145

سانحہ پی آئی سی، 2 اعلیٰ پولیس افسر قصور وار قرار

لاہور(جتن آن لائن کرائم رپورٹر) پولیس افسر قصوروار قرار

سانحہ پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی ( پی آئی سی ) میں 2 پولیس افسران کو قصور وار قرار دے دیا گیا۔ مزید پڑھیں

ایس ایس پی آپریشنز، ایس پی سول لائنز نے غفلت کا مظاہرہ کیا

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایس ایس پی آپریشنز محمد نوید اور ایس پی سول لائنز دوست محمد کھوسہ کی غفلت اور نااہلی کے باعث سانحہ پی آئی سی رونما ہوا۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے احکامات پر سانحہ پی آئی سی کی تحقیقات کے لیے تشکیل دی گئی کمیٹی نے رپورٹ گزشتہ روز پیش کر دی، جس کے مطابق ایس پی سول لائنز دوست محمد کھوسہ وکلاء ریلی کے دوران موقع پر ہی نہ پہنچے، جبکہ ایس ایس پی آپریشنز محمد نوید موقع پر پہنچ کر بھی کوئی فیصلہ نہ لے سکے۔ رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ ہسپتال کے قریب تعینات پولیس فورس کو مناسب طریقے سے گائیڈ نہیں کیا گیا۔

بروقت فیصلہ کرنے میں ہچکچاہٹ صورتحال کی خرابی کی وجہ بنی

ہنگامہ آرائی کے وقت بروقت فیصلے کرنے کی ضرورت تھی جو نہیں کیے گئے۔ فیصلے کرنے میں ہچکچاہٹ کی وجہ سے صورتحال میں خرابی پیدا ہوئی۔ رپورٹ کے نتائج کی روشنی میں آئندہ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں دونوں افسران کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

سانحہ پی آئی سی کا پس منظر

واضح رہے وکلاء برادری نے کچھ عرصہ قبل ڈاکٹر برادری کی جانب سے ناشائستہ ویڈیو بیان جاری کرنے پر شدید غصے کا اظہار کرتے ہوئے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی پر دھاوا بول دیا تھا- جس کے نتیجہ میں متعدد مریض جاں بحق اور بڑے پیمانے پر مالی نقصان ہوا- جبکہ انتہائی اہم سرکاری ہسپتال اور انسٹی ٹیوٹ کئی دن تک غیر فعال رہا- مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا- بعد ازاں فریقین میں صلح کرا دی گئی- تاہم اس ضمن میں درج مقدمات کی سماعت جاری ہے- پنجاب پولیس بھی لاپرواہی کا مظاہرہ نہ کرتی تو سانحہ رونما ہونے سے روکا جا سکتا تھا-
پولیس افسر قصوروار قرار

اپنا تبصرہ بھیجیں