0

پاکستانی بلے باز جنوبی افریقی پچز پر ذہنی اعتبار سے جدوجہد کا شکار ہیں، مکی آرتھر

Spread the love

قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے کہا ہے کہ پاکستانی بلے باز جنوبی افریقی پچز پر ذہنی اعتبار سے جدوجہد کا شکار ہیں اور ان کا مسلسل تین اننگز میں 200 سے کم سکور پر آئوٹ ہونا اسی کی نشاندہی ہے۔ نیولینڈز کی پہلی اننگز میں بھی پاکستانی ٹیم اپنے کھیل میں بہتری نہیں لا سکی اور دو سیشن کے کھیل میں محض 177 رنز پر ڈھیر ہو گئی ،اس سے قبل سینچورین ٹیسٹ میں بھی اسے 181 اور 190 رنز بنانے کا موقع مل سکا تھا۔مکی آرتھر کے مطابق بیٹسمینوں کیلئے اب یہ ناکامی ذہنی لڑائی بن چکی ہے کیونکہ جسمانی اعتبار سے انہیں ممکنہ طور پر بہترین تیاری کرائی جا سکتی ہے لیکن اب کوشش کرنا ہو گی کہ انہیں میدان میں جانے سے قبل اچھی کارکردگی کے لیے ذہنی اعتبار سے بھی بہتر بنانا ہوگا۔انہوں نے اعتراف کیا کہ جنوبی افریقہ کی کنڈیشنز یکسر مختلف ہیں اور بیشتر پاکستانی کھلاڑیوں کے لیے یہ سیکھنے کا عمل ہے کہ انہیں ایسے ماحول میں کامیابی کس طرح مل سکتی ہے۔ا نہوں نے کہا ہے کہ وہ خود کو حالات کے تحت ڈھالنے کی کوشش کر رہے ہیں کیونکہ انہیں دورے پر آنے سے قبل یہ سبق ذہن نشین کرانے کی بھرپور کوشش کی گئی تھی لیکن مسئلہ یہ ہے کہ ایک پہلو پر کام شروع کیا جاتا ہے تو دوسرے پر عمل نہیں ہو پاتا۔اانہوں نے امید ظاہر کی کہ دوسری اننگز میں پاکستانی بلے بازوں نے اسد شفیق ،بابر اعظم اور شان مسعود کی باریوں سے بہت کچھ سیکھا ہوگا۔

Leave a Reply