105

پوری قوم کا کشمیریوں سے اظہار یکجہتی،جلسے، جلوس ، ریلیاں

Spread the love

اسلام آباد ،لاہور ، کراچی،مظفر آباد(جنرل رپورٹر)آزاد کشمیر ،گلگت، بلتستان

اور شمالی علاقہ جات سمیت ملک بھر میں بدھ کویوم یکجہتی کشمیر اس عزم کے

ساتھ منایا گیا کہ کشمیر کی آزادی تک مظلوم کشمیریوں کی سیاسی ، سفارتی اور

سماجی حمائیت جاری رکھی جائے گی دن کا آغاز مساجد میں تحریک آزادی

کشمیر کی کامیابی اور شہدا کشمیر کے درجات کی بلندی کے لئے خصوصی

دعائوں سے کیا گیا جبکہ کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کے لئے ایک منٹ

کی خاموشی اختیار کی گئی اس مقصد کے لئے ملک بھرمیں مظلوم کشمیری

بھائیوں سے یکجہتی کے لئے سرکاری ، نیم سرکاری اور نجی سطح پرمختلف

تقریبات کا انعقاد کیا گیاجن میں ضلعی انتظامیہ ، سرکاری و نجی تعلیمی اداروں ،

مذہبی ،سیاسی اور سماجی تنظیموں کے علاوہ وکلا ، طلبا،مزدور ، تاجروں اور

مختلف مکاتب فکر کے افراد کی جانب سے ریلیاں ، جلسے ،جلوس اور سیمینارز

منعقد کئے گئے اورانسانی ہاتھوں کی زنجیریں،واکس اور تصویری نمائشوں کے

علاوہ بھارتی وزیر اعظم کے پتلے اور بھارتی پرچم بھی نذر آتش کئے گئے اس

موقع پر ضلعی انتظامیہ اور سرکاری اداروں کے علاوہ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن

اتھارٹیز،جماعت اسلامی ، جمعیت علما اسلام (ف)، تحریک لبیک پاکستان، مسلم

لیگ ن ،پیپلز پارٹی ، عوامی مسلم لیگ ،مجلس وحدت مسلمین ، پاکستان عوامی

تحریک ،انجمن تاجران ،انجمن شہریاںکے زیر اہتمام الگ الگ ریلیاں ، جلوس اور

مظاہرے کئے گئے جن میں سیاسی و سماجی کارکنوں ، عام شہریوں ، طلبا و

طالبات ، وکلا ،تاجروں اور تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر

تعداد میں شرکت کی۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کو ملانے والے پلوں پر انسانی

ہاتھوں کی زنجیر بنائی گئی۔ 10 بجے سائرن بجائے گئے، ایک منٹ کے لیے

خاموشی اختیار کی گئی۔ بشام شہر میں نکالی گئی ریلی میں سکول کے بچے اور

عام لوگ شریک ہوئے۔راولاکوٹ کے ڈھلکوٹ اور آزاد پتن پل پر انسانی ہاتھوں

کی زنجیر بنائی گئی۔ بھمبر آزاد کشمیر میں سیکڑوں افراد نے بھارت کے خلاف

احتجاج کیا۔ ظاہر پیر میں نکالی گئی ریلی میں پاک فوج زندہ باد، کشمیر بنے گا

پاکستان کے فلک شگاف نعرے لگے۔شیخوپورہ کا ضلع کونسل ہال کشمیر بنے گا

پاکستان کے نعروں سے گونج اٹھا۔ اوکاڑہ کی سڑکیں بھی کشمیر بنے گا پاکستان

کے فلک شگاف نعروں سے گونج اٹھیں۔ قصور کی ریلی میں سینکڑوں طلباء اور

شہریوں نے شرکت کی، مظاہرین نے انڈیا کے خلاف نعرے بازی کی۔گجرات میں

پاکستان اور آزاد کشمیر کے قومی ترانے بجائے گئے۔ ننکانہ صاحب کی ریلی میں

ڈی پی او نے کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے لگائے۔ رحیم یار خان کی ریلی میں

پاک فوج کے حق میں نعرے بازی کی گئی۔ میانوالی میں نجی سکول کے طلباء و

طالبات اور ٹیچرز نے ریلی نکالی۔اٹک اور کرک میں جماعت اسلامی کے زیر

اہتمام ریلی نکالی گئی۔ پیر محل میں طلبا نے ریلی نکالی اور کشمیریوں کے حق

میں نعرے بازی کی۔ بہاولپور میں ریسکیو 1122 کے افسران و عملے نے ریلی

نکالی۔ نوشہرہ میں شوبرا چوک سے خیر آباد تک ہاتھوں کی زنجیر بنائی گئی۔ڈیرہ

بگٹی میں انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنا کر اظہار یکجہتی کیا گیا۔ خان پور، اوچ

شریف میں شہریوں نے کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ کشمور میں ہندو

پنچائت کی جانب سے کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے لئے ریلی نکالی گئی۔

ڈی جی خان، پاکپتن، ٹھٹھہ، سکردو، صادق آباد، وہاڑی، راجن پور، شکارپور،

لیاقت پور، چشتیاں، مردان، شگر، شجاع آباد میں بھی کشمیریوں سے بھرپور

اظہار یکجہتی کیا گیا۔ امریکا میں بسنے والے کشمیریوں اور پاکستانیوں نے

کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے مظاہرہ کیا، نیویارک کے مصروف ترین

علاقے مین ہیٹن میں ٹیکسیوں پر کشمیر کی آزادی والے نعروں کے بورڈز لگا

دیئے۔فری کشمیر مہم کا اہتمام نیویارک کے ٹیکسی ڈرائیورز نے کیا۔ ٹیکسیوں پر

کشمیر کی آزادی کے علاوہ بھارتی مظالم اور کئی ماہ سے جاری کرفیو کے

خلاف نعرے درج تھے۔ ٹائم سکوائر میں بھی بڑی تعدا د میں ٹیکسی ڈرائیورز

گزرتے رہے۔کشمیری کمیونٹی کا کہنا کے انڈین مظالم کے خلاف احتجاج اور

کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کا یہ سلسلہ تین دن جاری رہے گا۔

Leave a Reply