پنجاب بھرمیں متعدی بیماریوں سے بچائو کیلئے سرکاری ہسپتالوں میں ہائی الرٹ

Spread the love

محکمہ صحت پنجاب نے صوبے بھر کی عوام کو موسمی بیماریوں جیسا کہ پولیو‘ سوائن فلو اور دیگر متعدی بیماریوں سے بچانے کے لئے سرکاری ہسپتالوں میں ہائی الرٹ جاری کردیا ہے جبکہ پولیو جیسے موزی مرض سے بچوں کو بچانے کے لئے مقامی اضلاع کی ضلعی انتظامیہ کے ساتھ محکمہ صحت کے مقامی اہلکاروں سے کہا ہے کہ وہ گھر گھر جا کر بچوں کو قطرے پلائیں اور اگر کوئی والدین بچوں کو قطرے پلانے سے انکار کریں تو ایسے والدین کے خلاف پرچے بھی درج کروائے جائیں اور محکمہ صحت کی جانب سے ماحولیات کے محکمہ سے بھی درخواست کی گئی ہے کہ وہ سوائن فلو سے عوام الناس کو بچانے کے لئے خصوصی اقدامات کی بھی ہدائت کی گئی ہے ۔محکمہ صحت کے ترجمان نے ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ اس وقت پنجاب بھر میں پولیو کا مرض بالکل محکمہ کے کنٹرول میں ہے یہی وجہ ہے کہ پنجاب کے صرف تین اضلاع جن میں ایک مریض فیصل آباد ‘ایک مریض راولپنڈی اور ایک ہی مریض لاہور سے رپورٹ ہوا ہے لیکن اس کا بھی محکمہ صحت نے وزیراعلی پنجاب کی خصوصی ہدائت پر جب جائزہ لیا تو پتہ چلا کہ یہ تینوں کیس سیوریج کے گٹروں کے پانی سے گلیوں میں پھیلنے اور اس سے نکلنے والے فضلے کے گرد بچوں کے کھیلنے کی وجہ سے ایسا ہوا ہے اس لئے ہم نے متعلقہ محکموں کی انتظامیہ سے در خواست کی ہے کہ وہ صفائی کا خا ص طور پر خیال رکھیں تاکہ آئندہ کے لئے اس طرح کے واقعات کی روک تھام کی جا سکے ۔ترجمان کے مطابق سوائن فلو کا بھی ابھی تک کوئی کیس کہیں پر بھی رجسٹرڈ نہیں ہوا ہے تاہم اس کے باوجود محکمہ کی طرف سے صوبہ بھر کے سرکاری ہسپتالوں کو ایک الرٹ جاری کیا گیا ہے کہ وہ ایسے ممکنہ مریضوں کے لئے ایک الگ وارڈ مختص کردیں تاکہ اگر کوئی اس مرض کا مریض آئے تو کسی اور کواس کا وائرس منتقل نہ ہو سکے ۔اسی طرح سے جہاں تک تعلق موسمی بیماریوں کا ہے تو اس کی روک تھام تو نہیں کی جاسکتی البتہ ہمارا کام ہسپتالوں میں آنے والے مریضوں کی بہتر نگداشت ہے اگر کسی ہسپتال میں کسی مریض کو چیک نہیں کیا جارہا تواس پر محکمہ فوری ایکشن لے گا حکومت کا کام ہی عوام کو صحت کی سہولیات ان کی دہلیز پر مہیا کرنا ہے ۔

Leave a Reply