پنجاب اورخیبرپختونخوا میں ینگ ڈاکٹرز کا مجوزہ ایم ٹی آئی ایکٹ کیخلاف کل سے احتجاج کا اعلان، تیاریاں مکمل

Spread the love

لاہور(جے ٹی این آن لائن) ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے مجوزہ ایم ٹی آئی ایکٹ

کے خلاف پنجاب اور خیبرپختونخواکے ہسپتالوں میں کل 2 مئی کو آؤٹ ڈور بند

کرنے کی تیاریاں مکمل کر لیں۔ ینگ ڈاکٹر ایسوسی ایشن پنجاب کے صدر قاسم

اعوان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ صوبائی وزیر صحت داکٹر یاسمین راشد نے

ینگ ڈاکٹرز کو بلیک میلر قرار دے کر جلتی پر تیل کا کام کیا حالانکہ وائے ڈی

اے تو صرف ایم ٹی آئی جیسے مریض اور ہسپتال دشمن ایکٹ کے خلاف آواز بلند

کرنے جارہی ہے کیونکہ یہ ظالمانہ قانون ہے جسے حکومت پنجاب اسمبلی سے

منظور کروانا چاہتی ہے حالانکہ ہم اس ایکٹ کو مسترد کر چکے ہیں۔ انہوں نے

کہا پہلے مرحلے میں کل دو مئی کو تمام ہسپتالوں کے آؤٹ ڈور بند کرنے کا

فیصلہ کیا جبکہ احتجاجی تحریک میں ینگ نرسنگ ایسوسی ایشن اور پیرامیڈیکل

سٹاف ایسوسی ایشن بھی ساتھ دیں گی۔ احتجاج کے حوالے سے کمیٹیاں تشکیل دے

دی ہیں۔ ڈاکٹروں کے جائز مطالبات کے حصول کیلئے شروع کی جانے والی

احتجاجی تحریک کیخلاف حکومت نے طاقت کا استعمال کیا تو نتائج بھی بھگتے

گی۔ وائے ڈی اے پنجاب کے سینئر نائب صدر ڈاکٹر عاطف چودھری نے کہا ایم

ٹی اے ایکٹ کے خلاف ڈاکٹرز برادری میں تشویش پائی جاتی ہے، حکومت کی

طرف سے ڈاکٹروں سے مذاکرات کیلئے کوئی رابطہ نہیں کیا گیا۔ وای ڈی اے

پنجاب کے سابق صدر ڈاکٹر حامد بٹ نے کہا وزیر صحت پنجاب یاسمین راشد نے

ینگ ڈاکٹرز، ہاؤس آفیسرز،پی جی ٹرینیز اور میڈیکل آفیسرز کو بلیک میلر قرار

دینے کیساتھ ساتھ وائے ڈی اے پنجاب کی قیادت کو بھی “لیڈری چمکانے والے

لیڈر” کا خطاب دینے کی سخت مذمت کرتا ہوں۔

Leave a Reply