 135 دنوں کے اندر افغانستان کے فوجی اڈوں سے اپنے تمام فوجیوں کو نکالنا ہوگا۔

بند کئے گئے فوجی ائیر بیس ہلمند، ارزگان، پکتیا اور لغمان میں قائم تھے
———————————————————————

خیال رہے افغانستان میں اب بھی 8 ہزار کے قریب امریکی فوجی موجود ہیں۔ افغان میڈیا نے بھی تصدیق کی ہے کہ طالبان کے ساتھ معاہدے کے تحت افغانستان میں امریکی فورسز کے پانچ اڈے ختم کر دیے گئے ہیں۔ امریکہ کے جن فوجی اڈوں کا بند کیا گیا ہے وہ صوبہ ہلمند، ارزگان، پکتیا اور لغمان میں قائم تھے۔

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

پینٹاگون کا بڑا دعویٰ

Leave a Reply