پنجاب اسمبلی، حکومت کا ایڈز میں مبتلا قیدیوں کیلئے کیمپ نہ لگا سکنے کا اعتراف

Spread the love

لاہور(جے ٹی این آن لائن ) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ وہ 6 ماہ میں صوبہ بھر کی جیلوں میں قید ایڈز کے مر یضو ں کےلئے ایک بھی میڈیکل کیمپ نہیں لگا سکی،جبکہ جیلوں میں 120شیرخواربچے اپنی ماو¿ں کےساتھ قید ہونے کا بھی انکشاف کیا گیا ،

اجلاس میں وزیر جیل خانہ جات کی طرف سوالوں کے درست جواب نہ آنے پر ڈپٹی سپیکر نے شدید ناراضگی کا بھی اظہار کیا ، اجلاس میں افواج پاک اور ایٹم بم کے خالق ڈاکٹر عبدالقدیر، ذوالفقارعلی بھٹو اور نوازشریف کو بھی خراج عقیدت پیش کیا گیا ،

حکومت ایک بار پھر کورم پورا کرنے میں ناکام ہوگئی۔ پنجاب اسمبلی کا اجلا س ڈپٹی سپیکر سردار دوست محمد مزاری کی زیر صدارت پونے 2 گھنٹے تاخیر سے شروع ہوا۔

اجلاس میں صو با ئی وزیر اختر حسین نے افواج پاکستان، اپو زیشن رکن وارث کلو نے بھی افواج پاکستان ،ایٹم بم کے خالق ڈاکٹر عبدالقدیر ، ذوالفقار علی بھٹو اور نوازشریف کو خراج عقیدت پیش کیا۔

وقفہ سوالا ت کے دوران وزیر جیل خانہ جات زوار حسین اراکین کے سوالوں کے تسلی بخش جواب نہ دے سکے اس موقع پر ایوان کا بتایا گیا پنجاب کی جیلوں میں 615 نوعمر بچے قید ہیں جن میں سے 120 شیر خوار ماو¿ں کےساتھ قید ہیں جن کو حکومت کی جانب سے 167 ملی لیٹر دودھ فراہم کیا جاتا ہے ،

چھ سال تک کی عمر کے بچے اپنی ماﺅں کےساتھ ماﺅں کی خواہش پر ان کےساتھ رہ سکتے ہیں اس کے بعد بچے لواحقین کے حوالے کر دئیے جاتے ہیں ،

ایوان میں وزیر جیل خانہ جات نے بتایا پنجاب کی جیلوں میں 38543 قیدیوں کے بلڈ کی سکریننگ کی گئی اسوقت 217 قیدی ایڈز کے مرض میں مبتلا ہیں جن میں سے 187 قیدیوں کاعلاج جاری ہے ،

جولائی 2018 سے اب تک 41 میدیکل کیمپ لگائے گئے جس پر اپوزیشن کی جانب سے پوچھا گیا کہ جولائی 2018 سے اب تک موجودہ حکومت کے محکمہ جیل خانہ جات نے کتنے میڈیکل کیمپ لگائے جس پر صوبائی وزیر تسلی بخش جواب نہ د ے سکے ،

ڈپٹی سپیکر نے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا وزیر صاحب لگتا ہے آپ آج تیاری کر کے نہیں آئے۔ صوبائی وزیر نے بتایا موجودہ حکو مت رواں ماہ مارچ میں میڈ یکل کیمپ لگائے گی ،اس پر اپوزیشن نے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا 6 ماہ گزرنے کے باوجود محکمہ جیل خانہ جات نے کچھ نہیں کیا۔

مسلم لیگ ن کی رکن عظمی بخاری کے نکتہ اعتراض پر جواب دیتے ہوئیے وزیر قانون راجہ بشارت نے ایوان کو آگاہ کیا کہ سانحہ سا ہیو ا ل کی رپورٹ مکمل ہو کر وزیر اعلی ٰ پنجاب کو مل گئی ہے،

کابینہ اجلاس میں اس پر غوروخوض کے بعد رپورٹ سے ایوان کو آگاہ کیا جائےگا۔پنجاب اسمبلی نے انڈس ہائی وے کشمور سے ڈیرہ اسماعیل خان تک دو رویہ سڑک کی تعمیر کے مطالبے کی قرارداد بھی متفقہ طور پر منظور کر لی ،

قرارداد پی ٹی آئی کے او یس دریشک،سمیع اللہ چودھری اور پیپلز پارٹی کی شازیہ عابد کی جانب سے مشترکہ طور پر پیش کی گئی تھی ۔ اجلاس جاری تھا کہ مسلم لیگ ن کی رکن کنول پر ویز نے کورم کی نشاندہی کردی،

حکومت کورم پورا کرنے میں ناکام رہی اور ڈپٹی سپیکر سردار دوست محمد مزاری نے کورم پورانہ ہونے پر اجلاس آج بروز جمعہ صبح 9 بجے تک کےلئے ملتوی کر دیا۔

Leave a Reply